مرکزی حکومت کے خلاف 8/جنوری کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان

Source: S.O. News Service | Published on 14th December 2019, 10:51 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،13/دسمبر (ایس او نیوز) آل انڈیا اسٹوڈنٹس فیڈریشن (اے آئی ایس ایف) نے تعلیم، روزگار، خواتین کے حقوق کی پامالی، معاشی شعبہ میں گراوٹ اوربے روزگاری کے مسئلہ کو حل کرنے میں ناکام مرکزی حکومت کے خلاف 8/جنوری کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان کیا ہے- فیڈریشن کے ریاستی صدر امبریش نے اخباری کانفرنس کے دوران بتایا کہ ملک کی مکمل آبادی میں 50فیصد نوجوانوں کی ہے- لیکن ان نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے میں مرکزی حکومت پوری طرح ناکام رہی ہے- انہوں نے کہا کہ تعلیم، صحت اور مزدور طبقات کو ترجیح دینے سے ہی ملک کی ترقی ممکن ہے- لیکن افسوس کے کسی بھی حکومت نے اس معاملہ میں کوئی دلچسپی نہیں لی جس کی وجہ سے نوجوانوں کا مستقبل تاریک ہوچکا ہے- ملک میں تعلیمی نظام تشویش کا باعث ہے- مرکزی حکومت تعلیم کو فروغ دینے کے بجائے تعلیم کی نجکاری میں اپنی دلچسپی دکھا رہی ہے- انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 5برسوں کے دوران کئی یونیورسٹیوں میں ذاتی فسادات بھڑکا کر وہاں کے طلبہ کا اتحاد توڑا گیا ہے- نجکاری اور سماجی بائیکاٹ کے ذریعہ مرکزی حکومت پر تعلیم کو بااختیار بنانے سے روکنے کا انہوں نے الزام لگایا- انہوں نے بتایا کہ دیہی اور شہری علاقوں میں بے روزگاری بڑھنے لگی ہے- روزگار نہ ملنے سے گزر معاش کافی مشکل ہوچکا ہے- جس سے کئی مسائل اٹھ کھڑے ہیں - ان تمام مسائل کے حل کی مانگ کو لے کر مرکز کی توجہ اس جانب مبذول کرنے کے مقصد سے مرکزی حکومت کے خلاف ہڑتال کرنے کا فیصلہ کیا ہے- انہوں نے ہڑتال کے لئے بھر پور تعاون کی گزارش کی- اخباری کانفرنس میں طلبہ، خواتین اور نوجوانوں کی تنظیموں کے عہدیدار حاضر تھے-

ایک نظر اس پر بھی

بنگلور میں احتجاجیوں اور پولس کے درمیان زبردست جھڑپ؛ پولس فائرنگ میں دو کی موت؛ فیس بُک پر توہین آمیز پوسٹ پرعوام نے کیا تھا پولس تھانہ کا گھیراو

 فیس بُک پر مبینہ طور پر  پیغمبر اسلام حضرت محمد ﷺ کے خلاف توہین آمیز مسیج پوسٹ کرنے پر سخت برہمی ظاہر کرتے ہوئے بنگلور کے جی ہلی پولس تھانہ کے باہر  جمع ہوکرایک فرقہ کے لوگوں نے جب احتجاج کیا تو یہی احتجاج بعد میں تشدد میں تبدیل ہوگیا جس کے نتیجے میں بتایا جارہا ہے کہ ...

اننت کمار ہیگڈے نے لگایابی ایس این ایل میں دیش دروہی افسران موجود ہونے کا الزام

اپنے متنازعہ بیانات کے لئے پہچانے جانے والے رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے نے الزام لگایا کہ بھارت سنچار نگم لمیٹڈ کے اندر دیش دروہی افسران بیٹھے ہوئے جس کی وجہ سے اس کے کام کاج میں کوئی ترقی نہیں ہورہی ہے۔ اس لئے آئندہ دنوں میں اس کی نج کاری (پرائیویٹائزیشن) کیا جائے گا۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...

کرناٹک میں موسلادھاربارش سے 4000کروڑروپئے کا نقصان، فوری طورپرمناسب امداد ی رقم جاری کرنے ریاستی حکومت کی مرکزی حکومت سے اپیل

ریاست میں پچھلے چنددنوں سے ہورہی موسلادھاربارش کے نتیجہ میں سیلابی صورتحال سے 4000کروڑ روپئے نقصان کااندازہ لگایاگیاہے۔ اس سلسلہ میں ریاستی حکومت نے مرکزی حکومت سے درخواست کرتے ہوئے اپیل کی ہے کہ ریاست کرناٹک بارش اورسیلاب متاثرین کی بازآبادکاری اور تباہ فصلوں کی تلافی کے ...