جنگی جہاز’وکرم آدتیہ‘ میں بھاپ کی پائپ لائن پھٹنے سے لگی تھی آگ۔کاروار بحری اڈے پر سخت حفاظتی اقدامات

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 28th April 2019, 12:55 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار،28/اپریل (ایس اونیوز) طیار ہ بردار جنگی بحری جہاز وکرم آدتیہ میں جوآگ لگی تھی اور جسے بجھانے کے دوران لیفٹیننٹ کمانڈر دھرمیندرا سنگھ چوہان (30سال) کی موت واقع ہوگئی تھی اس کے تعلق سے پتہ چلا ہے کہ یہ آگ جہاز کے انجن روم میں بھاپ کی پائپ لائن کے اندر دھماکہ ہونے سے لگی تھی۔

یاد رہے کہ کاروار کے بحری اڈے آئی این ایس کدمبا کے احاطے میں داخل ہوتے وقت وکر م آدتیہ نامی جہاز میں آگ لگی تھی جس میں بحریہ کے آفیسر چوہان کی ہلاکت کے علاوہ دیگر 9افراد زخمی ہوگئے تھے۔بتایا جاتا ہے کہ بھاپ کی پائپ لائن میں دھماکے نے انجن روم کے ایندھن والے پائپ کو نقصان پہنچایا  جس سے آگ بھڑک اٹھی۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق آفیسر چوہان جب آگ بجھانے کی کوشش میں دھویں سے بھرے ہوئے انجن روم میں داخل ہوئے تووہ گرم بھاپ کے ایک بہت ہی تیز فوارے کی زد میں آگئے جس کی وجہ سے وہ بے ہوش ہوکر گرپڑے۔جیسے سے ہی ایندھن پائپ میں آگ لگنے کی بات معلوم ہوئی تو آگ بجھانے والے عملے نے فوری طور پر ایندھن کی سپلائی منقطع کردی جس سے مزید نقصان سے جہاز کو محفوظ رکھا جاسکا۔اس کے علاوہ انجن روم میں آگ بجھانے کا جو خودکار نظام ہے اس نے بھی کام کرنا شروع کردیا اور جلد ہی آگ پر قابو پالیا گیا۔معلوم ہو اہے کہ جس وقت آگ لگی تھی، اس وقت جہاز میں 1,300افراد موجود تھے۔بحریہ کے آفیسرچوہان کی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق گرم بھاپ سے جسم کا حصہ بہت بری طرح جھلس گیا تھا۔نعش کو آخری رسومات کی ادائیگی کے لئے خصوصی ہوائی جہاز میں گوا سے اندور لے جایا گیاپھر وہاں سے چوہان کے آبائی گاؤں رتلام لے جاکر آخری رسومات انجام دی جائیں گی۔اس حادثے کا دردناک پہلو یہ ہے کہ مہلوک آفیسر چوہان کی شادی کرونا سنگھ نامی ایک پروفیسر سے گزشتہ مہینے یعنی 10مارچ کو ہی ہوئی تھی۔بحریہ کے دیگر 9افراد جو زخمی ہوئے تھے ان میں سے 6کی حالت علاج کے بعد بہتر ہونے کی خبر ہے

    اس جنگی جہاز پر جملہ 21عرشے(ڈیکس)ہیں، جن میں سے تیسرے عرشے پر آگ لگنے کا حادثہ پیش آیا تھا۔اس حادثے کی جانچ کے لئے ایک بورڈ آف انکوائری تشکیل دیا گیا ہے اور دہلی سے روانہ ہونے والے اس تحقیقاتی ٹیم کے افسران سنیچر کو دیر رات کاروار پہنچ گئے ہیں۔اتوار کی صبح سے تحقیقات شروع کیے جانے کی توقع ہے۔تحقیقاتی ٹیم اس بات کا بھی فیصلہ کرے گی کہ یہ طیارہ بردار جہازیکم مئی سے کاروار اور گوا کے سمندر میں ہونے والی فرانس کی نیوی کے ساتھ مشترکہ جنگی مشقوں میں حصہ لینے کے قابل ہے یا نہیں۔ 

    وکرم آدتیہ جہاز پرآتشزدگی کے واقعے کے بعد کاروار کے بحری اڈے آئی این ایس کدمبا پر حفاظتی انتظامات بہت ہی سخت کردئے گئے ہیں اور ٹھیکے پر کام کرنے والے ملازمین کی آمد ورفت پر بھی پابندی لگادی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ساحلی کرناٹکا میں موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری؛ اُترکنڑا میں ریڈ الرٹ؛ ساگرروڈ پر غیر قانونی باکڑوں کو نہ ہٹانے کے پیچھے کیا راز ؟ مینگلور اور اُڈپی میں منگل کو اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی

ساحلی کرناٹکا بشمول اُتر کنڑا، اُڈپی اور دکشن کنڑا میں  اتوار سے  جاری زوردار بارش کا سلسلہ آج پیر کو بھی جاری رہا جس سے  کئی علاقوں میں راستے تالاب میں تبدیل ہوگئے،  اس درمیان  محکمہ موسمیات کی جانب سے  بتایا گیا ہے کہ  کل اتوار کو بھٹکل میں جو زبردست بارش ہوئی، اُس کی ...

اترکنڑا ضلع میں مزید بارش کے امکانات کے پیش نظر ریڈ الرٹ جاری :بھٹکل میں ریکارڈ 140ملی میٹر بارش

ضلع کے ساحلی  پٹی کے مقامات پر رات دن  مسلسل برستی بارش کے نتیجےمیں عوامی زندگی بہت بری طرح متاثر ہوئی۔ پیر کی صبح سے شروع ہوئی بارش شام تک لگاتار برستی رہی ۔ ان حالات میں محکمہ موسمیات کی طرف سے ’ریڈ الرٹ ‘ جاری کرتے ہوئے  علاقہ میں مزید بارش برسنے کا امکان بتایا ہے۔ محکمہ ...

کرناٹک: بی ایس پی ارکان اسمبلی کمارسوامی کے حق میں ووٹ کریں گے:مایاوتی

کرناٹک میں کانگریس اورجے ڈی ایس کی مخلوط حکومت رہے گی یا جائے گی اس کا فیصلہ آج ہو جائے گا ۔ برسر اقتدار اتحاد کے ارکان اسمبلی کو بی جے پی ٹوڑنے کی کوشش کر رہی ہے لیکن اس بیچ بی ایس پی سپریموں نے کہا ہے کہ اس کی پارٹی کے ارکان اسمبلی کمارسوامی حکومت کے حق میں ہی ووٹ ڈالیں گے ۔ یہ ...

مخلوط حکومت کی بقا کا سسپنس برقرار آج بھی اسمبلی میں تحریک اعتماد پر ووٹنگ کا امکان،باغیوں کو واپس لانے کیلئے سدارامیا کو وزیر اعلیٰ بنانے کی پیش کش

ریاست میں کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت کوبچانے کے لئے اتحادی جماعتوں کے قائدین کی کوششوں کا سلسلہ جاری ہے تو دوسری طرف اپوزیشن بی جے پی اس کوشش میں ہے کہ کسی طرح پیر کے روزتحریک اعتماد پر اسمبلی میں ووٹنگ ہو جائے لیکن خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں