سونیا اور پرینکا کا رائے بریلی-امیٹھی کا دورہ، سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال

Source: S.O. News Service | Published on 24th January 2020, 9:01 PM | ملکی خبریں |

رائے بریلی،24/جنوری(ایس او نیوز/یو این آئی) کانگریس صدر سونیا گاندھی نے اپنے پارلیمانی حلقے رائے بریلی میں جمعرات کو ضلع و شہری صدر کے ٹریننگ کیمپ میں اترپردیش میں پارٹی کی مضبوطی کے علاوہ کسانوں کے مسائل پر مرکزی و ریاستی حکومت کو گھیرنے کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا۔

سونیا گاندھی دو روزہ دورے پر بدھ کو بیٹی و جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی کے ساتھ یہاں پہنچی تھیں۔ بھوئے مئو گیسٹ ہاوس میں انہوں نے کانگریس کے ضلع اور شہری صدر کے تربیتی کیمپ میں پارٹی کے ذمہ داروں کے ساتھ میٹنگ کی۔ رائے بریلی کے بعد سونیا اور پرینکا نے رات کے وقت امیٹھی کا بھی دورہ کیا اور سڑک حادثے کے ایک متاثرہ خاندان سے ملاقات کی۔

انہوں نے اترپردیش کی سیاسی صورتحال پر غوروخوض کیا اور تنظیم کو بوتھ سطح پر مضبوط بنانے کی حکمت عملی کے ساتھ کسانوں کے مسائل کو لے کر سرکار کے خلاف سڑک سے لے کر اسمبلی تک اور بلاک سے لے کر راجدھانی تک احتجاج کئے جانے کا خاکہ بھی طے کیا۔

کانگریس لیڈر پرینکا گاندھی واڈرا نے کانگریس لیڈروں اور کارکنوں کو سب سے پہلے کسانوں کے گھر جاکر اور نکڑپروگرام کر کے ان کو درپیش مسائل و دقتوں کو سننے کا مشورہ دیا۔ دوسری جانب کسانوں کے مطالبے کی بنیاد پر بلاک،تحصیل اور ضلع سطح کے افسران کو بھی گھیرنے کی ہدایت دی۔

کانگریس صدر اور پرینکا گاندھی نے پارٹی عہدیداروں کے ساتھ اس مشترکہ میٹنگ میں کسان تحریک کے آخری مرحلے میں راجدھانی لکھنؤ میں ایک ’’کسان آکروش مورچہ‘‘ کے ذریعہ ریاست کی حکمراں یوگی حکومت کو بھی گھیرنے کا اعلان کیا۔

کانگریس کا تربیتی کیمپ 20 جنوری سےبھوئے مئو گیسٹ ہاوس میں چل رہا ہے جس میں پارٹی کے تمام ضلع وشہری صدر کو ٹریننگ دی جارہی ہے۔ تربیتی کیمپ میں نومنتخب پارٹی عہدہ داروں کو کانگریس کے نظریات، تاریخ، سیاسی حکمت عملی، ہندوستانی تہذیب و ثقافت کی معلومات دی جا رہی ہے۔

تربیتی کیمپ میں ضلع سطح پر تشکیل شدہ ضلع کمیٹی کی جوابدہی اور ذمہ داری بھی طے کی گئی ہے تاکہ وہ پوری مستعدی سے سیاسی حملوں کا جواب پوری مضبوطی کے ساتھ رکھ سکیں۔ اس دوران ضلع اور شہری عہدیداروں کو بوتھ سطح پر منیجمنٹ اور کمیٹیوں کے تعمیر کے ساتھ ہی سوشل میڈیا کے بہتر استعمال کی بھی ٹریننگ دی گئی ہے۔

سونیا گاندھی اور پرینکا گاندھی رائے بریلی کے بعد امیٹھی پہنچیں اور سڑک حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے اہل خانہ سے ملاقات کی۔ اس حادثے میں ایک ہی خاندان کے 6 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ سونیا اور پریانکا گاندھی امیٹھی کے بھریٹھا گاؤں پہنچیں اور سوگوار کنبہ سے ملاقات کی۔ اس سڑک حادثہ میں گاؤں کے سابقہ پردھان کی بھی موت ہوئی ہے۔

سونیا اور پریانکا گاندھی کا امیٹھی دورہ پہلے سے طے شدہ نہیں تھا۔ یہ حادثہ پیر کی شب امیٹھی - گوری گنج شاہراہ پر اس پیش آیا تھا جب ایک ٹرک نے بولیرو گاڑی کو ٹکر مار دی، جس میں سوار کنبہ گوری گنج میں ایک تقریب میں شرکت کے بعد اپنے گاؤں لوٹ رہا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

دہلی: خفیہ بیورو کے افسر انکت شرما کا بہیمانہ قتل، لاش نالے سے برآمد

شمال مشرقی دہلی میں لوگ دہشت کے سائے میں زندگی گزار رہے ہیں۔ اس درمیان خفیہ بیورو (آئی بی) کے ساتھ کام کرنے والے ایک 26 سالہ نوجوان کی لاش شمال مشرقی دہلی واقع چاند باغ سے برآمد ہونے کے بعد لوگوں میں مزید خوف دیکھنے کو مل رہا ہے۔

لکھنؤ: سماج وادی پارٹی کا ذات پر مبنی مردم شماری کرانے کا مطالبہ، اسمبلی میں ہنگامہ

  اترپردیش اسمبلی میں بدھ کو سماج وادی پارٹی(ایس پی) نے ذات پر مبنی مردم شماری کرانے کے مطالبے کے ساتھ ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے اسپیکر کو کارروائی کو ملتوی کرنی پڑی۔ جس کی وجہ سے وقفہ سوالات تقریباً 50 منٹوں تک متأثر رہا۔

دہلی کے موجودہ حالات پر ممتا بنرجی نے ’جہنم‘ کے عنوان سے لکھی نظم

وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے دہلی میں حالیہ تشدد کے واقعات پر ’جہنم‘ کے عنوان سے ایک نظم اپنے فیس بک پر پوسٹ کی ہے جس میں وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے تشدد کے واقعات میں اموات پر صدمے کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ”ہولی سے قبل خون کی ہولی کھیلی جا رہی ہے“۔

دہلی تشدد: مسجد پر لہرایا گیا بھگوا جھنڈا، پولیس نے 24 گھنٹے بعد بھی نہیں اتارا!

راجدھانی کے شمال مشرقی ضلع میں منگل کے روز شدید تشدد کے دوران اشوک نگر علاقے میں زبردست ہنگامہ برپا ہوا تھا۔ اس دوران علاقے کی گلی نمبر 5 میں واقع ایک مسجد پر شرپسندوں نے حملہ کیا اور اسے پوری طرح تباہ کر دیا۔ اتنا ہی نہیں کچھ شرپسند عناصر نے مسجد کے مینار پر چڑھ کر وہاں بھگوا ...

سپریم کورٹ کے معاملہ کو ملتوی کرنے پر شاہین باغ کی مظاہرین کا رد عمل

 قومی شہریت (ترمیمی)قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلا ف شاہین باغ خاتون مظاہرین نے سپریم کورٹ کے روڈ کے معاملے میں سماعت کو 23 مارچ تک ملتوی کردینے کے بعد ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حالات کے پیش نظر سپریم کورٹ نے معاملہ کو ملتوی کر دیا ہے، اگرچہ تاخیر کرنا مناسب نہیں۔