دہلی تشدد: امن کی اپیل کرتے ہوئے سونیا گاندھی نے کہا ’فرقہ پرست طاقتوں کا منصوبہ ناکام بنائیں‘

Source: S.O. News Service | Published on 26th February 2020, 10:49 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،26/فروری (ایس او نیوز/ایجنسی) کانگریس صدر سونیا گاندھی نے دہلی کی عوام سے فرقہ وارانہ خیر سگالی بنائے رکھنے اور ملک کو مذہب اور ذات-پات کی بنیاد پر تقسیم کرنے والی فرقہ پرست طاقتوں کے غلط منصوبوں کو ناکام کرنے کی اپیل کی ہے۔ انھوں نے ایک بیان میں دہلی تشدد میں ہلاک ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔ رتن لال کے غمزدہ اہل خانہ کے لیے سونیا گاندھی نے اپنی ہمدردی کا بھی اظہار کیا۔ انھوں نے عوام سے امن برقرار رکھنے کی گزارش کی اور کہا کہ مہاتما گاندھی جی کے بھارت میں کسی بھی طرح کے تشدد کے لیے کوئی جگہ نہیں ہو سکتی اور ملک میں ان طاقتوں کی کوئی جگہ نہیں جو اپنی فرقہ واریت اور تخریب کاری نظریہ کو ہندوستان پر تھوپنا چاہتے ہیں۔

دوسری طرف کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے بھی تشدد کے واقعات پر افسوس کا اظہار کیا۔ انھوں نے پیر کے روز کہا کہ ’’ملک کی راجدھانی دہلی میں آج پورا دن تشدد سے بھرا رہا۔ تشدد سے صرف اور صرف عام لوگ اور ملک کا نقصان ہوتا ہے۔ اسے روکنے کی ذمہ داری ہم سب کی ہے۔ مہاتما گاندھی کا ملک امن کا ملک ہے۔ سبھی دہلی کے باشندوں سے میں امن کی اپیل کرتی ہوں اور کانگریس کارکنان سے گزارش کرتی ہوں کہ وہ امن و امان بنائے رکھنے کے لیے کوشش کریں۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

جموں کے ایک وکیل اور کشمیر کی ایک خاتون کورونا سے ہلاک، لوگ دہشت زدہ

 جموں سے تعلق رکھنے والے ایک وکیل اور جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام کی ایک خاتون کی موت کے بعد کورونا ٹیسٹ مثبت آنے سے جموں و کشمیر یونین ٹریٹری میں اس وائرس سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 23 ہوگئی ہے۔ ان ہلاکتوں کے بعد لوگوں میں ایک دہشت کا ماحول بھی دیکھنے کو مل رہا ہے۔