سرسی میں ایس ڈی پی آئی رکن اسلم کے قتل معاملے میں پولیس نے بی جے پی کے دباؤ میں مقتول کے دوستوں کو گرفتار کیا ہے؛ ایس ڈی پی آئی کاالزام؛ احتجاج کا انتباہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 5th May 2019, 5:26 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

سرسی 5/مئی (ایس او نیوز) حالیہ پارلیمانی انتخاب کے دوران سرسی کے کستوربا نگر میں ایس ڈی پی آئی کے کارکن کا جو قتل ہوا تھا اور اس سلسلے میں پولیس نے مقتول اسلم کے دوستوں کی جو گرفتاری کی ہے اس پر سوال اٹھاتے ہوئے ایس ڈی پی آئی کے ریاستی جنرل سیکریٹری ریاض فرنگی پیٹے نے کہا ہے کہ پولیس نے بی جے پی کے دباؤ میں آکریہ کارروائی کی ہے۔ انہوں نے اس کاروائی کی سخت مذمت کرتے ہوئے ریاست گیر سطح پر احتجاج کرنے کا انتباہ دیا ہے۔

 خیال رہے کہ جس دن سرسی میں پولنگ ہوئی تھی اسی رات کو ایس ڈی پی آئی کارکن اسلم(۳۲سال) کا قتل ہواتھا۔ ریاض فرنگی پیٹے کا کہنا ہے کہ اس قتل میں بی جے پی اقلیتی مورچہ کے نائب صدر انیس تحصیلدار اور اس کے ساتھیوں کا ہاتھ ہونے کی بات ہر کسی کو معلوم ہے۔ لیکن پولیس نے قتل کے دن فاروق، فرحان اور سلیم نامی جو دوست اسلم کے ساتھ تھے انہیں تفتیش کے نام پر پولیس اسٹیشن میں بلانے کے بعد قتل کے الزام میں گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیاہے۔ اور یہ پولیس کی طرف سے کی گئی ایک غیر قانونی کارروائی ہے۔

 ریاض فرنگی پیٹے کی طرف سے جاری کیے گئے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ پارلیمانی الیکشن کے دن معمولی بات پر ہونے والے جھگڑے میں اسلم شدید زخمی ہوگیا تھااور بہت زیادہ خون بہنے کی وجہ سے اس کی موت واقع ہوگئی تھی۔اسلم کے بھائی نے پولیس میں جو شکایت درج کی ہے اس کے مطابق الیکشن کے دن اسلم او راس کے دوست کار میں گھوم پھر رہے تھے۔اسی بات کو بنیاد بناکر پولیس نے منصوبہ بند کارروائی کی ہے۔ اور اس قتل کا الزام ایس ڈی پی آئی کے کارکنان پر ہی لگانے کی کوشش کی ہے۔حالانکہ ایف آئی آر میں بی جے پی اقلیتی مورچہ کے نائب صدر انیس تحصیلدار کا نام بالکل واضح طور پر بیان کیا گیا ہے مگرسرسی  پولیس کے افسران بی جے پی لیڈر اننت کمار ہیگڈے کے دباؤ میں آکر انیس سے تفتیش کیے بغیر ہی اسے قتل کے الزام سے بچانے میں لگے ہوئے ہیں۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ہندوستان کے دستور میں صاف لکھا ہواہے کہ کسی مجرم کو سزا نہ ہو تو پروا نہیں ہے لیکن کسی بے قصور کو سزا نہیں ملنی چاہیے۔اور سرسی پولیس محکمہ کی طرف سے اس اصول کی دھجیاں اڑانا قابل مذمت ہے۔

 ایس ڈی پی آئی کے اخباری بیان کے مطابق اسی پس منظر میں قتل کی کوشش کی جوجھوٹی شکایت بی جے پی لیڈر انیس تحصیلدار کی طرف سے داخل کی گئی ہے اس کی بنیاد پرکیس درج کرتے ہوئے ایس ڈی پی آئی کے 5کارکنان کو پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ ایک ہی موقع پر پیش آنے والے واقعات میں پولیس نے دوغلی پالیسی اپناتے ہوئے دونوں معاملات کو ایس ڈی پی آئی سے جوڑنے کی جو کوشش کی ہے وہ پولیس افسران اور بی جے پی لیڈران کے گٹھ جوڑ کا نتیجہ ہے۔ محکمہ پولیس کے ذریعے قانون کے بے جا استعمال اور ظلم و ستم اور بی جے پی کی نفرت کی سیاست کے خلاف ایس ڈی پی آئی کی طرف سے ریاست گیر پیمانے پر احتجاجی مظاہرے کیے جائیں گے۔اور عوام کو بی جے پی کی گندی سیاست سے آگاہ کرنے کی مہم چلائی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کے قریب شیرور میں لاری کی ٹکر سے راہ گیر کی موت

پڑوسی علاقہ شیرور میں ہوئے ایک سڑک حادثہ میں ایک راہ گیر کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت 85 سالہ تمپا اچار کی حیثیت سے کی گئی ہے۔ حادثہ سنیچر کو اُس وقت پیش آیا جب عمر رسیدہ شخص تمپا آچار  بارش کی وجہ سے ہاتھ میںؓ چھتری تھامے  نیشنل ہائی وے کو کراس  کررہا تھا کہ ...

جنوری 19 کو ہوں گےانجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے انتخابات؛ اسحاق شاہ بندری الیکشن کمشنر منتخب

قومی تعلیمی ادارہ انجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے عام انتخابات اگلے سال 19 جنوری کو ہوں گے جس کے لئے آج سنیچر کو  ہوئی انتظامیہ میٹنگ میں  الیکشن کمشنر کا انتخاب عمل میں آیا ہے۔  اس بات کی تصدیق انجمن کے جنرل سکریٹری جناب صدیق اسماعیل نے کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ  آج کی میٹنگ میں ...

پتورکے ویویکا نندا کالج میں گینگ ریپ کی واردات کے بعد طلبہ کے لئے سخت قوانین کا نفاذ۔ کلاسس معطل۔ طلبہ کے اندر اضطراب 

گزشتہ دنوں  اپنی ہم جماعت طالبہ کے ساتھ  کچھ طلبہ کی جانب سے کیے گئے گینگ ریپ کی وجہ سے سرخیوں میں آنے والے قریبی شہر پتور  کے مشہور ویویکانندا کالج میں طلبہ کے لئے نئے قوانین اور ضابطے وضع کیے گئے ہیں، جن کی پابندی کا عہد کیے بغیر کسی بھی طالب علم کوکلاس میں داخل ہونے کی اجازت ...

بھٹکل تحصیلدار آفس میں بارش کے نقصانات  سے بچنے امدادی سنٹر کی شروعات

بھٹکل تعلقہ بھر میں بہتر بارش ہورہی ہے، اس کےساتھ ساتھ موسلا دھار بارش کے نتیجےمیں اچانک کوئی حادثات بھی پیش آتے ہیں۔ ان حادثاتی مواقع پر عوام کوفوری امداد و راحت پہنچا کر  نقصانات سے بچانے کے لئے بھٹکل تحصیلدار دفتر میں امدادی مرکز (ہیلپ سنٹر) کی شروعات کی گئی ہے۔

بھٹکل میں موسلادھار بارش کاسلسلہ جاری، حنیف آباد کی سڑک تالاب میں تبدیل؛ کئی مکانوں میں پانی داخل ہونے کی شکایتوں کے بعدتحصیلدار کا دورہ

گزشتہ دو دنوں سے برس رہی بارش کے نتیجےمیں تعلقہ کے ہیبلے گرام پنچایت حدود کے حنیف آباد کی سڑک تالاب نما کی شکل اختیارکرنےکے علاوہ سڑک کا پانی پاس پڑوس کے گھروں میں پانی گھسنے سے عوام پریشانی میں مبتلا دیکھے گئے۔

اترکنڑا ضلع پنچایت کو 5.97کروڑروپئے کی امداد : آبادی اور جغرافیائی وسعت کے مطابق امداد کی منظوری کا فیصلہ

فورتھ فائنانس کمیشن کی سفارشات کے تحت سال 2019-2020کے لئے ضلع پنچایتوں کی امداد میں اضافہ کیاگیا ہے۔ جس کےمطابق ریاستی حکومت نے بیلگام ضلع کو 8کروڑرو پئے منظور ہوئے ہیں تو اترکنڑا ضلع کے لئے 5.74کروڑ روپئے کی امداد منظور کی ہے۔

پتورکے ویویکا نندا کالج میں گینگ ریپ کی واردات کے بعد طلبہ کے لئے سخت قوانین کا نفاذ۔ کلاسس معطل۔ طلبہ کے اندر اضطراب 

گزشتہ دنوں  اپنی ہم جماعت طالبہ کے ساتھ  کچھ طلبہ کی جانب سے کیے گئے گینگ ریپ کی وجہ سے سرخیوں میں آنے والے قریبی شہر پتور  کے مشہور ویویکانندا کالج میں طلبہ کے لئے نئے قوانین اور ضابطے وضع کیے گئے ہیں، جن کی پابندی کا عہد کیے بغیر کسی بھی طالب علم کوکلاس میں داخل ہونے کی اجازت ...

آئی ایم اے سرمایہ کاری گھوٹالے کے سرغنہ منصور خان کوایس آئی ٹی نے کیا گرفتار؛ چھان بین کے لئے کیا انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کے حوالے

حلال کمائی کے نام پر بھاری منافع کا لالچ دے کرہزاروں لوگوں سے کروڑوں روپے سرمایہ کاری میں لگوانے کے بعد اچانک فرار ہوجانے والے آئی ایم اے کے سرغنہ منصور خان کوپولیس کی خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی)نے نئی دہلی کے ایئر پورٹ پر رات 1.30بجے گرفتار کرلیا۔

مینگلور کے قریب بنٹوال میں بھیانک سڑک حادثہ؛ بھٹکل کے ایک ہی خاندان کے چار افراد ہلاک، سات زخمی؛ مرنے والوں میں دلہا بھی شامل

مینگلور کے قریب بنٹوال میں  آج جمعہ صبح   پیش آئے ایک بھیانک سڑک حادثے میں بھٹکل کے ایک ہی خاندان کے چار افراد ہلاک ہوگئے جبکہ سات دیگر شدید زخمی ہوگئے ۔ مرنے والوں میں  دلہا بھی شامل ہے جبکہ دلہن  کی حالت نازک بتائی گئی ہے۔  حادثہ اُس وقت پیش آیا جب ایک کار، جس پر یہ سبھی ...

باغی اراکین اسمبلی ایوان کی کارروائی میں حاضر ہونے کے پابند نہیں:سپریم کورٹ عدالت کے فیصلہ سے مخلوط حکومت کو جھٹکا -کانگریس عدالت سے دوبارہ رجوع کرے گی

کرناٹک کے باغی اراکین اسمبلی کے استعفوں سے متعلق سپریم کورٹ نے آج جو فیصلہ سنایا ہے وہ ”آڑی دیوار پر چراغ رکھنے“ کے مصداق ہے- کیونکہ اس سے نہ کرناٹک کا سیاسی بحران ختم ہوگا اورنہ ہی مخلوط حکومت کو بچانے میں کچھ مدد ملے گی-