سیلاب متاثرین سے وزیر اعظم کو کوئی ہمدردی نہیں منڈیا میں منعقدہ پرتیبھا پرسکار کے جلسہ سے سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا کا خطاب

Source: S.O. News Service | Published on 17th September 2019, 10:47 AM | ریاستی خبریں |

منڈیا،17؍ستمبر(ایس او نیوز) ملک کے وزیر اعظم کو سیلاب متاثرین سے کوئی ہمدردی نہیں ہے۔ پچھلے ایک سو سال سے کبھی نہ دیکھا گیا سیلاب ریاست میں آیا ہے اور ہزاروں افراد کی زندگی تباہ ہوچکی ہے۔ ایسے حالات میں اب تک سیلاب متاثرین کے لئے کوئی امداد فراہم نہیں کی گئی اور ان کی طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی۔ وزیر اعظم کو سیلاب متاثرین سے ہمدردی نہ ہونے کا اس سے بڑا ثبوت کیا چاہئے۔ یہ بات سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا نے کہی۔ انہو ں نے یہاں شہر کے کنکا بھون میں ضلع کروبا سنگھا کے زیر اہتمام منعقدہ پرتیبھا پرسکار اور سٹی منسپل کونسل وٹاؤن منسپل کونسل کے نو منتخب نمائندوں کے تہنیتی جلسہ کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ قائد کہلانے والے میں ہمدردی ہونی چاہئے۔ صرف 56/ انچ کا سینہ رکھنے سے کوئی فائدہ نہیں ہے۔ سیلاب سے ریاست کے تقریباً 5/ تا 6/ ہزار افراد کنگال ہوچکے ہیں۔2/ لاکھ گھر تباہ ہوئے ہیں۔1.25/ لاکھ کنبے گھر سے محروم ہوچکے ہیں، ایسے حالات میں بھی متاثرین سے ہمدردی کے لئے وزیر اعظم کے پاس وقت نہیں ہے۔ سدارامیا نے کہا کہ اس سے قبل 2009/میں بھی ریاست میں یہی صورتحال تھی اور ایڈی یورپا ہی ریاست کے وزیر اعلیٰ تھے اور میں اپوزیشن لیڈر تھا، اس وقت کے وزیر اعظم من موہن سنگھ سے ریاست کا دورہ کرنے کی گزارش کی تھی۔ دوسرے ہی دن وزیر اعظم من موہن سنگھ نے ریاست کا دورہ کیا اور سیلاب سے ہوئی تباہ کاریوں کا جائزہ لیا اور موقع پر ہی 1600/ کروڑ روپئے جاری کرنے کا اعلان کیا تھا۔ ایسے کردار قائد میں ہونے چاہئیں۔ سیاست میں لیڈر بننے کے لئے عوام سے محبت اور ہمدردی کی ضرورت ہوتی ہے۔ دشمن اور انتقام کی سیاست سے کوئی لیڈر نہیں بنتا۔ عوام کا اعتماد حاصل کرنے والا ہی سیاست میں کامیاب لیڈر کہلاتا ہے۔ سدارامیا نے مزید کہا کہ صلاحیت اور اہلیت کے لئے ذات پات کی کوئی قید نہیں ہوتی وہ پیدائشی فطرت ہوتی ہے۔ بچوں کو پڑھائی کیلئے بہتر ماحول فراہم کرنا ہوگا اور ہر بچہ کو اپنی صلاحیت کا مظاہرہ کرنے کا موقع فراہم کرنا ہوگاسدارامیا نے کہا کہ جب انہوں نے پہلی مرتبہ وزیر مالیات کا قلمدان سنبھالا تھا اس وقت کروبا طبقہ کے لوگوں میں حساب کتاب رکھنے کی صلاحیت نہ ہونے کی باتیں گشت کرنے لگی تھیں اور کئی قسم کی تنقیدیں کی جارہی تھیں، اسے چیلنج کے طور پر لیا اور 13/ بجٹ پیش کرنے کا اعزاز حاصل کیا۔ میری طرف سے پیش کردہ بجٹ پر کسی نے اعتراض نہیں جتایا اور عوامی بجٹ پیش کرنے کا اعزاز حاصل ہوا۔ اس لئے طلباء کو چاہئے کہ زندگی میں کچھ کردکھانے کا عزم رکھیں اور اپنے مقصد میں کامیابی کے لئے جدوجہد کریں۔ محنت اور لگن کے ساتھ کام کرنے سے کوئی بھی کارنامہ انجام دیا جاسکتا ہے۔ سدارامیا نے کہا کہ چند لوگوں کو ان کی کامیابی پسند نہیں ہے اور ہمیشہ ان کے خلاف الزام تراشی میں لگے ہوئے ہوتے ہیں،ایسے لوگوں کا کوئی علاج نہیں ہے۔ اس موقع پر شری کاگی نلے کنکا گرو پیٹھا میسور شاخ کے شری شیوا نندا پوری سوامی نے بھی خطاب کیا اور طلباء کو نصیحت کی کہ وہ تعلیم حاصل کرکے والدین اور اساتذہ کا نام روشن کریں۔ سابق ریاستی وزیر این چلو رایا سوامی، سابق رکن اسمبلی ایم ایس آتما نند اور دیگر حاضر تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

گجرات کے سورت سے نکلی ٹرین ، بہار کے چھپرا کے بجائے پہنچی کرناٹک کے بنگلورو: مزدورں کا حال بے حال

لاک ڈاؤن کی مدت میں مزدوروں کو ان کے وطن لوٹانے گجرات سے نکلی ایک مزدور ٹرین (شریمک ریل ) بہار پہنچنے کے بجائے کرناٹکا کے بنگلورو پہنچ کر سب کو حیرت میں ڈال دیا ہے۔ گرچہ یہ ایک مذاق لگتا ہے مگر ہے حقیقت۔ اسی طرح اور ایک خصوصی مزدور ریل گجرات کے سورت سے 1200مزدوروں کو لے کر بہار کے ...

کیا کرناٹکا میں یکم جون سے مسجد، گرجا گھر اور مندروں کو کھولنے کی دی جائے گی اجازت ؟

کورونا وائرس کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کے لئے ملک میں لاک ڈاؤن لاگو ہے۔لاک ڈاؤن 4.0 میں حکومت کی جانب سے بہت سی مراعات دی گئی ہیں، تاہم مندر، مسجد کو لے کر پابندیاں جاری ہیں لیکن حکومت نے لاک ڈاؤن میں رعایت کو لے کر ریاستوں کو بھی فیصلہ لینے کا حق دیا تھا۔دریں اثنا کرناٹک ...

حاملہ خاتون کی رپورٹ  کورونا پوزیٹو آنے پر  ہوسکوٹے کے ایک گائوں میں4 ہزار لیٹر دودھ نالی میں بہادینے کی واردات

کرناٹک کے ہوسکوٹے کے قریب چکّا کوریٹی گاؤں کے دودھ تیار کرنے والے کسانوں کو مجبوراً 4ہزار لیٹر دودھ نالی میں بہا دینا پڑا کیونکہ گاؤں میں کورونا کا مریض ہونے کی وجہ سے فیڈریشن نے دودھ لینے سے انکار کردیا۔

کرناٹک میں مجموعی طورپر100افراد میں کورونا کی تصدیق؛ تعداد بڑھ کر ہوگئی 2282

آج منگل کو کرناٹک میں مجموعی طورپر100افراد میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے‘ جبکہ 17افراد کورونا کو شکست دے کر اپنے گھر واپس چلے گئے ہیں۔ آج سو لوگوں کی رپورٹ پوزیٹو آنے کے ساتھ ہی ریاست میں مریضوں کی جملہ تعداد بڑھ کر 2282 ہوگئی ہے جن  میں سے722افراد علاج کے بعد صحت مند ہوکر اسپتال سے ...