شیوسینا بلٹ ٹرین منصوبے کا بوجھ لوگوں کے سروں پر ڈالنے کے خلاف ہے: سنجے راوت

Source: S.O. News Service | Published on 2nd December 2019, 11:01 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،2دسمبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) مہاراشٹر میں کانگریس،این سی پی اور شیوسینا کی نئی حکومت کے بعد سے، احمد آباد سے ممبئی تک چلنے والے بلٹ ٹرین منصوبے کے بارے میں بہت سی قیاس آرائیاں جاری ہیں۔ اتحاد کے رہنماؤں نے پہلے ہی اشارہ دیا تھا کہ وزیر اعظم مودی کے  منصوبے پر ان کی حکومت آنے کے بعد اس کا جائزہ لیا جائے گا کیونکہ وہ ریاست کے کسانوں پر خرچ ہونے والے اس پیسہ پر مہاراشٹر پر بوجھ نہیں ڈالنا چاہتے ہیں۔ ادھر، شیوسینالیڈر سنجے راوت نے کہا ہے کہ پارٹی بلٹ ٹرین منصوبے کابوجھ لوگوں کے سروں پر ڈالنے کے خلاف ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ مہاراشٹر کی معاشی صورتحال بہت سنگین ہے۔ بی جے پی کے سابق وزیر پنکجا منڈے نے شیوسینا میں شمولیت کے سوال پر، راوت نے کہاہے کہ بہت سے رہنما ہمارے رابطے میں ہیں۔ اس کے بعد، جب سنجے راوت سے اننت ہیگڑے کے40000 کروڑ روپیے کے بیان پر ایک سوال پوچھا گیا تو سنجے راوت نے کہاکہ بی جے پی اورفڑنویس ریاست کے مجرم ہیں، چیف سکریٹری اور ادھوو ٹھاکرے اس رقم کو واپس کرنے پر وضاحت کریں گے۔بتایا جاتا ہے کہ مہاراشٹرا اسمبلی انتخابات میں اپنے کزن کے ہاتھوں انتخاب ہارنے کے پیچھے ہٹ دھرمی کے خدشے کے بعد پنکجا منڈے بی جے پی سے ناراض ہیں۔ اتوار کو لکھے گئے اپنے ٹویٹر پروفائل اور فیس بک پوسٹ سے ”بی جے پی“ کے ٹیگ کو ہٹانے سے اشارہ ملتا ہے کہ پنکجا نے 12 دسمبر کو والد گوپی ناتھ منڈے کے یوم پیدائش پر حامیوں کی ایک میٹنگ بلا رکھی ہے، جس میں وہ ایک اہم فیصلہ لے سکتی ہیں۔ حامیوں کا الزام ہے کہ او بی سی طبقے اور پارٹی میں قیادت کو ختم کرنے کے لیے، بی جے پی کے صرف چند لیڈروں نے انتخاب میں پنکجامنڈے کو شکست دی۔مراٹھی میں لکھی گئی اس پوسٹ میں، انہوں نے کہا ہے کہ بدلے ہوئے سیاسی ماحول کو دیکھتے ہوئے، اس کے بارے میں یہ سوچنا ضروری ہے کہ آگے کیا کریں؟ اپنی طاقت کو پہچاننے کی ضرورت ہے۔ مجھے خود سے بات کرنے کے لیے 8-10 دن درکارہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

تبلیغی جماعت کا ’ٹائمز آف انڈیا‘ کو ہتک عزت کا نوٹس، بے بنیاد خبریں شائع کرنے کی پاداش میں معافی مانگنے اور ایک کروڑ ہر جانہ ادا کرنے کا مطالبہ 

تبلیغی جماعت سے منسلک ایک رکن نے آج ٹائمز آف انڈیا گروپ کو جماعت کے بارے میں اشتعال انگیز اور بے بنیاد خبریں شائع کرنے کی پاداش میں ہتک عزت کا قانونی نوٹس بھیج دیا ہے۔

کرونا سے لڑنے کے بہانے ملک پر ایک خاص مذہبی عقیدے کو تھوپنے کی کوشش: ڈاکٹر شکیل احمد، سابق مرکزی وزیر نے کہا “ملک کو اس وقت مستحکم طبی نظام کی ضرورت”

کرونا بلا شبہ ایک خطرناک مہلک مرض ہے جس کا مقابلہ کرنے کے لئے ہمیں جانچ اور علاج کے مستحکم انتظام کے ساتھ مضبوط منصوبہ بندی کی ضرورت ہے

کاسرگوڈ میں کورونا وائرس کا بڑھتا ہوا قہر۔ مزید 9افراد کی جانچ رپورٹ آئی پوزیٹیو۔ مریضوں کی تعداد ہوگئی 151

کیرالہ کے کاسرگوڈ میں کورونا وائرس کاقہر ابھی تھمتا نظر نہیں آرہا ہے۔ 6اپریل کی شام تک کی جو صورتحال ہے اس کے مطابق کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے مزید9معاملات سامنے آئے ہیں جس کے ساتھ ضلع میں جملہ مریضوں کی تعداد 151ہوگئی ہے۔

اترپردیش: بی جے پی کی خاتون لیڈر نے کورونا کو مارنے کے لیے چلائی گولی، ایف آئی آر درج

وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے اتوار کو رات 9 بجے 9 منٹ تک چراغاں کرنے کی اپیل کے دوران بعد اترپردیش کے ضلع بلرامپور میں 'دیا' جلانے کے بعد کورونا وائرس کو مارنے کے لئے ہوا میں فائرنگ کرنے والی بی جے پی کی سینئر خاتون لیڈر کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔