شرالی میں ماہی گیر خواتین کا پنچایت دفتر کے سامنے  احتجاج جاری

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 24th February 2020, 9:24 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل :24؍فروری(ایس اؤ نیوز)شرالی کی خاتون ماہی گیر وں کے احتجاج کا سلسلہ جاری ہے، پیر کو شرالی علاقے کی ماہی گیر خواتین نے مچھلی مارکیٹ کے باہر بھی مچھلیوں کی فروخت کاری کی مخالفت کرتےہوئے احتجاج کیا۔

ماہی گیر خواتین نے شرالی پنچایت دفتر کے سامنے ہی مچھلیوں کو بیچتے ہوئے پنچایت کے عوامی نمائندوں کو متوجہ کرنے کی کوشش کی۔ خواتین ماہی گیروں کا  احتجاج  جاری رہنے سے ماحول پیچیدہ ہوتا جارہاہے، عورتوں نے بتایا کہ جب تک مارکیٹ کے باہر مچھلیوں کی فروخت کاری پر پابندی عائد نہیں کی جائے گی تب تک ہم دفتر کے سامنے ہی بیٹھ کر مچھلیاں فروخت کریں گے۔ چاہے کوئی بھی آجائے ہم ڈریں گے نہیں ، ہٹیں گے نہیں ، اپنا احتجاج جاری رکھیں گے۔ اس سلسلے میں سب سے اپیل کی کوئی توجہ دینے تیار نہیں ہے۔ اسی لئے ہمارے سامنے اب صرف احتجاج ہی ایک راستہ ہونے کی بات کہی۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل انجمن ڈگری کالج اینڈ پی جی سنٹر میں ’’یوم ِ دستور ‘‘ پروگرام کاانعقاد : ہر شہری کو دستور کا شعور لازمی ہے

ہمیں اپنے حقوق حاصل کرنے اور اپنے فرائض کو ادا کرنے کے لئے  دستور کا شعور ہونا ضروری ہے ۔ بھٹکل سرکاری  پی یو کالج کی پرنسپال ڈاکٹر بھاگیرتھی نے ان خیالات کااظہار کیا۔

سرسی کو علاحدہ ضلع بنانے کے متعلق اسپیکر کاگیری سے بات چیت کرونگا: ضلع نگراں کارو زیر شیورام ہیبار

ابھی تک اترکنڑا ضلع سالم و غیر منقسم ہے، جب کبھی ضلع کو تقسیم کرنا ہوتا ہے تو ضلع کے عوامی نمائندوں اور باشعور افراد کے ساتھ صلاح ومشورہ لازمی ہوجاتاہے۔ ودھان سبھا اسپیکر وشویشور کاگیری نے سرسی ضلع کی ضرورت کے متعلق جو بیان دیا ہے اس سلسلے میں ان سے  گفتگو کرتاہوں، اس کے بعد ...

چکمگلورو میں المناک حادثہ: تالاب میں تیرنے پہنچے پانچ افراد موت کا شکار۔ شادی کا گھر بن گیا ماتم کدہ؛ ایک کو بچانے کی کوشش میں چار غرق

چکمگلورو کے وستارگاؤں میں ایک المناک حادثہ پیش آیا جس میں ہیرے کیرے نامی    تالاب کے اندر تیرنے کے لئے گئے  ہوئے   پانچ افراد  ڈوبنے کی وجہ سے  بیک وقت موت کا شکارہوگئے ۔مہلوکین کی شناخت سندیپ، راگھویندرا، سدیپ، دلیپ اور دیپک کے طور پر کی گئی ہے۔

ارے بائیل گھاٹ پر کانکریٹ روڈ بنانے 52کروڑر وپئے کا منصوبہ مرکزی حکومت کو ارسال : شیورام ہیبار

ضلع نگراں کار وزیر شیورام ہیبار نے  ارے بائیل سے لے کر اڈگوندی تک کی 16کلومیٹر قومی شاہراہ 63کو مکمل طورپر کانکریٹ سڑک میں منتقل کرنے کے لئے خصوصی توجہ دیتے ہوئے  52کروڑر وپئے کا منصوبہ تشکیل دے کر منظوری کے لئے مرکزی حکومت کو بھیج دیا ہے۔

بھٹکل: ساحلی اضلاع کے مختلف مقامات پر کسان مخالف ترمیم شدہ قوانین کو فوراً واپس لینے کا مطالبہ لےکر ٹریڈیونینوں کا احتجاج

سینٹر آ ف انڈین ٹریڈ یونینس (سی آئی ٹی یو ) بھٹکل تعلقہ یونٹ  سمیت  ساحلی اضلاع کے کئی مقامات پرمختلف کسان اور مزدور سنگھ نے  تحصیلدار کے توسط سے وزیر اعظم نریندرا مودی کے نام ایک میمورنڈم دیا جس میں مانگ کی گئی ہے کہ حال ہی میں منظور کیے گئے  عوام ،مزدور اور کسان مخالف ترمیم ...

مرڈیشور ساحلی کنارے سےکشتیاں ہٹانے کا مسئلہ :سرکاری انتظامیہ اور ماہی گیر وں کے بیچ ہوگئی تیز تکرا ر۔ پیدا ہوگئے ہیں تصادم کے آثار

مشہور سیاحتی مرکز مرڈیشور کے ساحل پر ٹورازم کو فروغ دینے کے لئے ضلع انتظامیہ نے جو ترقیاتی منصوبہ بنایا ہے اس کے تحت کچھ تعمیراتی کام بھی کیے جارہے ہیں اور اسی کے ساتھ ساحلی کنارے پر چھوٹے چھوٹے دکانداروں کو جگہ فراہم کرنا طے پایا ہے۔ لیکن اس کے لئے ساحلی کنارے پر اپنی کشتیاں ...