چنمیانند کیس: ایس آئی ٹی ’رڈار‘ پر بی جے پی کے 2 لیڈران، کی تھی ویڈیو خریدنے کی کوشش!

Source: S.O. News Service | Published on 15th October 2019, 11:04 AM | ملکی خبریں |

شاہجہاں پور،15؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) سابق مرکزی وزیر سوامی چنمیانند کے خلاف لگے جنسی استحصال کے الزامات کی جانچ کر رہی ایس آئی ٹی کی ٹیم متحرک ہے۔ اب اس کے رڈار پر شاہجہاں میں بی جے پی کے دو لیڈر آ گئے ہیں۔ امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ دونوں لیڈر وصولی معاملے کے تین ملزمین میں سے ایک سنجے سنگھ کے ساتھ قریبی رابطہ میں رہے ہیں۔

ایس آئی ٹی ذرائع کے مطابق ان لیدروں کو ویڈیو ریکارڈنگ کے بارے میں وکرم کے ذریعہ پتہ چلا تھا۔ وکرم معاملے کا ایک دیگر ملزم ہے۔ مبینہ طور سے انھوں نے سنجے سے ویڈیو ریکارڈنگ حاصل کرنے اور غالباً اپنا سیاسی مفاد حاصل کرنے کے لیے روپے بھی دینا چاہتے تھے۔

ایس آئی ٹی کے ایک افسر نے کہا کہ ’’یہ لیڈر ملزمین کے ساتھ لگاتار رابطہ میں تھے اور ہم ان کے کردار کی جانچ کر رہے ہیں۔‘‘ دونوں لیڈر 30 اگست کو راجستھان کے دوسہ ضلع میں بالاجی مندر کے پاس اسی ہوٹل میں موجود تھے، جہاں چنمیانند کے خلاف الزام لگانے کے ایک ہفتہ بعد لاپتہ طالبہ برآمد ہوئی تھی۔

متاثرہ جس کالج میں پڑھتی تھی، اس کے دو ملزمین سے بھی ایس آئی ٹی پوچھ تاچھ کر رہی ہے۔ متاثرہ نے اپنے بیان میں کالج کے پرنسپل، سکریٹری اور وارڈن کا بھی تذکرہ کیا تھا اور جنسی استحصال معاملے میں ایس آئی ٹی ان کے کردار کی بھی جانچ کر رہی ہے۔ اس معاملے کو دیکھ رہی الٰہ آباد ہائی کورٹ کی خصوصی بنچ نے ایس آئی ٹی کے ذریعہ داخل رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔

ایس آئی ٹی دو معاملوں کی جانچ کر رہی ہے اور چنمیانند کے آشرم میں چل رہے کالج میں پڑھنے والی طالبہ کی شکایت کی بنیاد پر اس نے 20 ستمبر کو چنمیانند کو گرفتار کیا تھا۔ متاثرہ نے ثبوت کے طور پر 40 ویڈیو پیش کیے تھے۔ دوسرا معاملہ وصولی سے متعلق ہے جس میں ایس آئی تھی نے متاثرہ اور اس کے دوست سنجے، وکرم اور سچن کو گرفتار کیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

ملک میں کورونا نے توڑا اب تک کا تمام ریکارڈ، 24 گھنٹے میں 24,805 نئے معاملے، 613 اموات

 ملک میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے ہوئے پھیلاؤ کے درمیان گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ 24،850 نئے معاملے رپورٹ ہونے کے سبب ہندوستان انفیکشن سے متاثرہ ممالک کی فہرست میں تیسرے نمبر پر روس کے بہت قریب پہنچ گیا ہے۔ اس عرصے میں ریکارڈ 613 افراد کی موت ہوئی ہے۔

معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی کا انتقال

 کوہ کن کے معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ء ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی نے سنیچر کے روز مختصر علالت کے بعد 84 سال کی عمر میں داعی اجل کو لبیک کہہ دیا۔ موصوف قدیم دینی و علمی درسگاہ دار العلوم حسینیہ شری وردھن ضلع رائے گڑھ (مہاراشٹرا) کے مہتمم بھی تھے۔

’کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے؟ مودی جی کو بتانا چاہیے‘

 کانگریس نے کہا ہے کہ چین نے وادی گلوان میں ہندوستانی حدود میں دراندازی کی ہے اور اس کے فوجی دستے ملک کے اسٹریٹجک نقطہ نظر سے متعدد اہم علاقوں میں تعینات ہیں، اس لیے اب وزیر اعظم نریندر مودی کو یہ بتانا چاہiے کہ کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے۔