بنگلور میں ووٹوں کی گنتی کے لئے پولیس کے غیر معمولی حفاظتی انتظامات

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 22nd May 2019, 11:35 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو۔22/مئی(ایس او  نیوز) لوک سبھا انتخابات کے لئے شہر میں ووٹوں کی گنتی کے تمام انتظامات پورے کرلئے گئے ہیں۔ بنگلور کے ریٹرننگ افسر اور بی بی ایم پی کمشنر منجوناتھ پرساد اور پولیس کمشنر سنیل کمار نے آج تینوں مقامات پر گنتی کے مرکزوں میں سکیورٹی کے انتظامات کا معائنہ کرتے ہوئے اطمینان ظاہر کیا۔

اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے منجوناتھ پرساد نے بتایاکہ بنگلور سنٹرل حلقے کے ووٹ ماؤنٹ کارمل کالج، بنگلو ر نارتھ کے ووٹ سینٹ جوزف انڈین ہائی اسکول اور بنگلور ساؤتھ کے ووٹ ایس ایس ایم آر وی کالج میں گنے جائیں گے۔ گنتی کے مراکز کے اطراف 100 میٹر کے دائرے میں کسی بھی گاڑی کا داخلہ ممنوع ہے۔ گنتی کے مراکز میں کاؤٹنگ ایجنٹوں اور امیدواروں کو شناختی کارڈ کے بغیر داخلہ نہیں دیا جائے گا۔ موبائل فون استعمال کرنے کی اجازت امیدواروں کو بھی نہیں ہوگی۔ گنتی کے ہرمرکز کے پاس فائرفورس کی گاڑی، دو ایمبولنس اور جنرریٹر مہیا کروائے گئے ہیں۔ گنتی کے عملے سے کہاگیا ہے کہ وہ صبح پانچ بجے وہ اپنے ڈیوٹی پر حاضر ہوجائیں، آٹھ بجے پوسٹل ووٹوں کی گنتی شروع ہوگی اور ساڑھے آٹھ بجے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی شروع کی جائے گی۔ یہ اندازہ لگایا جارہا ہے کہ دوپہر بارہ بجے تک واضح رجحانات ظاہر ہوسکتے ہیں۔

گنتی کے آخری مرحلے میں ہر اسمبلی حلقے کے پانچ پانچ پولنگ بوتھوں کے ووٹوں کو وی وی پیاٹ کی پرچیوں سے ملایا جائے گا اور گنتی کا عمل شام پانچ سے چھ بجے تک پورا ہونے کی توقع ہے۔ پولیس انتظامات کے تعلق سے شہر کے پولیس کمشنر سنیل کمار نے بتایاکہ گنتی کے ہر مرکز پر بندوبست کے لئے دوہزار جوانوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ ہر مرکز پر نیم فوجی دستوں کی دو کمپنیاں، کے ایس آر پی کی 23کمپنیاں تعینات رہیں گی۔ حفاظتی انتظامات کی نگرانی کے لئے سات ڈی سی پی، 22اے سی پی، 77 انسپکٹرس، 140 سب انسپکٹر، اور دوہزار پولیس جوان متعین رہیں گے۔ہر گنتی کے مرکز کے سو میٹر کے اطراف سرحد بنائی گئی ہے، جس کے اندر کسی کا داخلہ منع ہے۔ میڈیا کے نمائندوں کے لئے صرف میڈیا روم تک ہی محدود رہے گا۔انہوں نے بتایاکہ کل گنتی کے پیش نظر صبح چھ سے رات بارہ بجے تک شہر بھر میں دفعہ 144کے تحت امتناعی احکامات لاگو رہیں گے۔ اس کے علاوہ شہر بھر میں شراب کی فروخت پر بھی پابندی عائد ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی مدد کے لئے اے پی سی آر کی خدمات دستیاب

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی رہنمائی اور اُن کی  مدد کے لئے  اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس  (اے پی سی آر)  کی خدمات حاصل کی جاسکتی ہے۔جن  لوگوں نے  اپنی چھوٹی چھوٹی سرمایہ  کاری  اس کمپنی میں کی تھی اور اب وہ کنگال ہوچکے ہیں، اے پی ...

جندال اسٹیل کمپنی معاملہ سے متعلق حکومت نے سب کمیٹی تشکیل دی، کے پی سی سی سے استعفیٰ دینے کی خبرو ں میں کوئی سچائی نہیں: دنیش گنڈو راؤ

پردیش کانگریس کمیٹی(کے پی سی سی) صدر دنیش گنڈو راؤ نے کہا کہ جندال کمپنی کے لئے زمین فروخت کرنے کے معاملہ میں ریاستی حکومت نے سب کمیٹی تشکیل دی ہے۔

آئی ایم اے معاملہ میں نرم رویہ اختیار کرنے کاسوال پیدا نہیں ہوتا: ضمیر احمد خان

آئی مانیٹری اڈوائزری (آئی ایم اے) نامی پونزی کمپنی کے دھوکہ دہی معاملہ میں نرم رویہ اختیار کئے جانے کا سوال پیدا نہیں ہوتا۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں۔اس پس منظر میں بی جے پی کی جانب سے عائد کئے جارہے الزامات بکواس ہیں۔

آئی ایم اے گھپلہ کی جانچ سی بی آئی کے ذریعہ کروانے عبدالعظیم کا مطالبہ؛ متاثرین کا ہرممکن تعاون کرنے ایڈی یورپااور شوبھا کا تیقن

آئی ایم اے کے متاثرین کو انصاف اور ان کا حق دلانے کے سلسلہ میں آج شہر کے آنند راؤ سرکل پر واقع گاندھی مجسمہ کے روبرو بی جے پی مائنارٹی مورچہ کے ریاستی صدر عبدالعظیم کی صدارت میں ایک اہم اجلاس طلب کیا گیا تھا،

علاج کے لئے منگلور جانے والے توجہ دیں: منگلورو اور اڈپی کے اسپتالوں میں کل 17جون کو او پی ڈی خدمات رہیں گی بند

 بھٹکل اور اطراف سے کافی لوگ  علاج معالجہ کے لئے پڑوسی ضلع اُڈپی اور مینگلور کے اسپتالوں کا رُخ کرتے ہیں،  ان کے لئے  بری  خبر یہ ہے کہ کل  ڈاکٹروں کے احتجاج کے پیش نظر  مینگلور اور اُڈپی کے اسپتالوں میں باہری  مریضوں  کا علاج  نہیں ہوگا۔

آئی ایم اے معاملہ میں نرم رویہ اختیار کرنے کاسوال پیدا نہیں ہوتا: ضمیر احمد خان

آئی مانیٹری اڈوائزری (آئی ایم اے) نامی پونزی کمپنی کے دھوکہ دہی معاملہ میں نرم رویہ اختیار کئے جانے کا سوال پیدا نہیں ہوتا۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں۔اس پس منظر میں بی جے پی کی جانب سے عائد کئے جارہے الزامات بکواس ہیں۔

کرناٹکا اُردو اکیڈمی کی جانب سے امسال بھٹکل کے دو صحافیوں کو بھی ایوارڈ؛ 2 اور3 جولائی کو ہوگی بنگلور میں تقریب

 کرناٹکا اُردو اکیڈمی نے امسال پہلی بار بھٹکل کے دو صحافیوں بھٹکل نیوز کے ایڈیٹر عتیق الرحمن شاہ بندری اور پھول میگزین  کے ایڈیٹرمولوی عبداللہ دامدا ابو ندوی  کو    ایوارڈ سے نوازے جانے کا اعلان کیا ہے۔