بی جے پی کو بے دخل کرنے لئے سیکولر پارٹیاں متحد ہوں: شیوپال یادو

Source: S.O. News Service | Published on 21st October 2021, 12:26 AM | ملکی خبریں |

مہوبہ،21؍اکتوبر(ایس او نیوز؍ٓایجنسی) پرگتی شیل سماج پارٹی (لوہیا) کے سربراہ شیوپال یادو نے کہا کہ بی جے پی کو اترپردیش کے اقتدار سے بے دخل کرنے کے لئے یکساں نظریات کی حامل سبھی سیکولر پارٹیوں کو ایک ساتھ آنا ہوگا۔ وہ اس کے لئے سماج وادی پارٹی سمیت کسی بھی پارٹی سے اتحاد کرنے کو تیار ہیں۔

سماجی تبدیلی یاترا پر نکلے شیوپال یادو نے بدھ کو مہوبہ میں میڈیا نمائندوں سے کہا کہ بی جے پی حکومت اب تک کی سب سے ناکام حکومت ہے۔ بہتر حکمرانی کا ان کا دعوی ہوائی ثابت ہوا ہے۔ مہنگائی، بدعنوانی، بے روزگاری نےعوام کو ہلکان کر کے رکھ دیا ہے۔ روزی روزگار ختم ہونے سے غریب مزدوروں کا نوالہ چھن گیا ہے تو کالے قوانین لاکر کسانوں کو ختم کرنے کی سازش کی جا رہی ہے۔

شیوپال یادو نے کہا کہ کاروباریوں میں عدم تحفظ کا احساس ہے، بہن بیٹیوں کا سڑکوں پر محفوظ نکل پانا مشکل ہوگیا ہے۔ بی جے پی کی حکومت نے اترپردیش میں ساڑھے چار سال کے اپنے میعاد کار میں ایسا کوئی کام نہیں کیا ہے جس سے اس کی حصولیابی کہی جائے۔ وہ سابقہ حکومتوں کے کاموں کو اپنا بتا کر ان کا افتتاح کر کے جھوٹی تعریفیں حاصل کرنے میں مشغول ہے۔

شیوپال یادو نے کہا کہ بی جے پی میں بہروپئے لیڈروں کی کثرت ہے لیکن جملے بازی سے لوگوں کو گمراہ کرنے میں اب وہ کامیاب نہیں ہوسکیں گے۔ ان کے جھوٹ اور دھوکے بازی کو عوام سمجھ گئی ہے۔ لوگ اصلیت کو جان چکے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ریاست کے پریشان عوام نے اس بار کے الیکشن میں بی جے پی کو اکھاڑ پھینکنے کا پورا من بنا لیا ہے۔ غیر بی جے پی پارٹیوں کو بھی اب عوامی جذبات کو سمجھتے ہوئے اپنی پالیسی طے کرنی چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھیما کوریگاؤں معاملے کی ملزم سدھا بھاردواج کی مشکلات میں اضافہ، ضمانت کے خلاف سپریم کورٹ پہنچی این آئی اے

چھتیس گڑھ کی معروف سماجی کارکن اور وکیل سدھا بھاردواج کو ممبئی ہائی کورٹ کی طرف سے دی گئی ضمانت کے خلاف قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کی ہے۔