13 سال بعد کالیجیم میں خاتون جج، جسٹس بھانومتی کو ملی جگہ

Source: S.O. News Service | Published on 19th November 2019, 9:39 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،19نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) جسٹس آر بھانومتی 13 سال سے بھی زیادہ وقت کے بعد سپریم کورٹ کالیجیم میں شامل ہونے والی پہلی خاتون جج بن گئی ہیں۔حال ہی میں وہ پی چدمبرم کی ضمانت کی درخواست کی سماعت کے لیے لے کر سرخیوں میں تھیں،وہ سابق چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی جگہ لیں گی۔ان سے پہلے کالیجیم میں شامل ہونے والی آخری خاتون جج روما پال تھیں۔جسٹس ایس اے بوبڈے نے پیر کو ملک کے اگلے چیف جسٹس کے طور پر حلف اٹھا لیا۔جسٹس بھانومتی کو بھی پیر کو ہی کالیجیم میں جگہ دی گئی۔اس رکن کے طور پر عدالت میں ہونے والی تمام تقرریوں میں ان اہم کردار ہو گا۔آزادی کے بعد سے اب تک صرف 8 خواتین ججوں کی ہی سپریم کورٹ میں تقرری ہوئی ہے۔

بھانومتی تمل ناڈو سے آنے والی پہلی خاتون جج ہیں اور وہ جھارکھنڈ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس رہ چکی ہیں۔مدراس ہائی کورٹ میں جج رہتے ہوئے انہوں نے ریاست کے روایتی کھیل جلی کٹو پر روک لگا دی تھی،جانوروں کے حقوق کارکنوں نے اس کھیل کو ظالمانہ بتاتے ہوئے کورٹ میں چیلنج کیا تھا،بعد میں سپریم کورٹ میں اس معاملے کی سماعت کے دوران انہوں نے خود کو اس سے الگ کر لیا تھا۔مدراس ہائی کورٹ میں انہوں نے مبینہ مذہبی رہنما پریماند کے کیس کو بھی سنا تھا اور اسے اپنے آشرم میں خواتین کی عصمت دری اور قتل کرنے کے الزام میں دہری عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

سپریم کورٹ میں چدمبرم کی ضمانت کی درخواست کی سماعت کرتے ہوئے انہوں نے سرکاری فریق کی یہ دلیل مسترد کی تھی کہ سابق وزیر خزانہ ملک چھوڑ کر جا سکتے ہیں۔انہوں نے چدمبرم کو آئی این ایکس میڈیا معاملے میں مبینہ طور پر رشوت لینے کے سی بی آئی سے منسلک کیس میں ضمانت دے دی،اگرچہ چدمبرم اسی معاملے میں ای ڈی سے منسلک ایک کیس میں اب بھی عدالتی حراست میں ہیں۔بھانومتی ان چند منتخب ججوں میں سے ہیں، جنہوں نے اپنی جائیداد کا انکشاف کیا ہے،وہ ان 9 ججوں کی بنچ میں بھی شامل تھیں، جس نے کالیجیم نظام کو قائم کرنے اور اس ادارہ بنانے کے عدالت کی دہرے فیصلوں کا جائزہ لینے سے انکار کر دیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

سی بی ایس ای طلباء کو راحت، 9؍ویں سے 12؍ ویں کے نصاب میں 30 فیصد تخفیف

کووڈ-19 کے بڑھتے معاملات کے درمیان اسکول کے نہ کھل پانے کی وجہ سے نظام تعلیم پر اثر اور کلاسز کے اوقات میں بھی آئی کمی کے پیش نظر سی بی ایس ای نے منگل کو تعلیمی سال 21-2020 کے لئے 9ویں -12ویں کا نصاب 30 فیصدی تک کم کر دیا ہے۔

کورونا انفیکشن: ہندوستان ہوا بے حال، مریضوں کی تعداد تقریباً 7.5 لاکھ، مہلوکین 20642

 ہندوستان میں کورونا کا قہر لگاتار بڑھتا ہی چلا جا رہا ہے۔ گزشتہ کچھ دنوں سے روزانہ 20 ہزار سے زائد نئے مریض سامنے آ رہے ہیں اور مہلوکین کی تعداد میں بھی 400 سے 500 کے درمیان درج کی جا رہی ہے۔ تازہ ترین خبروں کے مطابق ہندوستان میں کورونا متاثرہ افراد کی کل تعداد 7.42 لاکھ اور ہلاکتوں ...