سعودی عرب ’فیوچر انویسٹمنٹ اینی شی ایٹو‘ کی میزبانی کرے گا

Source: S.O. News Service | Published on 30th October 2019, 6:06 PM | خلیجی خبریں |

 ریاض 30اکتوبر (ایس او نیوز/ایجنسی)  ’فیوچر آف انویسٹمنٹ اینشی ایٹو‘ پروگرام میں عالمی رہ نماؤں اور پالیسی سازوں کے ساتھ متعدد اوپن پینل بات چیت بھی شامل ہے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کی میزبانی میں تیسرے سالانہ فیوچر آف انویسٹمنٹ اینشی ایٹو کا اجلاس ریاض میں شروع ہوا 31 اکتوبر تک جاری رہنے والے اس اجلاس میں سعودی عرب کے پبلک فنڈ کی طرف سے 300 عالمی فیصلہ ساز شخصیات اور سربراہان مملکت کی شرکت کا اعلان کیا گیا ہے۔

تین سو موثر عالمی شخصیات کی فیوچر انویسٹمنٹ اینشی یٹو میں شرکت اس امر کی عکاسی کرتی ہے کہ مملکت میں سرمایہ کاری کا رحجان بڑھ رہا ہے۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ اجلاس میں شمالی امریکا، ایشیا، یورپ ، جنوبی افریقہ اور مشرق وسطی کے وفود شامل ہیں اس پروگرام میں عالمی رہ نماؤں اور پالیسی سازوں کے ساتھ متعدد اوپن پینل بات چیت شامل ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اس پروگرام میں فیصلہ سازوں ، سرمایہ کاروں اور 30 سے زائد ممالک کے ماہرین کے علاوہ 300 مقررین کی شرکت شامل ہے، اس میں اس تقریب کے عالمی رجحان کی عکاسی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ براعظم شمالی امریکا کے 39 فی صد نمائندگان شرکت کررہے ہیں۔

شرکا کی 20 فی صد تعداد یورپ،19 فی صد ایشیا سے شرکت کرے گی۔ فیوچر انویسٹمنٹ انیشی ایٹو میں 6000 سے زائد افراد کی شرکت متوقع ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ایران پر اسلحہ کے حصول پرعاید پابندیاں برقرار رکھنے کی جدوجہد جاری رکھیں گے: پومپیو

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے اپنے برطانوی ہم منصب ڈومینک راب کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ واشنگٹن ایران پر عائد اسلحہ کے پابندی کو برقرار رکھنے کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھے گا۔ ...

کینسر کے شکار سعودی استاد کی بسترعلالت سے طلبا کی تدریس

سعودی عرب میں اپنے طلبا کو زیور علم سے آراستہ کرنے کے جذبے سے سرشار کینسر کا شکار ایک استاد کا سبق آموز اور قابل تقلید واقعہ سامنے آیا ہے جو چار ماہ سے خود اسپتال میں بستر علالت پر ہونے کے باوجود اپنی تکلیف کو بھلا کر بچوں کی تدریس کے فرائض انجام دے رہا ہے۔ ...

دو ریاستی حل میں امارات اور بحرین کا بڑا کردار ہو گا : جیرڈ کشنر کی العربیہ سے بات چیت

امریکی صدر کے مشیر جیرڈ کشنر کا کہنا ہے کہ دو ریاستی حل کو یقینی بنانے کے سلسلے میں امارات اور بحرین کا اہم کردار ہو گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ فلسطینی معیشت کو بہتر بنانے کے لیے ایک اقتصادی منصوبہ موجود ہے۔