منگلورو اور اڈپی میں ریوینیو منسٹر دیشپانڈے کی جائزہ میٹنگ۔ افسران کو دیں اتی کرم سکرم کی درخواستیں 3 مہینے کے اندر نپٹانے کی ہدایات

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 19th June 2019, 8:49 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو 19/جون(ایس او نیوز)محکمہ ریوینیو کے ریاستی وزیر آر وی دیشپانڈے نے منگلورو اور اڈپی کا دورہ کیا جہاں انہوں نے مانسون سے درپیش خطرات سے نپٹنے کے لئے ضلع انتظامیہ کی جانب سے کی گئی تیاریوں کا جائزہ لیا۔

 منگلورو میں افسران اورعوامی منتخب نمائندوں کے ساتھ میٹنگ کے موقع پر انہوں نے افسران کو ہدایات دیں کہ 94c اور 94cc کے تحت سکرم کرنے کے لئے جودرخواستیں دی گئی ہیں انہیں 3مہینوں کے اندر نپٹادیا جائے۔انہوں نے تحصیلداروں سے کہا کہ جن درخواستوں میں کوئی پیچیدگی یا مسئلہ نہ ہو ان کا تصفیہ کردینے کا اختیار ولیج اکاؤنٹنٹ کو دیدیا جائے۔انہوں نے کہا کہ شہری اور مضافاتی علاقوں کو الگ الگ کرکے دونوں قسم کی درخواستوں کو بیک وقت نپٹادیا جانا چاہیے اور اس میں کسی قسم کے گڑبڑ گھوٹالہ کا الزام سامنے نہیں آناچاہیے۔ایسے تمام معاملے پر اسسٹنٹ کمشنراور ڈپٹی کمشنر کو نگاہ رکھتے ہوئے محکمے کو رپورٹ روانہ کرنا ہوگا۔

 سمپاجے ہائی وے کوگزشتہ مرتبہ زمین ڈھلنے سے جو نقصان پہنچا تو اس کو عبوری طور پر درست کردیاگیا ہے۔ مگر مستقل مرمت کے لئے مرکزی حکومت کو تجویز بھیجنے کے لئے جب ہائی وے ایکزیکٹیو انجینئر کو کہا گیاتو انجینئر نے وضاحت کی کہ فی الحال اس ہائی وے پر ٹریفک کے لئے کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ اس کی مرمت کے 47کروڑ روپے اخراجات کاتخمینہ اور منصوبہ ریاستی اور مرکزی حکومت کو بھیج دیا گیا ہے۔

 بیلتگنگڈی کے رکن اسمبلی ہریش پونجا اور پتور کے رکن اسمبلی سنجھیو ماٹنڈور نے محکمہ ریوینیو پر الزام لگایا کہ 94cکے تحت درخواستیں نپٹانے کے لئے ولیج اکاؤنٹنٹ سے تحصیلدار تک رشوت طلب کررہے ہیں اور یہ رقم ایک ایک لاکھ روپے تک ہوتی ہے۔ اس پر وزیر دیشپانڈے نے وضاحت طلب کی تو بیلتنگڈی تحصیلدار نے اس سے صاف انکار کردیا۔ دیشپانڈے نے ڈپٹی کمشنر سسی کانت سینتھی کو ہدایات دیں کہ وہ اس معاملے کی جانچ کریں اور اگر کسی کے رشوت لینے کی بات ثابت ہوتی ہے تو پھر اس کے خلاف سخت قانونی کارروائی کریں۔

 اُڈپی میں اپنے دورے کے وقت ریوینیو منسٹر دیشپانڈے نے کہا کہ ضلع میں ایک ہی سب ڈیویژن ہونے کی وجہ سے عوام کو دشواریاں پیش آنے کی بات ان کے علم میں آئی ہے۔اس لئے جلد ہی اڈپی شہر کے لئے  ایک سب ڈیویژن دفتر کا آغاز کردیا جائے گا۔ گرام پنچایتوں کا دورہ نہ کرنے والے تعلقہ پنچایت چیف ایکزیکٹیو افسران کو دیشپانڈے نے آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ انہیں چاہیے کہ کرسیوں سے چپک کر بیٹھنے کے بجائے عوام کے مسائل سمجھنے کے لئے عوام کے پاس جائیں۔دفتر میں آنے والے لوگوں سے عزت و احترام کے ساتھ پیش آئیں۔ فنڈ رہنے کے باوجود ٹینکر سے پانی فراہم کرنے میں سخت قوانین نافذ کرکے رکاوٹ پیدا کرنے کی شکایت پر دیشپانڈے نے میونسپل کمشنر پر اپنی ناراضی ظاہر کی اور کہا کہ اس طرح کا رویہ بالکل درست نہیں ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا سے لڑنے تنظیم کےذمہ داران بھی نہایت متحرک؛ پوری ٹیم میدان میں کام کررہی ہے؛ چوطرفہ ہورہی ہے ستائش

اس وقت نہ صرف شہر بھٹکل بلکہ پوری دنیا کورونا وائرس کی وباء سے  حیران وپریشان ہے ایک طرح سے اس وباء سے  پوری دنیا کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد جس طرح سے ملک بھر میں غریب عوام اور یومیہ مزدور طبقہ کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس سے ہرکوئی واقف ہیں ...

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

بھٹکل سے مزید تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ آج موصول ہونے والی تمام رپورٹس بھی نیگیٹیو؛ کیا کسی کی رپورٹ پوزیٹیوآنے کا خدشہ ہے ؟

کورونا وائرس کو لے کر شہر سمیت پورے ملک میں لاک ڈاون جاری ہے اور ہر روز مشکوک لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے ہیں۔اب تک بھٹکل سے جن لوگوں کے تھوک کے نمونے  جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے تھے،  راحت کی خبریں موصول ہورہی تھیں یہاں تک کہ مینگلور اور کاروار میں ...

بھٹکل میں کورونا وائرس کو لے کر کیاسوشیل میڈیا میں کسی طرح کی سازش رچی جارہی ہے ؟ مسلمانوں سے دور رہنے اورکسی بھی طرح کا لین دین نہ رکھنے کے مسیجس وائرل

ایسا لگتا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء فسطائی اور فرقہ وارانہ ذہنیت والے غیر مسلموں کے لئے مسلمانوں کے خلاف اپنی بھڑاس نکالنے کا نیا ہتھیار بن گئی ہے۔ ایک طرف کورونا وائرس کے نام پر مسلمانوں سے دوری رکھنے کی تلقین کی جارہی ہے  اور مسلمانوں سے کسی بھی طرح کی خریداری کرنے کی ...

کورونا کے نام پر مسلمانوں پر حملہ؛ باگلکوٹ میں تین مسلم لوگوں کو ایک گاوں میں داخل ہونے سے روکنے کی واردات

باگلکوٹ کے مدھول پولیس اسٹیشن کے حدود میں آنے والے ایک گاؤں میں چند شرپسندوں نے مسلمانوں کو اپنے گاؤں میں داخل ہونے سے عملاً روکتے ہوئے ان پر حملہ کرنے کی واردات پیش آئی ہے  جس کی ویڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر  وائرل ہوگئی ہے۔