ریزرویشن کا نامناسب اطلاق افسوسناک:جسٹس ناگ موہن داس

Source: S.O. News Service | Published on 12th February 2020, 11:28 AM | ریاستی خبریں |

میسورو،12/فروری (ایس او نیوز) وظیفہ یاب جسٹس ایچ۔ این۔ ناگ موہن داس نے ا فسوس کا اظہارکرتے ہوئے بتایا کہ مرکز اور تمام ریاستی حکومتوں میں 60/لاکھ سے زیادہ عہدے خالی پڑے ہیں اور ریزرویشن میں اہل افراد اس سے محروم ہیں۔

یہاں کلامندر میں ناگ موہن داس کمیشن کی جانب سے درج فہرست ذات و طبقات کے ریزرویشن کے تناسب میں اضافہ کے سلسلہ میں میسورو ڈویژنل سطح پرشکایات وصول کرنے کے لئے منعقد پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے ناگ موہن داس نے اس خیال کا اظہارکیا۔ انہوں نے کہاکہ کنٹراکٹ اور باہری کنڑاکٹ کی بنیاد پر مزدوروں کو نامزد کیا جارہا ہے،جو ریزرویشن پالیسی کے خلاف ہے۔ انہوں نے کہاکہ ریاستی حکومت میں 2.6لاکھ عہدے خالی ہیں لیکن ریزرویشن کے لئے اہل امیدوار اس سے محروم ہیں۔1992میں سرمایہ کاری واپس لئے جانے سے کئی شعبے نجی افراد کے حوالے ہوگئے جس کی وجہ سے بھی ریزرویشن کو دھکہ پہنچا۔

جسٹس ناگ موہن داس نے کہاکہ پارلیمان آئین میں باقی دفعہ 117 میں ترمیم کرکے جاری کرے اور یہ ثابت کرے کہ ملک کے تمام افر اد کو ریزرویشن آئین کا بنیادی حق اور انسانی حقوق میں سے ایک ہے۔ انہوں نے کہاکہ صرف ریزرویشن کا اعلان کرنے سے کچھ نہیں ہوتا بلکہ اسے جاری کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ایک جائزے کے مطابق 34/فیصد باہری کنٹراکٹ کے مزدور کام کررہے ہیں اور یہ نظام ریزرویشن کے خلاف ہے اور یہ سماجی انصاف کی بھی خلاف ورزی ہے۔ سابق رکن پارلیمان آر۔ دھروا نارائن نے بھی خطاب کیا۔ رکن اسمبلی اشون کمار، سابق وزیر ڈاکٹر ایچ۔ سی مہادیوپا، کرناٹک والمیکی ترقیاتی کارپوریشن کے صدر بسوا راجو، سابق ضلع پنچایت صدر ڈاکٹر پشپا امرناتھ نے بھی اپنے خیالات کا اظہارکیا۔ پروگرام میں پروفیسر چندرشیکھر، راج شیکھر مورتی، ممبر سکریٹری بشیر احمد ملا ودیگر حاضر رہے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو: شہریت ترمیمی قانون مخالف احتجاج کے دوران ہوئے لاٹھی چارج اور فائرنگ معاملے میں ایف آئی آر درج ہونا چاہیے؛ ہائی کورٹ کا تیکھاتبصرہ

منگلورو میں شہریت ترمیمی قانون کے خلاف19دسمبر2019 کو ہوئے پرتشدد احتجاج کے دوران پولیس کی طرف سے کیے گئے لاٹھی چارج اور فائرنگ کے سلسلے میں کرناٹکا ہائی کورٹ کی ڈیویزن بنیچ کے رکن جسٹس جان مائیکل نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ پولیس کوا س معاملے میں ایف آئی درج کرنا چاہیے۔

بنگلور وسٹی پولیس وائٹ فیلڈ کو محفوظ بنانے کیلئے سی سی ٹی وی کی نگرانی

اگر آپ وائٹ فیلڈکے علاقہ میں رہتے ہیں تو جلد ہی آپ بنگلور سٹی پولیس کی نگرانی میں ہوں گے، دراصل ٹیکنالوجی کے مرکز اور علاقہ کو جرائم سے محفوظ بنانے، شرارتوں کو ختم کرنے، عوامی اعلانات کو ممکن بنانے اور مجرموں کو پکڑنے کی کارروائی کو آسان بنانے کے لئے پولیس نے اب خانگی اداروں کا ...

بنگلورو سلک بورڈ جنکشن راہگیروں کے لئے خطرناک

الیکٹرانک سٹی اور شرجاپور میں واقع اپنے دفاتر کو جانے کے لئے بسوں کو پکڑنے کے لئے فٹ پاتھوں پر پیدل چلنے اور سلک بورڈ جنکشن کا استعمال کرنے والے ٹیکیوں کا کہنا ہے کہ، یہاں کی سڑکوں پر سے پیدل چل کر جانا ایک خطر ناک معاملہ ہوتا ہے۔

این آرسی بد عنوانیوں میں اضافہ کا سبب بنے گا

شہر بنگلور میں مزدوروں تنظیموں کے رضاکاروں نے تنبیہ کی ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے قومی رجسٹر برائے شہریت کے نفاذ کی کوئی بھی کوشش بد عنوانیوں کو ہوا دے سکتی ہے اور ملک بھر میں رشوت ستانی کا ماحول پیدا ہو جائے گا جبکہ غیرب لوگوں کو اپنے دستاویزات بنانے یا انہیں درست کرانے کے لئے ...

بی بی ایم پی صفائی کرمچاریوں کیلئے رہائشی اسکیم بی ڈی اے سے تعمیر شدہ فلیٹ کے حق پترا تقسیم

بروہت بنگلور مہانگر پالیکے (بی بی ایم پی) کے صفائی کرمچاریوں کو رہائش کی سہولت فراہم کرنے بنگلور ڈیولپمنٹ اتھارٹی (جی ڈی اے) کی طرف سے فلیٹ تعمیر کئے جارہے ہیں، ان میں سے چند فلیٹ کے حق پترا آج منتخب صفائی کرمچاریوں میں تقسیم کئے گئے۔

کنڑا میں بات کرنے پر طلباء پر جرمانہ عائد کرنے والے اسکول کی منظوری رد کرنے وزیر تعلیم سے کنڑا اتھارٹی کا مطالبہ

کنڑا ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے چیرمین ٹی ایس ناگ بھرنا نے وزیر برائے پرائمری وسکینڈری تعلیم سریش کمار کو مکتوب روانہ کرکے اسکول میں کنڑا میں بات کرنے پر جرمانہ لگانے والے چنسندرا کے ایس ایل ایس انٹرنیشنل گروکل اسکول کی منظوری منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔