راجیو گاندھی قتل: ہائی کورٹ نے مسترد کی نلنی کی عرضی، کہا، گورنر کو ہدایت نہیں دی جا سکتی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 18th July 2019, 11:46 PM | ملکی خبریں |

چنئی، 18 جولائی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)مدراس ہائی کورٹ نے سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی قتل میں عمر قید کی سزا کاٹ رہی نلنی کی درخواست مسترد کر دی۔نلنی نے عرضی کے ذریعے کورٹ سے گورنر کو قبل از وقت رہائی کی ہدایات دینے کی درخواست کی تھی۔ڈویژن بنچ کی جسٹس آر سبیا اور سی سرونن نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 361 کے تحت کسی ریاست کے گورنر کو مکمل چھوٹ حاصل ہے اور اس وجہ سے گورنر کو کوئی ہدایت نہیں دی جا سکتی ہے۔بنچ نے کہا کہ قانون گورنر کو ان کے آئینی ذمہ داریوں کے حصول میں مکمل استثنیٰ اور استحقاق پیش کرتا ہے۔بتا دیں کہ نلنی کے وکیل نے دعوی کیا تھا کہ کورٹ، گورنر کو حکم دے سکتا ہے۔نلنی ان دنوں 30 دن پیرول پر باہر ہیں۔گزشتہ دنوں نلنی نے اپنی بیٹی کی شادی کرنے کے لئے ہائی کورٹ سے 6 مہینے کے پیرول مانگنے والی عرضی دائر کی تھی لیکن ہائی کورٹ نے ان کی درخواست کا نمٹارا کرتے ہوئے انہیں ایک ماہ کا پیرول ہی منظور کیا تھا۔نلنی سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی قتل میں 6 دیگر قصورواروں کے ساتھ عمر قید کی سزا کاٹ رہی ہیں۔نلنی کو راجیو گاندھی قتل میں موت کی سزا سنائی گئی تھی، لیکن بعد میں تمل ناڈو حکومت نے 24 اپریل، 2000 کو اسے عمر قید کی سزا میں تبدیل کر دیا۔نلنی کا دعوی ہے کہ موت کی سزا عمر قید میں تبدیل کرنے کے بعد سے 10 سال یا اس سے کم وقت کی سزا کاٹ چکے قریب 3700 قیدیوں کو ریاستی حکومت رہا کر چکی ہے۔نلنی نے اپنی اپیل میں کہا تھا کہ عمر قید کی سزا کاٹ رہے قیدیوں کی وقت سے پہلے رہائی 1994 کی منصوبہ بندی کے تحت اس کی درخواست کو ریاستی کابینہ نے منظوری دے دی تھی۔اس نے کہا تھا کہ نو ستمبر، 2018 کو تامل ناڈو کابینہ نے گورنر کو اس کے اور کیس کے چھ دیگر قصورواروں کو رہا کرنے کی صلاح دی تھی، لیکن ابھی تک اس پر عمل نہیں ہوا ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

سی اے اے کیخلاف قرار دادیں ’’دستوری اعتبار سے بھیانک غلطی‘‘ ، کوئی طاقت کشمیری پنڈتوں کو کشمیر واپس جانے سے نہیں روک سکتی ؛ منگلورو میں ریالی سے راجناتھ سنگھ کا خطاب

وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے آج اپوزیشن پارٹیوں کو ہدف تنقید بناتے ہوئےاُن سے خواہش کی ہے کہ یہ پارٹیاں ‘ جہاں اُن کی اکثریت ہے، ریاستی اسمبلیوں میں سی اے اے کیخلاف قرار دادیں منظور کرتے ہوئے ’’دستوری اعتبار سے بھیانک غلطی ‘‘ نہ کریں۔ راجنا تھ سنگھ نے اپوزیشن پارٹیوں کو مشورہ ...

معیشت میں بہتری کے لیے ’مرہم‘ نہیں، سخت اقدامات کی ضرورت: کانگریس

کانگریس نے کہا ہے کہ لوگوں کی آمدنی اور خریدنے کی اہلیت کم ہونے کے ساتھ ہی صنعتی پیداوار، براہ راست ٹیکس، درآمدات۔برآمدات وغیرہ میں کمی کی وجہ سے معیشت بری صورت حال سے دوچار ہے اور بہتر ی کے لئے لیپا پوتی کرنے کے بجائے اب طویل مدتی سخت اقدام کرنے کی ضرورت ہے۔