راجستھان: عیدگاہ علاقہ میں فرقہ وارانہ کشیدگی، 5 لوگ زیر حراست

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th August 2019, 10:14 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

جے پور، 13 اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) راجستھان کے دارالحکومت جیپور کے عید گاہ علاقے میں ایک بس پر پتھراؤ،توڑ پھوڑ اور آتش زدگی کے واقعات کے بعد ماحول پرامن ہے جبکہ اس معاملے میں پانچ لوگوں کو حراست میں لیاگیا ہے اور پچاس سے زیادہ کو نامزد کیاگیا ہے۔پولس کے مطابق پیر کی رات کو ہوئے ہنگامے کے بعد دیر رات سے حالات قابو میں ہیں۔حالانکہ علاقے میں تناؤ کے پیش نظر اضافی پولس دستہ تعینات ہے اور حالات پرامن ہیں۔اس معاملے میں پانچ لوگوں کو حراست میں لیا گیا اور پچاس سے زیادہ لوگوں کو نامزد کیاگیا ہے۔علاقے میں امن برقرار رکھنیکیلئے انٹرنیٹ خدمات بھی بند کردی گئی ہیں۔واضح رہے کہ عید گاہ علاقے میں پیر کی رات گلتا گیٹ کے سامنے دہلی روڈ پر ہری دوار جانے والی ایک بس پر کچھ سماج شمن عناصر نے پتھراؤ شروع کردیا۔اس دوران کئی گاڑیوں کے شیشے توڑ دیئیگئے۔اس سے علاقے میں تنازع ہے۔پتھراؤ اور ہنگامے میں تقریباً دو درجن لوگ زخمی ہوگئے۔ان میں آدھار درجن سے زیادہ پولس اہلکار زخمی ہوگئے۔اس دوران کچھ گاڑیوں میں آگ بھی لگا دی گئی۔پولس نے آنسو گیس کے گولے چھوڑکر بھیڑ کو کھدیڑ کر حالات کو قابو کیا۔فی الحال علاقے میں بڑی تعداد میں پولس دستہ تعینات ہے اور تناؤ کے درمیان حالات پر امن ہیں۔دو فریقوں میں اتوار کی صبح کانوڑ یاترا کے سلسلے میں جھگڑا ہوگیاتھا۔اس کے بعد پیر کی رات تقریباً دس بجے ہری دوار جانے والی ایک بس پر پتھراؤ کرنے سے تناؤ بڑھ گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کے جی ہلی، ڈی جے ہلی تشدد کی جانچ سابق میئر سمپت راج کو سی سی بی کا سمن جاری

بنگلورو کے کے جی ہلی اور ڈی جے ہلی میں پیش آنے والے پرتشدد واقعات کی جانچ کے سلسلہ میں سنٹرل کرائم برانچ نے شہر کے سابق میئر اور دیورجیون ہلی کے سابق کارپوریٹر سمپت راج کو پوچھ گچھ کے لئے حاضر ہونے کے لئے سمن جاری کیا

منشیات معاملہ پر پولیس حکومت کا کھلونا بن چکی ہے: سدارامیا

سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈرسدارامیا نے کہا ہے کہ منشیات کیس کی جانچ کے معاملے میں بنگلورو پولیس ریاستی حکومت کے ہاتھ کھلونا بن چکی ہے اور اس کیس میں اہم ملزمین کو نظر انداز کر کے اسے دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔