کرناٹک بحران: پارلیمنٹ احاطہ میں کانگریس کا مظاہرہ، راہل-سونیا نے لگایا ’جمہوریت بچاؤ‘ کا نعرہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th July 2019, 11:29 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی،11؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجسنی) کرناٹک اور گوا میں جاری سیاسی گھمسان کے پیش نظر کانگریس نے جمعرات کو پارلیمنٹ احاطہ میں دھرنا دیا۔ کانگریس کے اس احتجاجی مظاہرہ میں یو پی اے چیئرپرسن سونیا گاندھی اور کانگریس لیڈر راہل گاندھی شامل ہوئے۔ پارلیمنٹ احاطہ میں مہاتما گاندھی کے مجسمہ کے سامنے اس احتجاجی مظاہرہ میں کانگریس نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی کرناٹک اور گوا میں اراکین اسمبلی کی خریدو فروخت کر رہی ہے۔ اس دوران سبھی لیڈروں نے ’جمہوریت بچاؤ‘ کے نعرے بھی لگائے۔

دوسری جانب کرناٹک میں چل رہا سیاسی ڈرامہ اب سپریم کورٹ تک پہنچ گیا ہے۔ سپریم کورٹ نے جمعرات کو عرضی پر سماعت کرتے ہوئے کہا کہ سبھی باغی اراکین اسمبلی آج شام 6 بجے اسپیکر کے سامنے پیش ہوں۔ عدالت نے یہ بھی کہا کہ اراکین اسمبلی چاہیں تو استعفیٰ دے سکتے ہیں اور ضرورت پڑی تو انھیں سیکورٹی بھی فراہم کی جائے۔ اس سے قبل اسپیکر رامیش کمار نے کہا تھا کہ ابھی تک انھوں نے کوئی استعفیٰ منظور نہیں کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ استعفیٰ منظور کرنے کا ایک قانون ہے اور وہ قانون کے مطابق ہی کام کریں گے۔ اسمبلی اسپیکر نے اس سے قبل یہ بھی کہا تھا کہ استعفیٰ دینے والے 13 اراکین میں سے 9نے جو استعفیٰ نامہ بھیجا ہے وہ مقرر کردہ طریقے کے مطابق نہیں ہے۔

موجودہ بحران کو لے کر کرناٹک کے وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کماراسوامی نے کابینہ میٹنگ بلائی ہے۔ اس درمیان کرناٹک اسمبلی کے آس پاس دفعہ 144 نافذ کی گئی ہے۔ 11 سے 14 جولائی تک بنگلورو واقع اسمبلی کے آس پاس دفعہ 144 نافذ رہی گی۔ قابل ذکر ہے کہ ابھی تک کل 16 اراکین اسمبلی استعفیٰ دے چکے ہیں۔ بدھ کو کرناٹک کے وزیر ڈی کے شیو کمار باغی اراکین اسمبلی کو منانے ممبئی پہنچے تھےجہاں پولس نےا ن کو حراست میں لے لیا تھا اور پھر جبراً انھیں بنگلورو واپس بھیج دیا گیا۔

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ سدارمیا نے اس سیاسی بحران کے پیچھے پی ایم مودی اور امت شاہ کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ انھوں نے کہا کہ بی جے پی رکن اسمبلی اور کارکنان شورش پسند ہیں۔ میں اس کی تنقید کرتا ہوں۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو۔بنگلوروٹریک پرچٹان توڑنے کا کام مسلسل جاری۔ دن کے وقت چلنے والی ریل گاڑیاں 24جولائی تک کے لئے منسوخ

انی بندا کے قریب سبرامنیا سکلیشپور ریلوے ٹریک پر ایک بڑی چٹان لڑھکنے کا خطرہ پیدا ہوگیا تھا۔ اس حادثے کو روکنے کے لئے پہاڑی تودے کو دھماکے سے توڑنے کاکام پچھلے دو تین دن سے جاری ہے جس کے لئے ہیٹاچی مشین کے کامپریسر اور بارود کا استعمال کیا جارہا ہے۔ لیکن تیز برسات کی وجہ سے دن ...

کرناٹک: بی ایس پی ارکان اسمبلی کمارسوامی کے حق میں ووٹ کریں گے:مایاوتی

کرناٹک میں کانگریس اورجے ڈی ایس کی مخلوط حکومت رہے گی یا جائے گی اس کا فیصلہ آج ہو جائے گا ۔ برسر اقتدار اتحاد کے ارکان اسمبلی کو بی جے پی ٹوڑنے کی کوشش کر رہی ہے لیکن اس بیچ بی ایس پی سپریموں نے کہا ہے کہ اس کی پارٹی کے ارکان اسمبلی کمارسوامی حکومت کے حق میں ہی ووٹ ڈالیں گے ۔ یہ ...

مخلوط حکومت کی بقا کا سسپنس برقرار آج بھی اسمبلی میں تحریک اعتماد پر ووٹنگ کا امکان،باغیوں کو واپس لانے کیلئے سدارامیا کو وزیر اعلیٰ بنانے کی پیش کش

ریاست میں کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت کوبچانے کے لئے اتحادی جماعتوں کے قائدین کی کوششوں کا سلسلہ جاری ہے تو دوسری طرف اپوزیشن بی جے پی اس کوشش میں ہے کہ کسی طرح پیر کے روزتحریک اعتماد پر اسمبلی میں ووٹنگ ہو جائے لیکن خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں

یوپی اسمبلی: پرینکا گاندھی کو سون بھدر جانے سے روکنے اور حراست پر زَبردست ہنگامہ

ریاستی حکومت کے ذریعہ کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا کو سون بھد رجانے سے روکنے، انہیں 27 سے زیادہ گھنٹوں تک حراست میں رکھنے و ریاست میں ایس پی حامیوں کے ہوئے رہے قتل پر یو پی اسمبلی میں کانگریس و ایس پی اراکین نے جم کر ہنگامہ کیا۔

مودی حکومت نے لوک سبھا میں ’آر ٹی آئی‘ ختم کرنے والا بل پیش کیا: کانگریس

  کانگریس نے الزام لگایا ہے کہ ’کم از کم گورنمنٹ اور زیادہ سے زیادہ گورننس‘ کی بات کرنے والی مرکزی حکومت لوگوں کے اطلاعات کے حق کے تحت حاصل حقوق کو چھین رہی ہے اور اس قانون کو ختم کرنے کی کوشش کررہی ہے۔