رافیل معاملہ: سپریم کورٹ سے اپیل،بند لفافے میں غلط معلومات دینے والے افسران کے خلاف کارروا ئی ہونی چاہیے 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 23rd May 2019, 12:10 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،23/ مئی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) رافیل معاملے پر تنازعہ ختم ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے۔اس معاملے میں درخواست گزار یشونت سنہا، ارون شوری اور پرشانت بھوشن نے نظر ثانی کی درخواست پر تحریری دلیلیں سپریم کورٹ میں داخل کی ہیں۔انہوں نے سپریم کورٹ سے اپیل کی ہے کہ وہ حکومت ہند کے ایسے افسران کے خلاف کارروائی کریں، جنہوں نے بند لفافے میں سپریم کورٹ کو غلط معلومات سونپی تھی۔ انہوں نے پرانے فیصلے کو واپس لینے کا اعلان کیا ہے کیونکہ حکومت نے عدالت سے مواد اور متعلقہ معلومات کو چھپایا تھا اور عدالت سے کئے گئے فراڈ کی بنیاد پر یہ فیصلہ نہیں ملا۔ریکارڈ پر موجود مواد کی بنیاد پر انہوں نے عدالت سے اپیل کی ہے کہ وہ 4 اکتوبر 2018 کو کی گئی شکایت پر سی بی آئی جانچ کا حکم دیں جس پر سی بی آئی نے اب تک کوئی کارروائی نہیں کی۔دراصل نظر ثانی درخواستوں پر سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ رکھتے ہوئے تمام فریقین کو دو ہفتے میں تحریری دلیلیں داخل کرنے کو کہا تھا۔ اس سے پہلے رافیل ڈیل میں ریویو پیٹشن دائر کرنے والے درخواست گزاروں نے مرکز کے جواب پر سپریم کورٹ میں اپنا حلف نامہ داخل کیا تھا۔درخواست گزاروں نے کہا تھا کہ جس سی اے جی کی رپورٹ کا حوالہ دیا گیا اس میں کئی خامیاں ہیں۔سی بی آئی نے کئی بار شکایت درج کرانے کے باوجود معاملے کی جانچ نہیں کی۔سی اے جی رپورٹ میں بینک گارنٹی ویب آف کولے کر کوئی ذکرنہیں ہے۔درخواست گزاروں نے دلیل دی تھی کہ حکومت نے معلومات چھپائی اور کئی جگہ غلط بیانی کر کے اپنے حساب سے فیصلہ لیا۔

ایک نظر اس پر بھی

تریپورہ: بی جےپی-آئی پی ایف ٹی اتحاد خطرے میں

تریپورہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے اپنے کارکنوں پر مبینہ حملے کے سلسلے میں اتحادی حکومت کی معاون انڈین پیپلز فرنٹ آف تریپورہ (آئی پی ایف ٹی) سے رشتہ توڑنے کے بعد دباؤ کے درمیان آئی پی ایف ٹی لیڈروں نے پیر کو اعلان کیا کہ وہ موجودہ صورت حال میں اتحادی حکومت میں شامل نہیں رہ ...

بہار میں شدت کی گرمی، 183 افراد ہلاک،22 جون تک سرکاری اسکول بند،گیا میں دفعہ 144 نافذ

بہار میں زبردست گرمی اور لُو کے تھپیڑوں سے لوگوں کا جینا دشوار ہو گیا ہے۔ حالات اتنے بدتر ہیں، اس کا اندازہ اسی سے لگایا جا سکتا ہے کہ مقامی میڈیا رپورٹوں کے مطابق پچھلے 3 دن کے دوران تقریباً 183 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔

پرگیہ ٹھاکر کو لوک سبھا میں پہلے ہی دِن اپوزیشن کی مخالفت کا کرنا پڑا سامنا

عام انتخابات کے دوران ناتھو رام گوڈسے کے متعلق دئے گئے بیان کی وجہ سے تنازعہ کا شکار بی جے پی کی ممبر پارلیمنٹ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو آج لوک سبھا میں پہلے ہی دن اس وقت اپوزیشن کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا جب انہوں نے حلف لیتے وقت اپنے نام کے ساتھ چنمیانند اودھیشانند گری بھی ...

علاج کے لئے منگلور جانے والے توجہ دیں: منگلورو اور اڈپی کے اسپتالوں میں کل 17جون کو او پی ڈی خدمات رہیں گی بند

 بھٹکل اور اطراف سے کافی لوگ  علاج معالجہ کے لئے پڑوسی ضلع اُڈپی اور مینگلور کے اسپتالوں کا رُخ کرتے ہیں،  ان کے لئے  بری  خبر یہ ہے کہ کل  ڈاکٹروں کے احتجاج کے پیش نظر  مینگلور اور اُڈپی کے اسپتالوں میں باہری  مریضوں  کا علاج  نہیں ہوگا۔

آئی ایم اے معاملہ میں نرم رویہ اختیار کرنے کاسوال پیدا نہیں ہوتا: ضمیر احمد خان

آئی مانیٹری اڈوائزری (آئی ایم اے) نامی پونزی کمپنی کے دھوکہ دہی معاملہ میں نرم رویہ اختیار کئے جانے کا سوال پیدا نہیں ہوتا۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں۔اس پس منظر میں بی جے پی کی جانب سے عائد کئے جارہے الزامات بکواس ہیں۔

کرناٹکا اُردو اکیڈمی کی جانب سے امسال بھٹکل کے دو صحافیوں کو بھی ایوارڈ؛ 2 اور3 جولائی کو ہوگی بنگلور میں تقریب

 کرناٹکا اُردو اکیڈمی نے امسال پہلی بار بھٹکل کے دو صحافیوں بھٹکل نیوز کے ایڈیٹر عتیق الرحمن شاہ بندری اور پھول میگزین  کے ایڈیٹرمولوی عبداللہ دامدا ابو ندوی  کو    ایوارڈ سے نوازے جانے کا اعلان کیا ہے۔