وزیرا عظم مودی کے جنم دن پر آر وی دیشپانڈے نے پیش کی مبارکباد۔دل کھول کر ستائش کرنے کے پیچھے کیا ہوسکتا ہے راز؟

Source: S.O. News Service | Published on 18th September 2019, 9:18 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ملکی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل 18ستمبر (ایس او نیوز) یہ بات ثابت شدہ ہے کہ سیاست میں کوئی بھی مستقل دوست یا مستقل دشمن نہیں ہوتا۔ مگر نظریاتی اختلاف یا اتفاق کے بارے میں سمجھا جاتا ہے کہ وہ اگر مستقل نہ ہوتو کسی بھی شخصیت کا وقار مجروح ہوتا ہے۔

موجودہ دور کی سچائی یہ ہے کہ ملک کے بدلتے سیاسی حالات میں جس طرح ایک مخصوص فکر اور رجحان کو فوقیت حاصل ہوگئی ہے اور باقی تمام نظریات حاشیے پر چلے گئے ہیں، وہ جمہوری اقدار کی پوری طرح شکست و ریخت کی طرف اشارہ کررہی ہے۔ چند برسوں تک فسطائیت یا ہندوتوا کے کٹر ترین مخالف سمجھے جانی والی شخصیات بھی جب زعفرانی شال اور جھنڈے کے سایے کی طرف لپکنا شروع کرنے لگی ہوں تو پھر پہلے سے جن کا جھکاؤ اس جانب ہو ان کے بارے میں کیا کہا جاسکتا ہے۔

 دیشپانڈے کی سیاسی کروٹیں:    کچھ ایسی بات ہمارے ضلع کے نامور اورسینئر سیاست داں آر وی دیشپانڈے کے تعلق سے کہی جاسکتی ہے۔ انہوں نے اپنی سیاسی زندگی کا کچھ  حصہ جنتا دل اور بڑا حصہ کانگریس پارٹی کے ساتھ گزارا ہے۔ ابھی کچھ دن پہلے تک بھی وہ مخلوط حکومت میں کانگریس کی طرف سے بطور ریوینیو منسٹر وزارت میں شامل تھے۔ لیکن اکثر ان کے بارے میں سیاسی گلیاروں میں یہ خبریں  ہمیشہ سنائی دیتی رہی ہیں کہ دیشپانڈے صاحب کا اندرونی جھکاؤ زعفرانی پارٹی کی طرف ہے۔ مخلوط حکومت گرنے کا جو ڈرامہ چلا تھا اس میں بھی کچھ لوگ دیشپانڈے کی طرف سے بھی دَل بدلی کی توقع ظاہر کررہے تھے۔

 نریندرا مودی کی ستائش:    اب وزیراعظم نریندرا مودی کے 69ویں جنم دن پر دیشپانڈے نے نہ صرف مبارکباد پیش کی ہے بلکہ اپنے ٹویٹ میں مودی کی دل کھول کر تعریف کی ہے۔16ستمبر کو اپنے پہلے ٹویٹ میں انہوں نے کہا ہے:”میں انہیں (مودی کو) طویل عمر اور ان کی جو بھی خواہشات ہوں انہیں پوری کرنے کے لئے مزید توانائی کی دعا کرتا ہوں۔ بھگوان ان پر مہربان ہو۔“

پھراسی دن اپنے  دوسرے ٹویٹ میں انہوں نے کہا: ”معزز وزیراعظم نریندرا مودی جی کو ان کے 69ویں جنم دن پر دلی مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ ان کی کرشماتی(دلکش) شخصیت اور توانائی قابل ستائش ہے۔ہندوستان کی شبیہ کو مستحکم کرنے کے لئے ان کی خدمات کا شکریہ۔عالمی لیڈران (مودی کی  وجہ سے) بین الاقوامی تجارت اور سیاست میں ہندوستان کی اہمیت کا لوہا مان رہے ہیں۔“

تعریف کے ساتھ تصویر بھی!:    خاص بات یہ بھی ہے کہ آر وی دیشپانڈے نے اپنے ٹویٹر ہینڈل سے مودی کی ستائش کرنے کے علاوہ وزیر اعظم کے ساتھ ایک پروگرام میں کھینچی گئی اپنی ایک تصویر بھی پوسٹ کی ہے۔جبکہ ریاست کے کسی بھی کانگریسی لیڈر نے وزیراعظم مودی کو جنم دن کی مبارکبا د کسی بھی پلیٹ فارم سے نہیں دی ہے۔ ایسے میں صرف دیشپانڈے کی جانب سے کیے گئے اس اقدام سے جو اشارہ  ملا ہے اسے سمجھنا سیاسی سوجھ بوجھ رکھنے والوں کے لئے کوئی مشکل کام نہیں ہے۔

 کانگریسی لیڈران پریشان ہیں:     ریاستی کانگریس کے تمام اہم لیڈران اور کارکنان کانگریس کے ایک اہم ترین اور طاقت ور لیڈر ڈی کے شیوکمار کی اینفورسمنٹ ڈپارٹمنٹ کی طرف سے گرفتاری پر مودی اور امیت شاہ کے خلاف صف آراء ہوگئے ہیں۔ملکی سطح پر سابق وزیر داخلہ اور وزیر مالیات پی چدمبرم کی گرفتاری سے بھی کانگریس میں ہلچل مچی ہوئی ہے۔ایسے میں دیشپانڈے کی طرف سے مودی کو یہ کہنا کہ آپ کی تمنائیں او رخواب پورے ہوں (یعنی کانگریس مکت بھارت کاخواب!) اور آپ کی دلکش شخصیت قابل ستائش ہے،یقینی طور پر کانگریسی حلقوں کے لئے یہ حیرت انگیز بات ہوگی۔

دیشپانڈے  کا سوچا سمجھا اقدام:     کانگریسی ذرائع کا کہنا ہے کہ چالیس برس سے سیاسی میدان میں رہنے والے دیشپانڈے کو بخوبی علم ہے کہ انہیں کیا کرنا چاہیے اور کیا نہیں کرنا چاہیے۔ سونیا گاندھی سے لے کر کسی گرام پنچایت سطح کے کانگریسی لیڈر کو بھی معلوم ہے کہ نریندرامودی اور بی جے پی کا مشن کیا ہے اور کانگریس کے تعلق سے ان کا خواب کیا ہے۔ ریاستی کانگریس کے اہم لیڈران جیسے دنیش گنڈو راؤ، سدارامیا وغیرہ مودی کا نام لیتے ہوئے صیغہ واحد کا استعمال کرتے ہیں۔ لیکن دیشپانڈے کے بارے میں خود کانگریسیوں کا احساس ہے کہ وہ ہمیشہ بڑی عیارانہ سیاست کرتے آئے ہیں۔اقتدار میں رہتے ہوئے بھی انہوں نے کبھی بھی مودی اور امیت شاہ کے خلاف کوئی لفظ نہیں بولا   اورکبھی ان پر تنقید نہیں کی۔اس بارے میں جب کبھی سوال کیا گیاتو انہوں نے یہی جواب دیا کہ کسی پر تنقید کرنا میر ے مزاج میں نہیں ہے۔ 

کیا آئی ایم اے کا خوف ہے؟:    سیاسی تجزیہ نگاروں کا احساس ہے کہ دو تین دن پہلے ہی ای ڈی ذرائع کے حوالے سے آئی ایم اے فریب کاری معاملے میں کلیدی ملزم منصور علی خان کی طرف یہ بات منسوب کی گئی تھی کہ آر وی دیشپانڈے نے اس سے پانچ کروڑ روپے رشوت حاصل کی تھی۔میڈیا میں اس خبر کے عام ہوتے ہی دیشپانڈے نے اس سے انکار تو کردیا ہے، لیکن جیسے دیگر سیاستدانوں کو اس معاملے میں تحقیقات کے لئے ای ڈی نے طلب کیا تھا اسی طرح دیشپانڈے کو بھی ای ڈی کا بلاوا کسی بھی وقت ملنے کے قوی امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔اور اسی خوف کی وجہ سے دیشپانڈے نے علی الاعلان بی جے پی لیڈروں کے گن گانے شروع کیے ہیں۔ اب اس میں کتنی سچائی ہے یہ بات آنے والے دنوں میں پتہ چلے گی۔

دیشپانڈے کا مسئلہ کیا ہے!:    کچھ کانگریسی ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ دیشپانڈے کو اس بات کا بہت پہلے سے ہی احساس ہے کہ کانگریس پارٹی میں اب ان کو زیادہ اہمیت نہیں دی جارہی ہے اور کنارے کرنے کی کوشش جاری ہے۔ دوسری طرف ان کا اب سب سے بڑا مشن اپنے بیٹے پرشانت دیشپانڈے کو سیاسی طور پر ابھارنا اور مستحکم زمین فراہم کرنا ہے۔ لیکن کانگریس میں رہتے ہوئے ان دونوں پہلوؤں سے انہیں کامیابی ملتی نظر نہیں آرہی ہے۔ اس پس منظر میں ان کے دہلی جاکر مودی اورامیت شاہ سے ملاقات کرنے کی جو خبر عام ہوئی ہے، وہ بڑی اہمیت رکھتی ہے۔اس کے بعد مودی کو جنم دن کی مبارکباد اور کھلی ستائش کا مطلب کیا ہوسکتا ہے اس کا اندازہ لگانے کے لئے کسی کواپنے دماغ پر بہت زیادہ زور دینے کی ضرورت نہیں ہے۔لگتا ہے کہ سیاسی ڈرامے کا پورا منظر تیار ہے، بس پردہ اٹھنے کی دیر ہے۔اور شاید اس میں زیادہ وقت نہیں لگے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

ساحلی علاقے میں کاروباری سرگرمیوں کا اہم مرکزبننے جارہا ہےانکولہ شہری ہوائی اڈہ، بندرگاہ اور انڈسٹریل ایسٹیٹ کے تعمیری کام سے بدل رہا ہے نقشہ

آج کل  شمالی کینرا کے شہر انکولہ میں بڑے اہم سرکاری منصوبہ جات پر کام شروع ہورہا ہے جس کی وجہ سے ایسا لگتا ہے کہ  مستقبل قریب میں یہاں کا نقشہ ہی بدل جائے گا اور پورے ساحلی علاقے انکولہ شہر کاروباری سرگرمیوں کا اہم مرکز بن جائے گا اور پورے ملک کی توجہ اپنی طرف کھینچ لے گا،جس سے ...

بھٹکل میں اے سی کے ذریعے دکانوں کو بند کرنے کا معاملہ؛ مرچنٹ اسوسی ایشن کی درخواست پر کاغذات دُرست کرانے تین ہفتوں کی ملی مہلت

بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر مسٹر بھرت نے  آج بھٹکل مرچنٹ اسوسی ایشن کی درخواست پر بھٹکل کے دکانداروں کو تین ہفتوں  کی مہلت دی ہے کہ وہ اس مدت میں  اپنے کاروبار کا لائسنس بنائے یا جن کے پاس لائسنس ہے وہ اپنا لائسنس رینیو کرائے۔ اگر دی گئی مہلت میں دکاندار اپنے کاغذات  کو تیار نہیں ...

منگلورو میں سڑک کی تعمیر نو کے وقت دریافت ہواایک صدی پرانا تاریخی کنواں !

منگلورو سمارٹ سٹی پروجیکٹ کے تحت ہمپن کٹّا کے علاقے میں سڑک کی تعمیر نو کے لئے کھدائی  کے دوران ایک صدی پرانا تاریخی کنواں  دریافت ہو اہے۔  اور تعجب کی بات ہے کہ ابھی بھی اس کنویں کا پانی بہت ہی صاف و شفاف ہے اور کنواں اچھی حالت میں موجود ہے۔

بھٹکل لائن اسپورٹس ہال میں میونسپل حکام کی عوام کے ساتھ میٹنگ؛ مچھروں کی بھرمار پر قابو پانے سمیت کئی ایک مسائل پر ہوا غورو خوض

بھٹکل فاروقی اسٹریٹ پر واقع لائن اسپورٹس ہال میں منعقدہ میونسپالٹی حکام کی عوام کےساتھ ہوئی میٹنگ میں  علاقہ میں مچھروں کی بھرمار پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے  مچھر مار دوائیوں کے چھڑکاو پر زور دیا گیا، اسی طرح ڈرینیج سسٹم کی درستگی سمیت دیگر کئی اہم مسائل پر بھی  غوروخوض ...

کے جی ہلی، ڈی جے ہلی تشدد کی جانچ سابق میئر سمپت راج کو سی سی بی کا سمن جاری

بنگلورو کے کے جی ہلی اور ڈی جے ہلی میں پیش آنے والے پرتشدد واقعات کی جانچ کے سلسلہ میں سنٹرل کرائم برانچ نے شہر کے سابق میئر اور دیورجیون ہلی کے سابق کارپوریٹر سمپت راج کو پوچھ گچھ کے لئے حاضر ہونے کے لئے سمن جاری کیا

منشیات معاملہ پر پولیس حکومت کا کھلونا بن چکی ہے: سدارامیا

سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈرسدارامیا نے کہا ہے کہ منشیات کیس کی جانچ کے معاملے میں بنگلورو پولیس ریاستی حکومت کے ہاتھ کھلونا بن چکی ہے اور اس کیس میں اہم ملزمین کو نظر انداز کر کے اسے دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

کاروار: سمندر میں غذاکی کمی سے  مچھلیوں کی افزائش اورماہی گیری کا کاروبار ہورہا ہے متاثر۔ ۔۔۔۔۔ایک تجزیاتی رپورٹ 

ساحلی علاقے میں مچھلیوں کی افزائش میں کمی سے اس کاروبار پر پڑنے اثرا ت کے بارے میں مختلف ماہرین نے اپنے اپنے اندازمیں تبصرہ اور تجزیہ کیا ہے۔کاروار ہریکنترا مینو گاریکے سہکاری سنگھا کے صدر کے سی تانڈیل کا کہنا ہے کہ ندیوں سے بہتے ہوئے  سمندر میں جاکر ملنے والا پانی بہت زیادہ ...

ملک تباہ، عوام مطمئن، آخر یہ ماجرا کیا ہے!۔۔۔۔ آز:ظفر آغا

ابھی پچھلے ہفتے لکھنؤ سے ہمارے عزیزداروں میں سے خبر آئی کہ گھر میں موت ہو گئی۔ پوچھا کیا ہوا۔ پتہ چلا کورونا وائرس کے شکار ہوئے۔ ایک ہفتے کے اندر انتقال ہو گیا۔ پوچھا باقی سب خیریت سے ہیں۔ معلوم ہوا ان کی بہن بھی آئی سی یو میں موت و زندگی کے درمیان ہیں۔

 کاروار:پی ایس آئی کے نام سے فیس بک پر نقلی اکاؤنٹ۔ آن لائن دھوکہ دہی کا نیا طریقہ ۔ تیزی سے چل رہا ہے فراڈ  کا کاروبار 

ڈیجیٹل بینکنگ اور بینک سے متعلقہ کام کاج انٹرنیٹ کے ذریعے انجام دینے کی سہولت اس لئے عوام کو فراہم کی گئی ہے تاکہ لوگ کم سے کم وقت میں بغیر کسی دقت کے اپنی بینکنگ کی ضرورریات پوری کرسکیں ۔ نقدی ساتھ لے کر گھومنے اور پاکٹ ماری کے خطرے جیسی مصیبتوں سے بچ سکیں۔لیکن اس سسٹم نے جتنی ...

بھٹکل کے بلدیاتی اداروں میں چل رہا ہے سرکاری افسران کا ہی دربار۔ منتخب عوامی نمائندے بس نام کے رہ گئے

ریاستی حکومت کی بے توجہی اورغلط پالیسی کی وجہ سے مقامی  بلدیاتی اداروں میں عوامی منتخب نمائندے بس نام کے لئے رہ گئے ہیں اور خاموش تماشائی بنے رہنے پر مجبور ہوگئے ہیں ۔جبکہ ان اداروں میں سرکاری افسران کا ہی دربار چل رہا ہے۔بھٹکل میونسپالٹی، جالی پٹن پنچایت  وغیرہ کا بھی یہی ...

بمبئی ہائی کورٹ نے میڈیا اور حکومت کو آئینہ دکھایا ...... آز: عابد انور

میڈیا اگر حق اور صداقت کا پیامبر بن جائے تو غریب سے غریب، کمزور اور بے سہارا طبقہ کو بھی انصاف مل جاتا ہے اور ہندوستان میں ایسا متعدد بار ہوا ہے، بڑے معاملے میں دبنگ، سیاستداں، سیاست  دانوں کے لاڈلے اور اثر و روسوخ رکھنے والے امیر گھرانے کے لوگوں کو جیل کی ہوا کھانی پڑی ہے اس ...