31اکتوبر تک برطانیہ یوروپی یونین سے الگ ہوجائے:ملکہ الزبتھ

Source: S.O. News Service | Published on 16th October 2019, 12:18 PM | عالمی خبریں |

لندن،16؍اکتوبر(ایس او نیوز؍یواین آئی) پارلیمنٹ میں خطاب میں برطانیہ کی ملکہ الزبتھ نے بریگزٹ کے حوالہ سے پارلیمان میں کہا کہ حکومت کی ترجیح ہے کہ برطانیہ یوروپی یونین سے 31 اکتوبرکو الگ ہوجائے -برطانوی پارلیمنٹ میں خطاب میں ملکہ الزبتھ نے کہا کہ میری حکومت کی ہمیشہ سے یہی ترجیح رہی ہے کہ31اکتوبر تک برطانیہ، یوروپی یونین سے الگ ہوجائے -انہوں نے کہا کہ میری حکومت کا یوروپی یونین کے ساتھ نئی شراکت داری کے تحت کام کرنے کا ارادہ ہے جو فری ٹریڈ اور دوستانہ تعاون کی بنیاد پر ہوگا-وزیراعظم بورس جانسن نے بھی اپنے منصوبے کو دوہراتے ہوئے کہا کہ یوروپی یونین سے31اکتوبر تک الگ ہونا ضروری ہے اور آئندہ ہفتوں میں بروسیلز سے مذاکرات ہوں گے اور بریگزٹ ہوجائے گا-دوسری جانب برطانیہ کی علاحدگی کا دار ومدار یوروپی یونین سے ہونے والے مذاکرات پر ہے جو رواں ہفتہ ایک مرتبہ پھر شروع ہوں گے اور یوروپی یونین کے سربراہی اجلاس سے قبل معاہدے کو حتمی شکل دینے کی کوشش کی جائے گی-مبصرین کا کہنا ہے کہ یورپی یونین کے ساتھ معاہدہ طے کرنے میں ناکامی کی صورت میں بورس جانسن کو شدید دھچکا لگے گا اور برطانوی قانون کے مطابق انہیں یوروپی یونین سے بریگزٹ میں توسیع کے لئے تیسری مرتبہ درخواست کرنا پڑے گی-آئرلینڈ کے نائب وزیراعظم سمن کووینسی کا یوروپی یونین سے مذاکرات کے لئے لکسمبرگ پہنچنے کے بعد اس حوالہ سے کہنا تھا کہ معاہدہ ممکن ہے اور اس کا امکان رواں ماہ ہی ہے-یوروپی یونین کے نمائندے مائیکل بارنیئر نے ایک روز قبل ہی سفارت کاروں کو آگاہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہوسکتا ہے کہ یہ اسی ہفتہ ممکن ہو لیکن ہم اس وقت وہاں نہیں پہنچے-یاد رہے کہ برطانیہ کو یوروپی یونین سے علاحدگی میں شدید مشکلات کا سامنا رہا اور اسی سلسلہ میں سابق وزیراعظم تھریسامئے کو اپنے منصب سے الگ ہونا پڑا تھا، جس کے بعد بورس جانسن کو وزیراعظم منتخب کیا گیا تھا-بورس جانسن نے ملکہ الزبتھ سے گزشتہ ماہ پارلیمنٹ کو معطل کرنے کی منظوری لی تھی تاہم سپریم کورٹ نے اس فیصلہ کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا تھا جس کے بعد ان کی پریشانیوں میں مزید اضافہ ہوگیا ہے -خیال رہے برطانیہ کو رواں ماہ کے اختتام تک یوروپی یونین سے الگ ہونا ہے جس کے لئے معاہدہ کرنا ہوگا لیکن پارلیمنٹ نے بورس جانسن اور ان کی پارٹی کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کر رکھی ہیں -

ایک نظر اس پر بھی

دنیا میں کورونا سے 53 لاکھ سے زیادہ لوگ متاثر

عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ۔19) کی وبا بڑھتی جارہی ہے اور پوری دنیا میں اس سے متاثروں کی تعداد بڑھ کر 53 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ اب تک 3.43 لوگ اس بیماری سے موت کی آغوش میں جاچکے ہیں۔

کورونا کی وبا کے درمیان 8/کروڑ بچوں کی ٹیکہ کاری ہوگی متاثر

عالمی وبا کورونا وائرس(کووڈ 19) نے دنیا بھر میں جہاں قہر برپا کیا ہوا ہے وہیں اس کی وجہ سے خسرہ،پولیو اور ڈپ تھیریا جیسی بیماریوں کا سامنا کررہے کم از کم 68؍امیرو غریب ملکوں کے ایک سال سے کم عمر کے تقریباً آٹھ کروڑ بچوں کی ٹیکہ کاری مہم میں رخنہ آنے کا خدشہ ہے -

برازیل میں ایک دن میں 1179 مریض چل بسے

لاطینی امریکہ میں کرونا وائرس سے بدترین متاثر ملک برازیل میں منگل کو 1179 افراد ہلاک ہوئے، جو ملک میں 24 گھنٹوں کے دوران ہلاکتوں کا نیا ریکارڈ ہے۔ ان میں سے 324 اموات صرف ایک صوبے ساؤپولو میں ہوئی ہیں۔