ہوناور: ٹونکا میں تجارتی بندرگاہ کی تعمیرپر احتجاج۔مقامی لوگوں نے ٹھیکے دار کمپنی کی گاڑیوں کو روکا

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th February 2020, 7:31 PM | ساحلی خبریں |

ہوناور14/فروری (ایس او نیوز) ہوناور پورٹ پرائیویٹ لمیٹیڈ کمپنی کی طرف سے کاسرکوڈ ۔ٹونکا میں تجارتی بندرگاہ تعمیر کرنے کے لئے وزنی ساز وسامان لے جانے والی گاڑیوں کو مقامی لوگوں نے بطور احتجاج آگے بڑھنے سے روک دیا اور اپنی سخت ناراضگی کا اظہار کیا۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق   مختلف ماہی گیر تنظیموں اور مقامی لوگوں نے احتجاج میں حصہ لیا اور مطالبہ کیا کہ بندرگاہ کی تعمیر کا جو ٹھیکہ کمپنی کو دیا گیا ہے اسے رد کردیا جائے، اور اس کمپنی کی تمام سرگرمیوں پر پوری طرح پابندی لگادی جائے۔مظاہرین نے کمپنی کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔مظاہرین نے صاف طور پر اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی قیمت پرکمپنی کی گاڑیوں کو شہر کے اندر سے گزرنے نہیں دیا جائے گا۔ تھوڑی ہی دیر میں مقامی لوگوں کا زبردست ہجوم موقع پر جمع ہوگیا اور صورت حال کشیدہ ہوگئی۔ 

 عوام کا کہنا تھا کہ بھاری سازوسامان والی بڑی بڑی گاڑیوں کی آمد و رفت کی وجہ سے شہر کے اندر لوگوں کا چلنا پھر نا دوبھر ہوگیا ہے۔گاڑیوں اور مشینوں کے  شور کی وجہ سے عوام کے لئے اپنے گھروں میں رہنا مشکل ہوگیا ہے۔اس کے علاوہ عوام کی صحت پر بھی اس کا برااثر پڑرہا ہے۔ بچوں اور طلبہ کے لئے بحفاظت گلیوں میں گھومنا پھرنا ممکن نہیں ہے۔اس کے علاو ہ تجارتی کمپنیوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے یہاں پر سالہا سال سے مقیم غریب روایتی ماہی گیروں کی زمینیں چھین لی گئی ہیں اور وہ راستے پر آگئے ہیں۔اس طرف سرکاری حکام یا عوامی منتخب نمائندے توجہ نہیں دے رہے ہیں۔

 اس موقع پر عوامی منتخب نمائندے اور محکمہ جاتی افسران نے مداخلت کرتے ہوئے مظاہرین کو یقین دلایا کہ ماہی گیروں اور مقامی عوام سے اس مسئلے پر بات چیت کی جائے گی اور اس کا حل نکلنے تک کمپنی کی طرف سے تعمیری سرگرمیاں روک دی جائیں گی۔لیکن ان باتوں پر کچھ لوگ یقین کرنے کے لئے تیار نہیں تھے۔ جب حالات بہت ہی زیادہ پیچیدہ ہوگئے تو پولیس نے مداخلت کی اور مظاہرین کو سمجھا بجھا کرکسی طرح صورت حال پر قابو پانے میں کامیاب ہوگئے۔  مظاہرین نے دو دنوں کی مہلت دیتے ہوئے احتجاج ختم کیا اور کہا کہ اگر پھر سے یہاں تعمیری سامان والی گاڑیوں کی آمد و رفت شروع ہوئی تو دوبارہ اس سے بڑا احتجاجی مظاہرا کیا جائے گا۔اور اس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔کیونکہ یہ ہماری زندگی اور بود وباش کا مسئلہ بن گیا ہے۔ 

 ڈی وائی ایس پی کے سی گوتم، سی پی آئی وسنت اچاری،پی ایس آئی ششی کمار، کرائم پی ایس آئی ساوتری نائک اورپولیس کادیگر عملہ موقع پر موجود تھا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ساحلی پٹی کے عوام کو سہولت دینے والی نئی ٹرین کو افسران کی طرف سے ریڈ سگنل :نئی ٹرین  بہت جلد پٹری پر دوڑے گی ؛وزیر ریلوے سریش انگڑی

ساحلی پٹی کے عوام کو سہولت دینے والی ’بنگلورو۔ کاروار۔ واسکو ‘ٹرین کا اعلان کئے ہوئے کئی دن  بیتنے کے باوجود  افسران کی طرف سے ابھی تک سرخ بتی جلائے رکھنے پر ٹرین پٹری پر نہیں دوڑ ی ہے۔ افسران کے رویہ پر عدم اطمینان کا اظہار کرتےہوئے مرکزی ریلوے وزیر برائے ریاست سریش انگڑی نے ...

بھٹکل تعلقہ میں 14مارچ تک اپنے گھروں کی تعمیر کا موقع ہے مستفیدین استفادہ کریں : رکن اسمبلی

2012سے 2019تک کی مدت میں مختلف رہائشی منصوبہ جات کے تحت منظور ہوئے گھروں کے مستفیدین کو متعینہ وقت میں گھروں کی تعمیر نہیں کئے جانے پر سرکاری معاوضہ منظوری کے لئے روک لگا دی گئی تھی۔ اب ریاستی حکومت اس روک کو ختم کرتےہوئے بھٹکل ہوناور ودھان سبھا حلقہ کے مستفیدین کو استفادہ کا موقع ...

بھٹکل انجمن حامئی مسلمین کے سابق صدر عبدالرحیم جوکاکو ’قومی تعلیمی ایکسلنس ایوارڈ ‘ سے سرفراز

بنگلورو میں22فروری کو منعقدہ اسوسی ایشن آف مسلم پروفیشلنس (اے ایم پی ) کے تیسرے سالانہ دوروزہ کنوینشن میں انجمن  حامئی مسلمین بھٹکل کے سابق صدر محترم عبدالرحیم جوکاکو کو سال 2019کے’ ایکسلنس ان ایجوکیشن ‘ تعلیمی ایوارڈ سے نوازتے ہوئے ان کی تہنیت کی گئی ۔

پی یو دوم کے سالانہ امتحانا ت میں  ضلع کے 14279طلبا و طالبات شریک ہونگے : ڈی سی

رواں سال 4مارچ سے شروع ہونے والی پی یو سی سال دوم کے سالانہ امتحانات کے لئے پوری تیاریاں ختم القریب ہیں۔ اترکنڑا ضلع سے امسال 14279طلبا و طالبات امتحان میں شریک ہونے کی اترکنڑا ضلع ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر ہریش کمار نے جانکاری دی ۔