بھٹکل کے شادی خانوں میں بھی اب گونج رہی ہے شہریت قانون اور این آر سی کے خلاف نعرے بازی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 10th January 2020, 7:42 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل:10؍ جنوری (ایس اؤ نیوز) مرکزی حکومت کے  شہریت ترمیمی قانون( سی اے سے ) اور  این سی آر قوانین کے خلاف جاری ملک گیر احتجاج دن بدن زور پکڑتا جارہاہے۔ لوگ انوکھے انداز اپناتے ہوئے احتجاج کررہے ہیں۔مختلف تنظیموں کی قیادت میں شہروں، گاؤں سمیت کئی بڑے بڑے شہروں میں لگاتار احتجاج جاری ہے اور  ہزاروں لوگ شریک ہورہےہیں۔

بھٹکل میں بھی کچھ ہی دن پہلے بہت بڑےپیمانے پر احتجاج ہواتھا۔ شہر میں احتجاج کو جاری رکھنے کےلئے مختلف طریقہ کار کو استعمال کیا جارہاہے۔ خاص کر بھٹکل کے نوجوانوں کے اسپورٹس ادارے  ہر سال کھیلے جانے والے  ٹورنامنٹوں کو  معطل کرچکے ہیں۔ اب یہ آواز گلیوں، سڑکوں سے گزرتے ہوئے گھر گھر پہنچ گئی ہے۔ ایسا ہی  انوکھے مناظر اب  بھٹکل میں شادی کے جشن میں بھی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ عین نکاح کے وقت کچھ نوجوان سی اے اے  اور این آر سی کے خلاف پلے کارڈ ہاتھوں میں تھامے نعرہ بازی کرتے ہوئے اپنی آواز بلند کررہے ہیں۔ نکاح کی محفل میں اچانک اس طرح کے واقعات  پیش آنے سے گھر والوں سمیت  شادی میں شریک مہمانان بھی  نعرے بازی میں شامل ہورہے ہیں۔ اس تعلق سے سوشیل میڈیا پر وڈیو کلپس بھی خوب وائرل ہورہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

یوم جمہوریہ کے موقع پر پس مرگ پدما وبھوشن ایوارڈ پانے والوں میں شامل ہیں اڈپی پیجاورمٹھ سوامی اور جارج فرنانڈیز

یوم جمہوریہ کے موقع پر مرکزی حکومت کی طرف سے مختلف شعبہ ہائے زندگی میں نمایاں خدمات انجام دینے والی شخصیات کو پدما بھوشن اور پدماوبھوشن جیسے اعزازات سے نوازا جاتا ہے۔ امسال جن شخصیات کو پس مرگ پدماوبھوشن ایوارڈ سے نوازا گیا ہے اس میں پیجاور مٹھ کے سوامی اور سابق مرکزی وزیر ...

کاسرگوڈ: چوتھی جماعت کی طالبہ کے ساتھ جنسی ہراسانی کے ملزم ٹیچرکو عدالت نے دی20سال قید بامشقت کی سزا

یہاں کے ایڈیشنل سیشنس کورٹ نے چوتھی جماعت کی طالبہ کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والے ایک  ٹیچر کو 20سال قید بامشقت اور 25ہزار روپے جرمانے کی سز اسنائی ہے۔ اور جرمانہ ادا نہ کرنے کی صورت میں مزید 2سال کی سزا کاٹنے کا حکم دیا ہے۔

رات بارہ بجے ہی بھٹکل میں منائی گئی یوم جمہوریہ کی تقریب؛ ہندوستانی آئین کی تجاویز پڑھ کر سنائی گئیں؛سینکڑوں لوگوں کی شرکت

بھٹکل میں  وی دی انڈین (بھٹکل) کی جانب سے تعلقہ اسٹڈیم کے باہر رات بارہ بجے یوم جمہوریہ کی تقریب نظر آئی جہاں  عوام نے  ہندوستانی آئین کی تجاویز پڑھ کر  ہندوستانی دستور کے تحفظ  کا عہد لیا۔

رات بارہ بجے ہی بھٹکل میں منائی گئی یوم جمہوریہ کی تقریب؛ ہندوستانی آئین کی تجاویز پڑھ کر سنائی گئیں؛سینکڑوں لوگوں کی شرکت

بھٹکل میں  وی دی انڈین (بھٹکل) کی جانب سے تعلقہ اسٹڈیم کے باہر رات بارہ بجے یوم جمہوریہ کی تقریب نظر آئی جہاں  عوام نے  ہندوستانی آئین کی تجاویز پڑھ کر  ہندوستانی دستور کے تحفظ  کا عہد لیا۔

سی اے اے: شاہین باغ روڈ کھلوانے کیلئے آمنے سامنے ہوں گے لوگ؟ پولیس کو دیا ایک ہفتے کا وقت

شاہین باغ میں پرامن مظاہرے کے درمیان اب لوگوں کے صبر کا باندھ ٹوٹتا دکھائی دے رہا ہے۔اب راستہ بند ہونے کی وجہ سے پریشانی اٹھا رہے لوگوں نے بھی سڑک پر اترنے کا فیصلہ کر لیا ہے،یہ لوگ تقریبا 40 دن سے بند کالندی کنج راستے کو کھلوانے کے لئے مارچ نکالنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔بتا دیں ...

انڈین نوائط فورم کی جانب سے لوگو ڈیزائن کرنے کا مقابلہ؛ بہترین ڈیزائن کرنے پر دس ہزار روپئے کے انعامات کا اعلان

بیرون بھٹکل میں قائم بھٹکل کی آٹھ جماعتوں پر مشتمل انڈین نوائط فورم (آئی این ایف) نے  اپنے ادارہ کے لئے خوبصورت لوگو (LOGO) ڈیزائن  کرنے کا مقابلہ منعقد کیا ہے اور سب سے خوبصورت اور بہترین لوگو ڈیزائن کرنے پر دس ہزار روپئے کے انعامات کا اعلان کیا ہے۔

26جنوری کو احتجاجی مظاہروں کی اجازت نہیں:پولیس کمشنر بھاسکر راؤ

شہرکے پولیس کمشنر بھاسکر راؤ نے یوم جمہوریہ تقریبات کیلئے شہراور مانک شاہ پریڈ گراؤنڈ پر سکیورٹی انتظامات کی تفصیلات پیش کرنے کے دوران واضح کیا کہ 26جنوری کو شہر بھر میں یوم جمہوریہ تقریبات منانے والے اداروں انجمنوں پر کوئی پابندی عائد نہیں ہے -

مودی حکومت نے ’بھیما کوریگاؤں تشدد‘ کی جانچ این آئی اے کو سونپی، مہاراشٹر حکومت ناراض

شیوسینا کے ذریعہ بی جے پی سے رشتہ توڑے جانے اور مہاراشٹر میں کانگریس و این سی پی کے ساتھ مل کر حکومت سازی کے بعد سے ہی مرکز کی مودی حکومت اور مہاراشٹر حکومت کے درمیان اختلافات منظر عام پر آنے شروع ہو گئے تھے، جو اب بڑھتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔

سپریم کورٹ کا دہلی میں این ایس اے لگائے جانے کے خلاف عرضی کی سماعت سے انکار

سپریم کورٹ نے دہلی میں قومی سلامتی قانون (این ایس اے) کےنفاذ کرنے کے حکومت کے فیصلے کے خلاف دائر عرضی پر سماعت کرنے سے جمعہ کو انکار کردیا۔ جسٹس ارون مشرا اور جسٹس اندرا بنرجی کی بنچ نے عرضی گذار منوہر لال شرما کی عرضی کی سماعت سے انکار کردیا ہے۔