اتر پردیش میں ’کرائم اور کورونا‘ دونوں کنٹرول سے باہر: پرینکا گاندھی

Source: S.O. News Service | Published on 1st August 2020, 10:24 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،یکم اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) اتر پردیش میں جرائم کے واقعات کم ہونے کا نام نہیں لے رہے ہیں۔ روزانہ قتل اور اغوا جیسے واردات منظرعام پر آ رہے ہیں اور ان پر کنٹرول پانے میں یو پی انتظامیہ ناکام نظر آ رہی ہے۔ کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا اس سلسلے میں کئی بار یوگی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنا چکی ہیں، اور آج ایک بار پھر انھوں نے اس تعلق سے اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انھوں نے ریاست میں جرائم کے مسلسل بڑھتے واقعات کے سلسلے میں یوگی حکومت پر طنز کرتے ہوئے کہا ہے کہ جرم کی وارداتوں پر روک لگانے میں وہ ناکام ثابت ہورہی ہے۔

پرینکا گاندھی نے اپنے ایک ٹوئٹ میں بلند شہر واقعہ کا تذکرہ کیا ہے جہاں دھرمیندر چودھری کا 8 دن قبل اغوا ہوا تھا اور ان کی لاش 31 جولائی کو برآمد ہوئی۔ انھوں نے مزید لکھا ہے کہ "کانپور، گورکھپور، بلند شہر۔ ہر واقعہ میں نظامِ قانون کی سستی ہے اور جنگل راج کی علامت موجود ہے۔ پتہ نہیں حکومت کب تک سوئے گی۔"

قابل ذکر ہے کہ پرینکا گاندھی نے گزشتہ 24 جولائی کو بھی ایک ٹوئٹ میں اتر پردیش کے نظامِ قانون کو کٹہرے میں کھڑا کیا تھا۔ انھوں نے ٹوئٹ میں لکھا تھا کہ ”یو پی میں نظامِ قانون دم توڑ چکی ہے۔ عام لوگوں کی جان لے کر اب اس کی منادی کی جا رہی ہے۔ گھر ہو، سڑک ہو، دفتر ہو، کوئی بھی خود کو محفوظ محسوس نہیں کرتا۔“

ایک نظر اس پر بھی

بے لگام میڈیا پر جمعیۃ کی عرضی: جب تک عدالت حکم نہیں دیتی حکومت خود سے کچھ نہیں کرتی: چیف جسٹس

مسلسل زہر افشانی کرکے اور جھوٹی خبریں چلاکر مسلمانوں کی شبیہ کوداغدار اور ہندوؤں اورمسلمانوں کے درمیان نفرت کی دیوارکھڑی کرنے کی دانستہ سازش کرنے والے ٹی وی چینلوں کے خلاف داخل کی گئی

دہلی فسادات: پروفیسر اپوروانند کی حمایت میں سامنے آئے ملک و بیرون ملک کے دانشوران

 ملک اور بیرون ملک کے ایک ہزار سے زائد معروف دانشوروں، نوکر شاہوں، صحافیوں، مصنفوں، ٹیچروں او اسٹوڈنٹس نے دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اپوروانند سے مشرقی دہلی میں فسادات کے معاملے میں پوچھ گچھ کئے جانے اور انکا موبائل فون ضبط کرنے کے واقعہ کی شدید مذمت کی ہے اور پولیس کے ذریعہ ...

کالعدم چینی کمپنیوں سے بی جے پی کے گہرے رشتے ہیں: کانگریس

 کانگریس نے الزام عائد کیا ہے کہ حکومت نے قومی سلامتی کے لیے خطرہ بتاتے ہوئے جن چینی کمپنیوں پر پابندی لگائی ہے ان میں سے کئی کے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) سے گہرے رشتے ہیں اور گزشتہ عام انتخابات میں ان کمپنیوں نے اس کے لیے تشہیری مہم کا کام کیا تھا۔

ریا چکرورتی کا سوشانت کے ساتھ جڑنے کا واحد مقصد ان کی جائیداد ہڑپنا تھا: بہار پولیس کا حلف نامہ

 بہار پولیس نے اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کی مبینہ خودکشی کے معاملے میں سپریم کورٹ میں دائر حلف نامے میں کہا کہ کلیدی ملزمہ ریا چکرورتی اور اس کے اہل خانہ کا اداکار کے ساتھ جڑنے کا واحد مقصد اس کی جائیداد ہڑپنا تھا۔