اقتصادی بحران: مودی حکومت پر پرینکا گاندھی کا حملہ جاری، کہا، گہری کھائی میں گری معیشت، کب جاگے گی حکومت؟

Source: S.O. News Service | Published on 10th September 2019, 9:52 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،10ستمبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) ملک میں اقتصادی بحران کے بعد سے کانگریس لیڈر پرینکا گاندھی مرکز کی نریندر مودی حکومت پر حملہ آور ہیں۔پرینکا گاندھی نے آج ٹویٹ کرکے ایک بار پھر مرکزی حکومت پر نشانہ لگایا ہے۔پرینکا گاندھی نے کہا ہے کہ معیشت کساد بازاری کی گہری کھائی میں گرتے ہی جا رہی ہے،آخر حکومت اپنی آنکھیں کب کھولے گی؟۔پرینکا گاندھی نے ٹویٹ کرکے لکھا ہے کہ معیشت کساد بازاری کی گہری کھائی میں گرتے ہی جا رہی ہے،لاکھوں ہندوستانیوں کی روزی روٹی پر تلوار لٹک رہی ہے، آٹو سیکٹر اور ٹرک سیکٹر میں کمی پروڈکشن-ٹرانسپورٹیشن میں منفی نمو اور مارکیٹ کے ٹوٹتے اعتماد کا نشان ہے۔حکومت کب اپنی آنکھیں کھولے گی؟۔ پرینکا گاندھی ٹویٹر کے ذریعے مودی حکومت پر حملہ کرتی رہی ہیں۔اس سے پہلے انہوں نے ٹویٹ کر کے کہا تھاکہ الٹی گنتی: ہر دن مندی کی خبر اور ہر دن بی جے پی حکومت کی اس پر خاموشی: دونوں بہت خطرناک ہیں،اس حکومت کے پاس نہ حل ہے نہ ہم وطنوں کو بھروسہ دلانے کی طاقت ہے،صرف بہانے بازی، بیان بازی اور افواہیں پھیلانے سے کام نہیں چلے گا۔دراصل پرینکا گاندھی نے آج اپنے ٹویٹس میں ایک ویب سائٹ کی خبرشیئر کی ہے جس میں آٹو سیکٹر کی خراب حالتوں کا ذکر ہے،خبر میں کہا گیا ہے کہ ماروتی کے بعد اب اشوک لمیٹڈ نے اپنا چنئی پلانٹ پانچ دن بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بتا دیں کہ ملک کی اقتصادی ترقی کی شرح (جی ڈی پی نمو ریٹ) 2019-20 کی اپریل جون سہ ماہی میں گھٹ کر پانچ فیصد رہ گئی۔یہ گزشتہ چھ سال سے سب سے کم سطح پر ہے۔مینوفیکچرنگ سیکٹر میں کمی اور زرعی پیداوار کی سست روی سے جی ڈی پی میں اضافہ میں یہ کمی آئی ہے۔مرکزی شماریات کے دفتر (سی ایس او) کی طرف سے جاری سرکاری اعداد و شمار میں یہ معلومات دی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دہلی میں جماعت اسلامی ہند کا یک روزہ ورکشاپ۔ امیر جماعت نے کہا؛ ہر زمانے میں سخت اور چیلنجنگ حالات میں ہی دعوت دین کا کام انجام دیا گیا ہے

 جماعت اسلامی ہند حلقہ دہلی کا یک روزہ ورکشاپ برائے ذمہ دران حلقہ،انڈین انسٹی ٹیوٹ آف اسلامی اسٹڈیز ابو الفضل انکلیو، اوکھلا میں منعقد ہوا۔ ورکشاپ میں نئی میقات 2019تا2023کی پالیسی پروگرام کی تفہیم کرائی گئی۔ صبح 10  بجے  سے شام تک چلے اس ورکشاپ میں جماعت اسلامی ہند دہلی کے ...

ایک قوم‘ایک زبان معاملہ: سیاسی قائدین کی جانب سے شدید رد عمل کا اظہار

اداکار سے سیاست داں بنے جنوبی ہند چینائی کے کمل ہاسن نے ایک قوم ایک زبان کے معاملہ میں بی جے پی قومی صدر امیت شاہ پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان 1950ء میں کثرت وحدت کے وعدے کے ساتھ جمہوریہ بناتھا اور اب کوئی شاہ یا سلطان اس سے انکار نہیں کرسکتا ہے۔

بی جے پی حکومت کی اُلٹی گنتی شروع: کماری شیلجہ

ہریانہ کانگریس کی ریاستی صدر اور رکن پارلیمنٹ کماری شیلجہ نے آج دعوی کیا کہ ریاست کی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) حکومت کی الٹی گنتی شروع ہوگئی ہے کیونکہ عوام اس حکومت کی بدنظمی سے تنگ آچکے ہیں۔

جموں و کشمیر کے سابق سی ایم فاروق عبداللہ کو پی ایس اے کے تحت حراست میں لیا گیا

جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی حراست لیا گیا ہے۔ان کے حراست کو لے کر سپریم کورٹ میں داخل عرضی پر سماعت کے دوران عدالت نے مرکزی حکومت کو ایک ہفتے کا نوٹس دے کر جواب دینے کے لئے کہا گیا ہے۔