ریاست میں بجلی کی پیدوار میں اضافہ زیر زمین کیبل بچھانے کا کام جاری، 2023 تک بنگلورو میں بجلی کی قلت اور لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی: منیجنگ ڈائرکٹر سی شکھا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd August 2019, 10:41 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،22؍اگست (ایس او نیوز) بنگلور الیکٹری سٹی سپلائی کمپنی (بیسکام) کی منیجنگ ڈائرکٹر سی شکھا نے کہاکہ شہر بنگلور میں 2023 تک بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی- انہوں نے کہا کہ حلایہ دنوں ریاست میں ہوئی زبردست بارش کی وجہ سے بجلی کی پیدوار میں اضافہ ہوا ہے اور کمپنی کے پاس اگلے تین سال تک کے لئے بجلی کا اسٹاک جمع ہے- فیڈریشن آف کرناٹکا چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز (ایف کے سی سی آئی) کے اراکین کے ساتھ اجلاس میں انہوں نے کہا کہ شہر کی بجلی کی ضروریات پوری کرنے کے لئے کمپنی کو دیگر کمپنیوں سے بجلی خریدنا پڑتا تھا لیکن حالیہ برسوں میں ریاست کے کئی مقامات پر اچھی بارش کی وجہ سے بجلی کی پیدوار میں اضافہ ہوا ہے- آج کمپنی کے پاس بجلی کا وافر اسٹاک موجود ہے- دیگر کمپنیوں کو بجلی فروخت کرنے کے بارے میں غور کیاجارہا ہے- اس موقع پر چیمبر کے اراکین نے شکایت کی کہ شہر میں بجلی کی کٹوتی سے کارخانوں کی پیداوار اور دکانوں کے کاروبار پر اثر پڑتا ہے- بیسکام ڈائرکٹر نے تیقن دیا کہ اب شہر میں بجلی کی مسلسل سپلائی جاری رہے گی- تکنیکی وجوہات کے علاوہ کسی دیگر وجہ سے بجلی کی سپلائی بند نہیں ہوگی- انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں چیمبر کے اراکین سے تال میل بنائے رکھنے کے لئے وہ بیسکام کے انجیئروں کو ہدایت دیں گی- انہوں نے کہا کہ ریاست میں حالیہ دنوں میں جہاں اچھی بارش کی وجہ سے بجلی کی پیدوار میں اضافہ ہوا ہے- درخت گرنے کی وجہ سے لائن کٹنے، بجلی کے کھمبے گرنے کے واقعات پیش آئے ہیں - انہوں نے بتایا کہ اس مسئلے پر قابو پانے کے لئے شہر میں بجلی کے تار زیر زمین بچھانے کا منصوبہ بنایا گیا ہے- اس سلسلے میں شہر میں بجلی کے کیبل زیر زمین بچھانے کا کام جاری ہے اور 18000 کلو میٹر طویل کیبل زیر زمین بچھائی جارہی ہے- یہ کام آئندہ 3سال میں مکمل کرلیا جائے گا-

ایک نظر اس پر بھی

دوہفتوں میں وقف بورڈ تشکیل دیا جائے ریاستی حکومت کو ہائی کورٹ کی سخت ہدایت

ریاستی حکومت کی طرف سے وقف بورڈ کی تشکیل میں کی جا رہی غیر معمولی تاخیر پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریاستی ہائی کورٹ نے چہارشنبہ کے روز ریاستی حکومت کو یہ سخت ہدایت جاری کی کہ دو ہفتوں کے دوران ریاستی وقف بورڈ تشکیل دیا جائے -

وزیرا عظم مودی کے جنم دن پر آر وی دیشپانڈے نے پیش کی مبارکباد۔دل کھول کر ستائش کرنے کے پیچھے کیا ہوسکتا ہے راز؟

یہ بات ثابت شدہ ہے کہ سیاست کوئی بھی مستقل دوست یا مستقل دشمن نہیں ہوتا۔ مگر نظریاتی اختلاف یا اتفاق کے بارے میں سمجھا جاتا ہے کہ وہ اگر مستقل نہ ہوتو کسی بھی شخصیت کا وقار مجروح ہوتا ہے۔

تبریزانصاری ہجومی تشددکیس: بنگلوروآئی آئی ایم کے اساتذہ اورطلبا نے وزیراعظم کولکھا خط

جھارکھنڈ میں پیش آئے تبریزانصاری کے ماب لینچنگ واقعہ میں پولیس جانچ پرسوالات اٹھ رہے ہیں۔ اس درمیان بنگلورو میں آئی آئی ایم کے اساتذہ اورطلبا نے وزیراعظم نریندر مودی کو خط لکھا ہے۔ ملک کے باوقار ادارے انڈین انسٹی ٹیوٹ آف منیجمنٹ کے طلبا اوراساتذہ نے جھارکھنڈ پولیس کی ...