ریاست میں بجلی کی پیدوار میں اضافہ زیر زمین کیبل بچھانے کا کام جاری، 2023 تک بنگلورو میں بجلی کی قلت اور لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی: منیجنگ ڈائرکٹر سی شکھا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd August 2019, 10:41 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،22؍اگست (ایس او نیوز) بنگلور الیکٹری سٹی سپلائی کمپنی (بیسکام) کی منیجنگ ڈائرکٹر سی شکھا نے کہاکہ شہر بنگلور میں 2023 تک بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی- انہوں نے کہا کہ حلایہ دنوں ریاست میں ہوئی زبردست بارش کی وجہ سے بجلی کی پیدوار میں اضافہ ہوا ہے اور کمپنی کے پاس اگلے تین سال تک کے لئے بجلی کا اسٹاک جمع ہے- فیڈریشن آف کرناٹکا چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز (ایف کے سی سی آئی) کے اراکین کے ساتھ اجلاس میں انہوں نے کہا کہ شہر کی بجلی کی ضروریات پوری کرنے کے لئے کمپنی کو دیگر کمپنیوں سے بجلی خریدنا پڑتا تھا لیکن حالیہ برسوں میں ریاست کے کئی مقامات پر اچھی بارش کی وجہ سے بجلی کی پیدوار میں اضافہ ہوا ہے- آج کمپنی کے پاس بجلی کا وافر اسٹاک موجود ہے- دیگر کمپنیوں کو بجلی فروخت کرنے کے بارے میں غور کیاجارہا ہے- اس موقع پر چیمبر کے اراکین نے شکایت کی کہ شہر میں بجلی کی کٹوتی سے کارخانوں کی پیداوار اور دکانوں کے کاروبار پر اثر پڑتا ہے- بیسکام ڈائرکٹر نے تیقن دیا کہ اب شہر میں بجلی کی مسلسل سپلائی جاری رہے گی- تکنیکی وجوہات کے علاوہ کسی دیگر وجہ سے بجلی کی سپلائی بند نہیں ہوگی- انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں چیمبر کے اراکین سے تال میل بنائے رکھنے کے لئے وہ بیسکام کے انجیئروں کو ہدایت دیں گی- انہوں نے کہا کہ ریاست میں حالیہ دنوں میں جہاں اچھی بارش کی وجہ سے بجلی کی پیدوار میں اضافہ ہوا ہے- درخت گرنے کی وجہ سے لائن کٹنے، بجلی کے کھمبے گرنے کے واقعات پیش آئے ہیں - انہوں نے بتایا کہ اس مسئلے پر قابو پانے کے لئے شہر میں بجلی کے تار زیر زمین بچھانے کا منصوبہ بنایا گیا ہے- اس سلسلے میں شہر میں بجلی کے کیبل زیر زمین بچھانے کا کام جاری ہے اور 18000 کلو میٹر طویل کیبل زیر زمین بچھائی جارہی ہے- یہ کام آئندہ 3سال میں مکمل کرلیا جائے گا-

ایک نظر اس پر بھی

مسلمانوں، اور کمزور طبقات کو ووٹ ڈالنے کے حق سے محروم کرنے کی کوشش، قوانین شہریت پر ممتاز دانشور و صحافی ظہیر علی خان کی تنقید؛ شاہین باغ گلبرگہ کے احتجاجی جلسہ میں ہزاروں مرد و خواتین کی شرکت

ریاست آسام میں 18لاکھ لوگوں کو فہرست رائے دہندگان سے باہر کردیا گیا ہے ان میں سے 4لاکھ 10ہزار مسلمان ہیں جب کہ مابقی 15لاکھ ہندو بھائی ہیں۔ لیکن ان 15لاکھ ہندوؤں میں سے تمام کے تمام اقوام درج فہرست، قبائل درج فہرست اور نہایت غریب قسم کے ہندو لوگ ہیں۔  18لاکھ کی فہرست میں اعلیٰ ذات کے ...

 آئی اے ایس آفیسر منیش موڈگل کا تبادلہ

آئی اے ایس عہدیدار منیش موڈگل جنہیں مرکزی حکومت نے گزشتہ ہفتہ ای گورننس کے لیے قومی ایوارڈ عطا کیا تھا، کا کمشنر سروے ، سیٹلمنٹ اور لینڈ ریکارڈس کے عہدہ سے تبادلہ کردیا گیا ۔ منیش کو اب محکمہ پر سونل اور انتظامی اصلاحات کا سکریٹری مقرر کیا گیا۔ کے وی تری لوک چندر جو پہلے ...

کرناٹک کے چن پٹن میں سی اے اے، این آر سی کے خلاف زبردست احتجاج، سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی، سی ایم ابراہیم کے علاوہ جے این یو کی طالبہ امولیا کی شرکت

چن پٹن کے شہریوں کی جانب سے 14/ فروری بروز جمعہ دوپہر 3.30/ بجے بمقام پیٹا اسکول گراؤنڈ چن پٹن شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) این آر سی اور این پی آر کے خلاف احتجاجی جلسہ منعقد کیا گیا۔