کرناٹکا ہائی کورٹ میں جسٹس کےعہدے کے لئے بھٹکل کے ایڈوکیٹ ناگیندر نائک کی سفارش؛ انجمن سے فارغ ہیں ناگیندر نائک

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 5th October 2019, 1:51 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 4/اکتوبر (ایس او نیوز) سپریم کورٹ کی کالجیم کمیٹی نے مرکزی حکومت کو کرناٹکا ہائی کورٹ میں ججس کی تقرری کے لئے جن نو وُکلاء کے ناموں کی سفارش کی ہے، اُن میں  بھٹکل سے تعلق رکھنے والے   ایڈوکیٹ ناگیندر نائک کا نام بھی شامل ہے۔

بنگلور ہائی کورٹ میں گذشتہ 26 سالوں سے  پریکٹس کرنے والے معروف وکیل   ناگیندر نائک  اگر ہائی کورٹ کے جج کے عہدہ پر فائز ہوتے ہیں، جس کا کہ پورا امکان ہے،  تو وہ ہائی کورٹ میں  جسٹس کے معزز اور اعلیٰ عہدہ پر فائز   ہونے  والے بھٹکل کے پہلے شخص ہوں گے۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق  سپریم کورٹ کی کالجیم کمیٹی نے جملہ 9 لوگوں کے ناموں  کی فہرست مرکزی حکومت کو روانہ کی ہے اور انہیں کرناٹک ہائی کورٹ کے جسٹس کے عہدے پر فائز کرنے کی سفارش کی ہے جس میں  ایڈوکیٹ ناگیندرا نائک کا نام بھی شامل ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ  سپریم کورٹ کی کالجیم کمیٹی کی جانب سے سفارش کرنے کے بعد مرکزی حکومت زیادہ تر اُن کی سفارشات کو قبول کرتی ہے، اس بناء پر ان کا جج بننا تقریبا طئے مانا جارہاہے۔

خیال رہے کہ بھٹکل انجمن آرٹس سائنس اینڈکامرس کالج سے گریجویشن مکمل کرنے والےبھٹکل تعلقہ کے   سرپن کٹہ کے رہنے والے ناگیندر رام چندرا نائک نے بنگلور کالج سے  ایل ایل بی کیا تھا۔

سپریم کورٹ کی کالجیم کمیٹی کی جانب سے سیکولر ذہن رکھنے والے ایڈوکیٹ ناگیندر نائک کے نام کی  سفارش کئے جانے پر  نہ صرف بھٹکل بلکہ ضلع اُتر کنڑا کے عوام میں بھی خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

کنداپور: ایک شخص نے کی 163مرتبہ کوارنٹین قانون کی خلاف ورزی۔ پولیس اسٹیشن میں درج ہو اکیس

کنداپور میں ہوم کوارنٹین کیے گئے ایک شخص نے ایک دو بار نہیں بلکہ 163مرتبہ قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے کمرے سے باہر نکلنے اور مختلف مقامات پر جانے آنے کا کام کیا ہے، جس کے خلاف فلائنگ اسکواڈ کی شکایت پر کنداپور پولیس اسٹیشن میں کیس درج کرلیا گیا ہے۔

اُترکنڑا میں کورونا کے پھر 37 معاملات؛دکشن کنڑا میں 131 اور اُڈپی میں 53 پوزیٹیو؛ کیا پھر لاک ڈاون ہوگا ؟

اُترکنڑا میں آج کورونا کے پھر 37 نئے معاملات سامنے آئے ہیں جس میں صرف بھٹکل سے ہی 20 پوزیٹیو کیسس ہیں۔اُڈھر پڑوسی ضلع اُڈپی میں 53، جبکہ دکشن کنڑا میں 131 کیسس سامنے آئے ہیں۔

کوویڈ کے نام پر نجی اسپتالوں میں بدعنوانی اور سرکاری اسپتالوں کی بدنظمی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ؛ اقدامات نہ کرنے کی صورت میں ایس ڈی پی آئی نے دیا احتجاج کا انتباہ

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) کرناٹک کے ریاستی نائب صدر اڈوکیٹ مجید خان نے منگلور پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔

کاروار کووِڈ ہاسپٹل میں شروع ہوئی ’ویڈیو وار‘۔ بد انتظامی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد اسپتال انتظامیہ کی طرف سے آئی جوابی ویڈیو کلپ 

کاروار انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس (کیمس) کے کووِڈ وارڈ میں پھیلی ہوئی گندگی اور بدنظمی سے متعلق وہاں پر داخل بعض مریضوں کی طرف ایک ویڈیو کلپ سوشیل میڈیا پر وائرل ہوگئی تھی،

 کورونا مریضوں کی تعداد پر قابو پانے کے لئے سخت اقدامات کیے جائیں۔ضلع انتظامیہ کو وزیر اعلیٰ ایڈی یورپا کی ہدایت

وزیراعلیٰ ایڈی یورپا نے ریاست کے 30اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں، ضلع پنچایت سی ای او اور اعلیٰ پولیس افسران کے ساتھ ویڈیو کانفرنس کرتے ہوئے کورونا کی بڑھتی ہوئی تعداد پرفوری قابو پانے کے لئے سخت اقدامات کرنے کی تاکید کرتے ہوئے کہا وہ ذاتی طور پر مکمل لاک ڈاؤن کرنے کے حق میں نہیں ہیں، ...

کرناٹک میں کورونا وائرس کا قہر جاری، کیس 41 ہزارسے متجاوز، 2738 نئے کیس،73؍اموات، بنگلورو میں47 لوگوں کی موت

کرناٹک میں کورونا وائرس کا قہر رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ گزشتہ24 گھنٹوں کے دوران ریاست میں مزید 2738 معاملے سامنے آئے جس کے ساتھ ہی کرناٹک میں اس مہلک وائرس کی زد میں آنے والوں کی تعداد41581 ہوچکی ہے۔

اُترکنڑا میں کورونا کے پھر 37 معاملات؛دکشن کنڑا میں 131 اور اُڈپی میں 53 پوزیٹیو؛ کیا پھر لاک ڈاون ہوگا ؟

اُترکنڑا میں آج کورونا کے پھر 37 نئے معاملات سامنے آئے ہیں جس میں صرف بھٹکل سے ہی 20 پوزیٹیو کیسس ہیں۔اُڈھر پڑوسی ضلع اُڈپی میں 53، جبکہ دکشن کنڑا میں 131 کیسس سامنے آئے ہیں۔

کوویڈ کے نام پر نجی اسپتالوں میں بدعنوانی اور سرکاری اسپتالوں کی بدنظمی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ؛ اقدامات نہ کرنے کی صورت میں ایس ڈی پی آئی نے دیا احتجاج کا انتباہ

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) کرناٹک کے ریاستی نائب صدر اڈوکیٹ مجید خان نے منگلور پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔