خواتین کے تئیں جنسی جرائم کی سیاسی ذمہ داری طے ہو: کانگریس

Source: S.O. News Service | Published on 10th September 2019, 10:23 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،10؍ستمبر(ایس او نیوز؍یو این آئی) کانگریس نے ملک، بالخصوص اترپردیش میں خواتین اور بچوں کے تئیں بڑھتے ہوئے جنسی استحصال کے لئے مرکزی حکومت اور ریاستی حکومت کی سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایسے جرائم کے لئے سیاسی ذمہ داری طے کی جانی چاہئے اور قصورواروں کے خلاف کارروائی ہونی چاہئے۔

کانگریس کی ترجمان راگنی نائک نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت کے دوران خواتین اور بچوں کے خلاف جنسی جرائم میں کافی اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے اناؤ عصمت دری معاملہ، چنميانندمعاملہ اور اسکولوں میں بچوں کے ساتھ جنسی استحصال کے معاملات کا ذکر کرتے ہوئے اترپردیش میں جنسی جرائم کے اعداد و شمار بھی پیش کئے۔

نائک نے الزام لگایا کہ اناؤ عصمت دری معاملے کے ملزمین کو بی جے پی کے لیڈروں کا تحفظ حاصل ہے اور پارٹی کے رکن پارلیمنٹ ملزم سے ملنے جیل میں جاتے ہیں اور تسلی دیتے ہیں۔. چنمیانند معاملے میں متاثرہ سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے جبکہ ملزم سے کوئی پوچھ گچھ نہیں کی گئی ہے۔ اس معاملے کی متاثرہ کے والد کو پولیس، انتظامیہ اور بی جے پی کے لیڈر دھمکی دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت میں عصمت دری کے ملزم کو سیاسی تحفظ فراہم کیا جا رہا ہے لہذا ایسے جرائم کے لئے سیاسی ذمہ داری بھی طے کی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ چنميانند معاملے کی متاثرہ اور اس کے اہل خانہ کو تحفظ فراہم کیا جانا چاہیے۔

ریس کانفرنس میں متاثرہ کاایک ویڈیو بھی دکھایا گیا جس میں وہ اپنی اور اپنے اہل خانہ کی جان كا خطرہ بتا کر ملزم کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کر رہی ہے۔ متاثرہ کا کہنا ہے کہ اس کے معاملے کی ایف آئی آر اترپردیش کے شاہجہاں پور میں درج کی جائے اور اس پر کارروائی ہونی چاہئے۔ واضح رہے کہ سوامی چنميانند بی جے پی کے سینئر لیڈر ہیں اور مرکز میں وزیر رہ چکے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

دہلی میں جماعت اسلامی ہند کا یک روزہ ورکشاپ۔ امیر جماعت نے کہا؛ ہر زمانے میں سخت اور چیلنجنگ حالات میں ہی دعوت دین کا کام انجام دیا گیا ہے

 جماعت اسلامی ہند حلقہ دہلی کا یک روزہ ورکشاپ برائے ذمہ دران حلقہ،انڈین انسٹی ٹیوٹ آف اسلامی اسٹڈیز ابو الفضل انکلیو، اوکھلا میں منعقد ہوا۔ ورکشاپ میں نئی میقات 2019تا2023کی پالیسی پروگرام کی تفہیم کرائی گئی۔ صبح 10  بجے  سے شام تک چلے اس ورکشاپ میں جماعت اسلامی ہند دہلی کے ...

ایک قوم‘ایک زبان معاملہ: سیاسی قائدین کی جانب سے شدید رد عمل کا اظہار

اداکار سے سیاست داں بنے جنوبی ہند چینائی کے کمل ہاسن نے ایک قوم ایک زبان کے معاملہ میں بی جے پی قومی صدر امیت شاہ پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان 1950ء میں کثرت وحدت کے وعدے کے ساتھ جمہوریہ بناتھا اور اب کوئی شاہ یا سلطان اس سے انکار نہیں کرسکتا ہے۔

بی جے پی حکومت کی اُلٹی گنتی شروع: کماری شیلجہ

ہریانہ کانگریس کی ریاستی صدر اور رکن پارلیمنٹ کماری شیلجہ نے آج دعوی کیا کہ ریاست کی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) حکومت کی الٹی گنتی شروع ہوگئی ہے کیونکہ عوام اس حکومت کی بدنظمی سے تنگ آچکے ہیں۔

جموں و کشمیر کے سابق سی ایم فاروق عبداللہ کو پی ایس اے کے تحت حراست میں لیا گیا

جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی حراست لیا گیا ہے۔ان کے حراست کو لے کر سپریم کورٹ میں داخل عرضی پر سماعت کے دوران عدالت نے مرکزی حکومت کو ایک ہفتے کا نوٹس دے کر جواب دینے کے لئے کہا گیا ہے۔