وکاس دوبے انکاؤنٹر:مخبری کے الزام میں گرفتار ایس آئی کو جان کا خطرہ، سپریم کورٹ پہنچے

Source: S.O. News Service | Published on 13th July 2020, 10:47 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،13؍جولائی(ایس او نیوز؍یو این آئی) کانپور کے بِکرو گاوں میں مجرم وکاس دوبے کے گھر پر پولیس کارروائی کی مخبری کرنے کے الزام میں اتر پردیش کے اسپیشل ٹاسک فورس(ایس ٹی ایف)کے ذریعہ گرفتار کئے گئے معطل سب انسپکٹر کے کے شرما نے اپنی اور بیوی کی جان کی حفاظت کے لئے سپریم کورٹ کا رخ کیا ہے۔

معطل انسپکٹر کے کے شرما نے اتوار کو عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر کر کے خود کی اور اپنی اہلیہ ونیتا سروہی کی جان کو خطرہ بتایا ہے۔

درخوست گزار نے کہا ہے کہ وکاس دوبےاور اس کے ساتھیوں کی انکاونٹر میں ہوئی موت کے واقعہ کے بعد اسے خود کی اور بیوی کی جان کو خطرہ لگنے لگا ہے،اس لئے ان کی جان کی حفاظت کی جائے۔

شرما نے اپنے خلاف دائر ایف آئی آر کی غیر جانبدارانہ ، آزادانہ اور قانون کے دائرہ میں جانچ کاذمہ کسی آزاد ایجنسی کے حوالے کئے جانے یا سینٹرل بیورو آف انویسٹی گیشن (سی بی آئی) سے کرانے کی ہدایت دینے کی عدالت سے درخواست کی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ وکاس دوبے کے گھر دو-تین جولائی کی درمیانی شب کو پولیس کارروائی کی جانکاری پہلے ہی فون سے دی گئی تھی،جس کے بعد دوبے اور اس کے ساتھیوں نے پوری تیاری کے ساتھ پولیس ٹیم پر دھاوا بولا تھا جس میں 8پولیس اہلکار کی موت ہوگئی تھی۔

مخبری کے الزام میں چوبے پور پولیس اسٹیشن کے انچارج ونے تیواری اور سب انسپکٹر کے کے شرما کو معطل کرنے کے بعد ایس ٹی ایف نے گرفتار کرلیا ہے

ایک نظر اس پر بھی

”دہلی کا فساد بدلے کی کارروائی تھی۔ پولیس نے ہمیں کھلی چھوٹ دے رکھی تھی“۔فسادات میں شامل ایک ہندوتوا وادی نوجوان کے تاثرات

دہلی فسادات کے بعد پولیس کی طرف سے ایک طرف صرف مسلمانوں کے خلاف کارروائی جاری ہے۔ سی اے اے مخالف احتجاج میں شامل مسلم نوجوانوں اور مسلم قیادت کے اہم ستونوں پر قانون کا شکنجہ کسا جارہا ہے، جس پر خود عدالت کی جانب سے منفی تبصرہ بھی سامنے آ چکا ہے۔

کورونا کے خلاف لڑائی میں بہار حکومت سب سے پیچھے: یشونت سنہا

سابق مرکزی وزیر خزانہ یشونت سنہا نے کورونا وبا کے خلاف لڑائی میں حکومت بہار کو پھسڈی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مناسب وقت ملنے کے باوجود بھی حکومت اس سنگین صورت حال میں لوگوں کے لئے معقول انتظام کرنے میں ناکام رہی ہے۔

مدھیہ پردیش: کورونا سے کل 886 افراد ہلاک، 921 نئے معاملے

مدھیہ پردیش میں کورونا وائرس کووڈ۔19 کے انفیکشن میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور 921 نئے معاملے سامنے آنے کے بعد ان کی مجموعی تعداد بڑھ کر 33535 ہوگئی ہے۔ ان میں سے 23550 صحتیاب ہوچکے ہیں۔ سرگرم معاملوں کی تعداد 9099 ہے۔

ملک کے وزیرداخلہ کے بعد اب کرناٹک کے وزیراعلیٰ کی کورونا رپورٹ بھی نکلی پوزیٹیو؛ کرناٹک میں آج بھی کورونا کے معاملات پانچ ہزار سے زائد

کرناٹک کے وزیراعلیٰ بی ایس یڈی یورپا نے ٹویٹ کرتے ہوئے خبر دی ہے کہ اُن کی کوویڈ۔19 رپورٹ آج اتوار کو  پوزیٹیو پائی گئی ہے۔ رات قریب 11:30 بجے ٹویٹ کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ویسے تو وہ بالکل ٹھیک ٹھاک ہیں لیکن ڈاکٹروں کی ہدایت پر   احتیاطاً   اسپتال میں  ایڈمٹ ہوگئے ہیں۔

کووڈ-19: ملک میں ایک دن میں 51،255 افراد صت یاب,54،736نئے معاملے درج

ملک میں کورونا کے بڑھتے ہوئے قہر کے درمیان گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران راحت کی بات یہ ہے کہ پہلی مرتبہ 51 ہزار سے زیادہ افراد صحت یاب ہوئے ہیں ، تاہم اس دوران 54،736 نئے کیسز سانے آنے سے متاثرین کی تعداد 17 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔