چار فرضی صحافیوں کو پولیس نے کیا گرفتار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 24th August 2019, 6:16 PM | ملکی خبریں |

نوئیڈا،24/اگست (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) گوتم بدھ نگر ضلع تھانہ بیٹا کے پولیس نے چار افراد کو گرفتار کیا جن پر الزام ہے کہ وہ صحافی ہونے کا دعوی کرکے غیر قانونی وصولی کرتے تھے اور اپنے مفاد کے لئے انتظامی حکام پر دباؤ بناتے تھے۔پولیس نے بتایا کہ ان کا ایک ساتھی ابھی فرار ہے۔ اس کی گرفتاری پر سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ کی طرف سے 25 ہزار روپے کا انعام مقرر کیا گیا ہے۔گرفتار فرضی صحافیوں میں دو اس سے قبل بھی جیل جا چکے ہیں۔پولیس کے مطابق تفتیش کے دوران پکڑے گئے ملزمان نے کئی پولیس والوں، انتظامی حکام، اتھارٹی کے حکام، اور رہنماؤں سے ساز باز کر کے کروڑوں روپے کی کمائی کرنے کی بات قبول کی ہے۔ان کی منقولہ اور غیر منقولہ جائیداد کو ضلع انتظامیہ قرق کرنے کی تیاری کر رہا ہے۔گوتم بدھ نگر کے ضلع مجسٹریٹ برجیش نارائن سنگھ نے بتایا کہ صحافت کی آڑ میں ایک منظم گروہ بنا کر، غیر قانونی اور انتظامی افسران پر دباؤ بنا کر اپنے مفاد والے گروہ کے چار افراد کو تھانہ بیٹا کے پولیس نے جمعہ دیر رات کو گرفتار کیا۔ان کی گرفتاری گینگسٹر قانون کے تحت ہوئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ اس گروہ کا سرغنہ سشیل پنڈت ہے۔ضلع مجسٹریٹ نے بتایا کہ ان کے ساتھی ادت گوئل، چندن رائے اور نتیش پانڈے کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ ان کا ایک ساتھی رمن ٹھاکر ابھی فرار ہے۔اس کی گرفتاری پر 25 ہزار روپے کا انعام مقرر کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ یہ گروہ بنیادی طور پر گوتم بدھ نگر، غازی آباد اور لکھنؤ میں سرگرم تھا۔انہوں نے بتایا کہ یہ گروہ دو طرح سے اپنا کام کرتا تھا۔اس گروہ کے رکن سرکاری ملازمین، خاص طور پولیس افسران کو غیر مناسب اقتصادی فوائد کا لالچ دے کر مخصوص شخص کے حق میں کام کرنے کے لئے حوصلہ افزائی کرتے تھے۔ضلع مجسٹریٹ نے بتایا کہ دو صحافیوں کی گرفتاری نوئیڈا سے، ایک کی غازی آباد سے، اور ایک کی لکھنؤ سے ہوئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ گرفتار ملزمان کے دفاتر کو سیل کر دیا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی