پی ایم مودی کی میٹنگ سے نتیش اور چندرشیکھر راؤ رہے غائب

Source: S.O. News Service | Published on 7th August 2022, 11:25 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 7؍اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کے روز نیتی آیوگ کی ساتویں گورننگ کونسل کی میٹنگ کی صدارت کی۔ یہ میٹنگ اتوار کو دہلی میں راشٹرپتی بھون کے کلچرل سنٹر میں منعقد ہوئی۔ میٹنگ میں کئی ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ نے شرکت کی، لیکن دو بڑے لیڈران یعنی بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار اور تلنگانہ کے وزیر اعلیٰ کے چندرشیکھر راؤ اس میں شریک نہیں ہوئے۔ ان دونوں کی غیر حاضری پر سیاسی گلیارے میں چہ می گوئیاں شروع ہو گئی ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ اس سے پہلے بھی پی ایم مودی کی صدارت میں ہوئی ایک میٹنگ سے نتیش کمار ندارد رہے تھے۔

نتیش کمار کی غیر موجودگی پر سوال اٹھنے پر کہا گیا ہے کہ وہ کچھ اہم وجوہات کی وجہ سے شامل نہیں ہو سکے۔ ایک وجہ یہ رہی کہ نتیش کمار حال ہی میں کووڈ-19 سے شفایاب ہوئے ہیں اس لیے انھوں نے میٹنگ میں شامل نہ ہونے کا فیصلہ کیا۔ دوسری طرف تلنگانہ کے وزیر اعلیٰ کے. چندرشیکھر راؤ نےمرکزی حکومت پر دوہرا رویہ اختیار کرنے سمیت کئی الزامات عائد کرتے ہوئے میٹنگ کے بائیکاٹ کا اعلان کیا۔ کے سی آر نے وزیر اعظم کو ایک خط بھی لکھا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ یہ فیصلہ تلنگانہ سمیت ریاستوں کے خلاف مرکز کی مبینہ تفریق کے خلاف ان کے احتجاج کو نشان زد کرنے کے لیے ہے۔

نیتی آیوگ کی گورننگ کونسل کی یہ میٹنگ جولائی 2019 کے بعد سے پہلی نجی میٹنگ ہے۔ اس دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے الگ الگ ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ نیتی آیوگ کی اس میٹنگ میں ریاستوں اور مرکزی حکومت کے درمیان تعاون اور ایک نئی سمت میں کام کرنے کے لیے تال میل بٹھانے سے متعلق پالیسی پر بات چیت ہوئی۔ اس کے علاوہ میٹنگ میں دیگر ایشوز، مثلاً فصل تنوع، زرعی شعبہ میں خود کفیلی، قومی تعلیمی پالیسی اور شہری حکومت سمیت کئی اہم ایشوز پر تبادلہ خیال ہوا۔

چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے نیتی آیوگ کی گورننگ کونسل کی میٹنگ کے دوران کوئلہ سمیت اہم فرٹیلائزرس پر رائلٹی ریٹ میں ترمیم کی گزارش کی۔ انھوں نے انسداد نکسل کے لیے تعینات مرکزی سیکورٹی فورسز پر 12 ہزار کروڑ روپے کے خرچ کی ادائیگی کا بھی مطالبہ کیا۔ وزیر اعظم نے اس دوران چھتیس گڑھ حکومت کے ’گئو دھن منصوبہ‘ کی تعریف بھی کی۔

ایک نظر اس پر بھی

کہاں غائب ہو گئے نوٹ بندی کے بعد چھاپے گئے 9.21 لاکھ کروڑ روپے، آر بی آئی کے پاس بھی تفصیل موجود نہیں!

مرکز کی مودی حکومت نے بلیک منی پر قدغن لگانے کے مقصد سے 2016 میں نوٹ بندی ضرور کی، لیکن اس مقصد میں کامیابی قطعاً ملتی ہوئی نظر نہیں آ رہی ہے۔ اپوزیشن پارٹیوں نے نوٹ بندی کے وقت بھی مرکز کے اس فیصلے پر سوالیہ نشان لگایا تھا،

ہندوستان میں 10 سالوں کے دوران شرح پیدائش میں 20 فیصد کی گراوٹ، رپورٹ میں انکشاف

 پچھلے 10 سالوں میں ہندوستان میں عام زرخیزی کی شرح (جی ایف آر) میں 20 فیصد کی کمی درج کی گئی ہے۔ اس کا انکشاف حال ہی میں جاری کردہ سیمپل رجسٹریشن سسٹم (ایس آر ایس) ڈیٹا 2020 میں ہوا ہے۔ جی ایف آر سے مراد 15-49 سال کی عمر کے گروپ میں ایک سال میں فی 1000 خواتین پر پیدا ہونے والے بچوں کی تعداد ...

الیکشن کمیشن نے تین برسوں میں جموں و کشمیر کی 7 سیاسی جماعتوں کو رجسٹر کیا

الیکشن کمیشن آف انڈیا (ای سی آئی) نے گزشتہ تین برسوں کے دوران جموں و کشمیر کی7 سیاسی جماعتوں کو رجسٹر کیا ہے جن میں کچھ غیر معروف جماعتیں بھی شامل ہیں۔ ای سی آئی ریکارڈس کے مطابق کمیشن نے سال 2019 سے تمام ضروری لوازمات کی ادائیگی کے بعد جموں و کشمیر کی 7 سیاسی جماعتوں کو رجسٹر ...

بامبے ہائی کورٹ سے گوشت کے اشتہارات پر پابندی کی درخواست خارج

بامبے ہائی کورٹ نے ٹی وی اور اخبارات میں نان ویجیٹیرین کھانے کے اشتہارات پر پابندی لگانے کی درخواست خارج کر دی ہے، چیف جسٹس دیپانکر دتہ اور جسٹس مادھو جمدار نے پیر کو جین چیریٹیبل ٹرسٹ کی عرضی کو یہ کہتے ہوئے خارج کر دیا کہ عدالت صرف اس صورت میں مداخلت کر سکتی ہے جب شہریوں کے ...

پی ایف آئی پر پھر چھاپے، شاہین باغ میں دبش، جامعہ میں دفعہ 144 نافذ

نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) سے ملی لیڈ کی بنیاد پر، 8 ریاستوں کی پولیس نے آج یعنی منگل کو ملک بھر میں پاپولر فرنٹ آف انڈیا (پی ایف آئی) کے کئی مقامات پر چھاپے مارے۔ نیوز پورٹل ’آج تک‘ پر شائع خبر کے مطابق اسے دوسرے راؤنڈ کا چھاپہ بتایا جا رہا ہے۔