عوام دو وقت کی روٹی سے محروم اور بشارالاسد کی مہنگی انتخابی مہم

Source: S.O. News Service | Published on 7th February 2021, 10:42 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دبئی،7فروری (آئی این ایس انڈیا)شام میں رواں سال کے وسط میں صدارتی انتخابات کی تیاریاں جاری ہیں۔ انتخابات میں‌ حصہ لینے کے لیے صدر بشارالاسد اپنے زیر انتظام علاقوں میں بھرپور انتخابی مہم چلاتے ہوئے مہم پر پانی کی طرح پیسہ بہا رہے ہیں۔

دوسری طرف اسد رجیم کے زیر کنٹرول علاقوں میں غربت کا عالم یہ ہے کہ عوام کو دو وقت کا کھانا میسر نہیں اور آبادی کی ایک بڑی اکثریت غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کر رہی ہے۔

مقامی ذرائع ابلاغ اور انسانی حقوق کے کارکنوں کی فراہم کردہ اطلاعات سے پتا چلا ہے کہ صدارتی انتخابات کی مہمات ایک ایسے وقت میں جاری ہیں جب دوسری طرف ملک بدترین اقتصادی بحران سے گذر رہا ہے۔ معیشت تباہی سے دوچار ہے اور شہریوں کو بنیادی ضروریات کے حصول میں شدید مشکلات درپیش ہیں۔

صدارتی مہمات کے دوران شہریوں کے بنیادی مسائل کے حل پر کوئی توجہ نہیں دی جا رہی۔ ملک میں آنے والی سیاسی تبدیلی سے بھی عوام کی بہتری کا راستہ نکلتا دکھائی نہیں دیتا۔

شام میں سنہ 2012ء میں منظور ہونے والے قانون کے مطابق صدارتی انتخابات کو ریفرنڈم میں تبدیل کیا گیا ہے۔عوام کو چند امیدواروں کا چنائو کرنا ہوتا ہے۔ قانون کے تحت صدارت کی مدت کے خاتمے کے دو ماہ بعد دوبارہ ریفرنڈم کی شکل میں انتخابات کرائے جائیں گے۔

ماضی میں بشارالاسد کی طرف سے مخالف امیداروں کو دبانے کی کوشش کی گئی جس کے نتیجے میں زیادہ لوگ انتخابات میں حصہ نہیں لے سکے۔ انہوں نے صرف 'ہاں' یا 'نہیں' کے الفاظ پر مشتمل ریفرنڈم کرانے کا قانون منظور کیا۔ انتخابات کے موقعے پر کبھی بھی مبصرین کو انتخابی عمل کی نگرانی کی اجازت نہیں دی گئی۔

اقوام متحدہ کی رپورٹس کے مطابق شام میں گذشتہ 10 سال سے جاری خانہ جنگی کے نتیجے میں ملک کی معیشت بدترین تباہی سے دوچار ہوئی ہے اور اس وقت شام کی 87 فی صد آبادی غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کر رہی ہے۔

سنہ 2010ء میں ہونے والی مردم شماری میں شام کی نصف آبادی 21 ملین افراد پر مشتمل تھی اور آج آبادی کا ایک بڑا حصہ پناہ گزینوں اور مہاجرین پر مشتمل ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ کے بعد 1 کروڑ افراد عمرہ ادا کر چکے ہیں : وزارت حج وعمرہ

سعودی وزارت حج و عمرہ کے اعلان کے مطابق محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ اور عمرہ، نماز اور زیارت کی بتدریج واپسی کے بعد سے اب تک 1 کروڑ افراد کے لیے عمرے کی ادائیگی کو ممکن بنایا گیا۔ سال 1443 ہجری کے عمرہ سیزن کے آغاز کے ساتھ ہی مختلف ممالک کے لیے جاری عمرہ ویزوں کی تعداد 12 ہزار سے تجاوز کر ...

بھٹکل کمیونٹی جدہ کا سالانہ اجلاس؛ پروگرام میں "مرحوم زاہد رکن الدین ، ایک فرد ایک انجمن " کتاب کا بھی اجراء

بھٹکل مسلم کمیونٹی جدہ کا سالانہ اجلاس جمعرات مورخہ  26 اگست کو  جدہ کے گرین لینڈ  ہوٹل میں منعقد ہوا جس میں  جدہ جماعت سمیت بھٹکل مسلم خلیج کونسل کے سابق صدر مرحوم  سی اے زاہد رکن الدین صاحب کے  تعلق سے موصولہ تعزیتی قرار دادوں  اور تعزیتی خطوط پر مشتمل ایک کتاب "مرحوم زاہد ...

امریکہ اور فرانس میں تناؤ ٹرانس اٹلانٹک حکمت عملی کے لیے دھچکا

آسٹریلیا، برطانیہ اور امریکہ کے مابین نئے سہ فریقی سکیورٹی معاہدے پر فرانس کا ردعمل ٹرمپ کی صدارت کے دوران ایک امریکی اخبار کی طرف سے شائع ہونے والے ایک طاقتور کارٹون کو ذہن میں لاتا ہے، جب امریکی صدر کانگریس سے بچنے کے ایگزیکٹو آرڈر کے ذریعے حکمرانی کر رہے تھے۔

محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ کے بعد 1 کروڑ افراد عمرہ ادا کر چکے ہیں : وزارت حج وعمرہ

سعودی وزارت حج و عمرہ کے اعلان کے مطابق محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ اور عمرہ، نماز اور زیارت کی بتدریج واپسی کے بعد سے اب تک 1 کروڑ افراد کے لیے عمرے کی ادائیگی کو ممکن بنایا گیا۔ سال 1443 ہجری کے عمرہ سیزن کے آغاز کے ساتھ ہی مختلف ممالک کے لیے جاری عمرہ ویزوں کی تعداد 12 ہزار سے تجاوز کر ...

آسٹریلیا میں لاک ڈاؤن کی زبردست مخالفت، 270 مظاہرین گرفتار

آسٹریلیا کے میلبورن اور سڈنی میں لاک ڈاون مخالف ریلی کررہے تقریباً 270 لوگوں کو پولیس نے گرفتار کر لیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق پولیس نے ملبورن میں 235 اور سڈنی میں 32 لوگوں کو غیر قانونی طورپر لاک ڈاون مخالف ریلی نکالنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔