مظفرپور: پنچایت نے نابالغ ریپ متاثرہ کو سنایا بچہ فروخت کرنے کا فرمان  ملزم مذہبی رہنمااوردیگرالیکٹرشین اب بھی فرار

Source: S.O. News Service | Published on 12th November 2019, 7:30 PM | ملکی خبریں |

مظفر پور، 12 نومبر (آئی این ایس انڈیا) بہار کے مظفر پور ضلع میں ایک بہت ہی چونکانے والے معاملے میں ایک پنچایت نے ایک نابالغ ریپ متاثرہ کو اپنا نوزائیدہ بچہ فروخت کرنے کا فرمان سنا دیا۔اس کیس کے سامنے آنے کے بعد مظفر پور پولیس حرکت میں آ گئی اور کیس تحقیقات کا حکم دیا گیا۔نابالغ لڑکی کی شکایت کی بنیاد پر پولیس نے آئی پی سی کی مختلف دفعات اور پاکسو ایکٹ کے تحت جولائی میں معاملہ درج کیا تھا،لڑکی کے جنسی استحصال کا الزام ایک مسلم مذہبی رہنما اور الیکٹرشین پر ہے،دونوں ملزم فرار ہیں۔نابالغ لڑکی نے دو دن پہلے ہی پنچایت سے انصاف کی فریاد کی تھی۔اس نے پنچایت سے ڈی این اے ٹیسٹ کراکر بچے کے حقیقی والد کی شناخت کرنے کی مانگ کی تھی جو ان دونوں کو اپنے گھر رکھے،اگرچہ سماعت کے دوران مبینہ طور پر نابالغ کو اپنا بچہ فروخت کرنے کو کہا گیا۔مظفر پور ایس پی کا کہنا ہے کہ معاملے کی تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔پولیس نے کہا کہ دونوں ملزمان کو گرفتار کرنے کے لئے پولیس نے تلاشی مہم تیز کر دی ہے۔اس معاملے میں درج ایف آئی آر کے مطابق مسلم مذہبی رہنما کو گاؤں کے لوگ باری باری کھانے کے لئے کھانا اس کے گھر بھیجتے تھے۔اسی دوران جنوری کے مہینے میں ایک دن ایک نابالغ لڑکی کھانا لے کر گئی،اس کے بعد نابالغ کو بیہوش کرکے اس کے ساتھ مبینہ طور پر ریپ کیا گیا،اس واقعہ کی ایک ویڈیو بھی بنا لی گئی جس کی بنیاد پر لڑکی کو بلیک میل کیا جاتا رہا،بعد میں واقعہ کے بارے میں جب ایک الیکٹرشین کو پتہ چلا تو اس نے بھی نابالغ کے ساتھ مبینہ طور پر ریپ کیا۔
 

ایک نظر اس پر بھی

غیر ملکی تبلیغی جماعتیوں کی عرضی پر سماعت 10 جولائی تک ملتوی

سپریم کورٹ نے تبلیغی جماعت کے پروگرام میں حصہ لینے والے 34غیر ملکی جماعتیوں کی عرضیوں پر سماعت 10 جولائی تک کے لئے ملتوی کردی اور کہا کہ انہیں اپنے ملک بھیجنے کے معاملے میں وہ مداخلت نہیں کرے گا، بلکہ بلیک لسٹ میں ڈالے جانے کے معاملے پر سماعت کرے گا۔

شیوراج کابینہ میں توسیع، 28 وزیروں کی حلف برداری

 بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) کی نائب صدر اور سابق مرکزی وزیر اوما بھارتی نے مدھیہ پردیش میں شیوراج سنگھ چوہان کی کابینہ توسیع کے بالکل پہلے ذات بات تال میل کے سلسلے میں پارٹی قیادت کے سامنے ’اصولی عدم اتفاق‘کا اظہار کیا ہے