جھارکھنڈ میں پولنگ ختم، 63 فیصد ووٹروں نے کیا 260 امیدواروں کی قسمت کا فیصلہ

Source: S.O. News Service | Published on 7th December 2019, 8:47 PM | ملکی خبریں |

رانچی،7/دسمبر(ایس او نیوز/یو این آئی) جھارکھنڈ میں دوسرے مرحلہ میں ہفتہ کے روز بیس اسمبلی سیٹوں پر پولنگ اکا دکا واقعات کو چھوڑ کر پرامن طریقہ سے ختم ہوگئی اور اس دوران تقریبا 63 فیصد ووٹروں نے ووٹ دیکر وزیراعلی رگھوور داس اور سابق وزیر سریو رائے سمیت 260 امیدواروں کی قسمت کا فیصلہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم )میں بندکردیا۔

ریاستی انتخابی دفتر کے ذرائع نے یہاں بتایاکہ ریاست کی 20اسمبلی سیٹوں میں سے بہراگوڑا ،گھاٹ شلا(ریزرو)،پوٹکا (ریزرو)، جگسلائی (ریزرو) ، سرائے کیلا (ریزرو) ، چائی باسا (ریزرو) ،مجھگاؤں ،جگناتھ پور (ریزرو)، منوہرپور (ریزرو) ، چکردھرپور (ریزرو)، کھرساواں (ریزرو)، تماڑ (ریزرو)، تورپا(ریزرو)، کھونٹی (ریزرو)، مانڈر (ریزرو)، سمڈیگا (ریزرو) اور کولیبیرا میں اکا دکا واقعات کو چھوڑ کر سخت حفاظتی بندوبست کے بیچ پرامن طریقہ سے پولنگ سہ پہر تین بجے ختم ہوگئی جبکہ جمشید پور مشرق اور جمشیدپورمغرب میں شام پانچ بجے پولنگ ختم ہوئی۔

اس دوران تقریبا 62 اعشاریہ 40 فیصد لوگوں نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔ پولنگ ختم ہونے پر سب سے زیادہ پولنگ بہرگوڑا سیٹ پر 74 اعشاریہ 44 فیصد ہوئی وہیں سب سے کم 46 اعشاریہ 55 فیصد پولنگ جمشید پور مغرب میں ہوئی ۔

اس کے بعد گھاٹ شلا (ریزرو) میں 64 اعشاریہ 49 فیصد، پوٹکا (ریزرو) میں 64 اعشاریہ 3 فیصد، جگسلائی (ریزرو) میں 63 اعشاریہ 27 فیصد ، جمشید پور مشرق 49 اعشاریہ 12 فیصد،سرائے کیلا (ریزرو) میں 56 اعشاریہ 77 فیصد، چائی باسا (ریزرو) میں 47 اعشاریہ 38 فیصد ،مجھگاؤں میں 66 اعشاریہ 67 فیصد، جگناتھ پور (ریزرو) میں 60 اعشاریہ 99 فیصد، منوہرپور (ریزرو) میں 60 اعشاریہ 03 فیصد، چکردھرپور (ریزرو) میں 65 اعشاریہ 61 فیصد، کھرساواں (ریزرو) میں 60 اعشاریہ 12 فیصد

اس کے علاوہ تماڑ (ریزرو) میں 67 اعشاریہ 83 فیصد، تورپا (ریزرو) میں 64 اعشاریہ 24 فیصد، کھونٹی (ریزرو) میں 59 اعشاریہ 2 فیصد، مانڈر (ریزرو) میں 61 اعشاریہ 14 فیصد، سسئی (ریزرو) میں 68 اعشاریہ 6، سمڈیگا (ریزرو) میں 59 اعشاریہ 07 فیصداور کولیبیرا میں 64 اعشاریہ 74 فیصد پولنگ ہوئی۔

اس دوران گملا ضلع کے سسئی اسمبلی حلقہ میں کدرا پنچایت کے بگھنی گاؤں میں پولنگ سنٹر نمبر 36 پر سلامتی دستہ کے جوانوں اور گاؤں والوں کے درمیان ہوئی جھڑپ میں ایک شخص کی موت ہو گئی اور کئی جوانوں کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

سی اے اے کے خلاف تمام اپوزیشن جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر آنے کی ضرورت: پی چدمبرم

  این پی آر کی موجودہ شکل کو ناقابل قبول بتاتے ہوئے سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم نے کہا کہ کانگریس پارٹی اس کو قبول نہیں کرے گی ۔انہوں نے شہریت ترمیمی ایکٹ ،این آر سی اور این پی آر کے خلاف تمام اپوزیشن جماعتوں کو متحد ہوکر اس کی مخالفت کرنی چاہیے۔

دہلی: کانگریس کی 54 امیدواروں کی فہرست جاری

کانگریس نے دہلی کی 70 ارکان پر مشتمل اسمبلی کے انتخابات کےلئے 54 امیدواروں کی پہلی فہرست سنیچر کو جاری کی جس میں سینئر لیڈر کرشنا تیرتھ، راجیش لیلوتیا، ہارون یوسف، ڈاکٹر نریندر ناتھ اور اروند سنگھ لولی سمیت کئی اہم لیڈر شامل ہیں۔ کانگریس انتخابی کمیٹی کے سربراہ مکل واسنک نے ...

کیجریوال نے کروڑوں روپے لیکر ٹکٹ فروخت کیا: آدرش شاستری

سابق وزیر اعظم لال بہادر شاستری کے پوتے اور دوارکا سے عام آدمی پارٹی (عآپ) کے رکن اسمبلی آدرش شاستری نے ہفتہ کے روز وزیر اعلی اروند کیجریوال پر 10 سے 20 کروڑ روپے لیکر دہلی اسمبلی انتخابات کے ٹکٹ فروخت کرنے کا سنگین الزام عائد کیا ہے۔

  اتر پردیش میں 10 آئی پی ایس افسران کے تبادلے

 اتر پردیش حکومت نے سنیچر کو انڈین پولیس سروس (آئی پی ایس) کے دس افسران کا تبادلہ کر دیا۔ سرکاری ذرائع کے مطابق پی اے سی مرادآباد میں ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس ایس سی دوبے کو اعظم گڑھ (رینج) کا ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس بنایا گیا ہے جبکہ اعظم گڑھ کے موجود ڈی آئی جی جے ...

نربھیا کیس: مجرم پون کا دفاع کرنے والے وکیل برے پھنسے، بار کونسل نے بھیجا نوٹس

نربھیا کیس میں قصواروں کے وکیل اے پی سنگھ کو دہلی کی بار کونسل نے نوٹس جاری کیا ہے۔ اتنا ہی نہیں، بار کونسل نے ان سے دو ہفتے کے اندر جواب بھی طلب کیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ ہائی کورٹ نے حال ہی میں دہلی بار کونسل سے اے پی سنگھ کے خلاف کارروائی کرنے کو کہا تھا۔ ساتھ ہی ان کے اوپر 25 ہزار ...

60 کروڑ آدھار نمبر پہلے ہی این پی آرسے جوڑے جا چکے ہیں

اس وقت اس بات کو لے کر تنازعہ چل رہا ہے کہ این پی آر کو آدھار کے ساتھ جوڑا جائے گا یا نہیں۔ کئی میڈیا رپورٹس میں یہ بتایا گیا ہے کہ این پی آر کو آدھار نمبر کے ساتھ جوڑا جائے گا۔ لیکن وزارت داخلہ کا یہ کہنا ہے کہ کسی بھی شخص کو کوئی بھی دستاویز دینے کو مجبور نہیں کیا جائے گا۔