اتر پردیش میں مجرم بے لگام ہوگئے ہیں: اکھلیش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2019, 12:02 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ17جولائی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) ایس پی صدر اکھلیش یادو نے منگل کو دعوی کیا کہ اتر پردیش میں مجرم بے لگام ہیں اور انہیں قانون کا ذرا بھی خوف نہیں رہ گیا ہے۔اکھلیش نے ایک بیان میں کہا کہ اتر پردیش میں قتل، لوٹ، اغوا اور عصمت دری کے واقعات تھمنے کا نام نہیں لے رہی ہیں. وزیر اعلی (یوگی آدتیہ ناتھ) کے بیان کے بعد بھی مجرم صوبہ چھوڑ کر نہیں گئے، جو جیل گئے وہیں سے وہ اپنا کالا دھندہ دھڑلے سے  چلارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گورنر رام نائک اگرچہ ان حالات میں اتر پردیش کو بہترین صوبہ کی راہ پر بتائیں، لیکن سچ تو یہ ہے کہ آج یہ ریاست عوام کے لئے خوف اور دہشت کا دوسرا نام ہے۔ اکھلیش نے کہا کہ کل (پیر کو) ہی ایودھیا کے مہاراج گنج تھانہ علاقے میں دیر شام سماجوادی لیڈر ٹکو یادو کی گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔ ٹکو یادو سماجوادی پارٹی کے ابھرتے نوجوان رہنماتھے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے زیادہ بدقسمتی کیا ہو گی کہ اتر پردیش میں خواتین اور بچیوں کے جنسی استحصال کے واقعات کم نہیں ہو رہی ہیں۔ چھیڑ چھاڑ کے خوف سے تمام طالبات نے اسکول یا کوچنگ جانا ہی چھوڑ دیا۔ عصمت دری کی بڑھتی ہوئی ان واقعات کا خود کار طریقے سے نوٹس سپریم کورٹ نے بھی لیا ہے۔ قانون کے باوجود حکومت انتظامیہ مجرموں میں اس کا خوف نہیں پیدا کر سکا ہے۔ صورتحال دن بدن سنگین ہوتی جا رہی ہے۔ ایس پی صدر نے کہا کہ وزیر اعلی کے بڑبولے پن کا ان ماتحت افسروں پر کوئی اثر ہوتا ہوا نظر نہیں آرہا ہے،  ایسا لگتا ہے کہ جیسے مکمل انتظامیہ مفلوج ہو کر رہ گئی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی