کرناٹک کے رائچور ضلع میں بھی کورونا وائرس نے دی دستک

Source: S.O. News Service | Published on 19th May 2020, 5:42 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

رائچور،19؍مئی (ایس او نیوز)  گرین زون میں اطمینان اور خوشی کے ساتھ زندگی گذار رہے کرناٹک کے رائچور ضلع کے عوام کو مایوسی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ مہلک کورونا وائرس نے رائچور ضلع میں بھی دستک دے دی ہے۔ واضح رہے کہ رائچور ضلع میں اب تک کووڈ۔19کا ایک بھی معاملہ سامنے نہیں آیا تھا۔ ہزاروں لوگوں کو اب تک گھروں اور سرکاری طور پر قرنطینہ کیاگیا تھا۔ لیکن اچانک ضلع میں کوروناوائرس کے 6معاملے سامنے آئے ہیں۔

سرکاری حکام کے مطابق متاثرہ افراد مائگرنٹ مزدور ہیں اور یہ لوگ حال ہی میں ممبئی سے رائچور واپس لوٹے ہیں۔ بتایاجارہا ہے کہ دو افراد کا تعلق ضلع کے مسرکل گاوں سے ہے اور چار کا تعلق شہر کے آٹونگر علاقے سے ہے اور انہیں ممبئی سے واپس لوٹنے کے بعد قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔ کووڈ۔19کے چھ معاملے سامنے آنے کے بعد ضلع انتظامیہ اور طبی محکمہ کے عہدیدار چوکس ہو چکے ہیں۔ قرنطینہ مراکز پر پولیس کی جانب سے سخت سیکوریٹی انتظامات کئے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ رائچور ضلع میں ملک کی دیگر ریاستوں اور اضلاع سے مائگرنٹ مزدوروں کی آمد کا سلسلہ جاری ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ ضلع میں تقریبا دس ہزار سے زائد مزدوروں کی آمد متوقع ہے اور ضلع میں مسلسل مزدوروں کی آمد کا سلسلہ جاری ہے۔ ضلع انتظامیہ کے مطابق ضلع سے تاحال روانہ کئے گئے نمونوں کی رپورٹ میں 2853رپورٹ منفی آئی ہے۔ باقی 395رپورٹس کاا نتظار ہے۔ فیور کلینک میں 550افراد کی تھرمل اسکرینگ کی گئی ہے۔ جبکہ رائچور تعلقہ جات میں کل 9ہزار 8سو 53افرا کوقرنطینہ مراکز میں رکھا گیا ہے اور 915افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بھاری برسات کے وقت منگلوروایئر پورٹ پر طیاروں کو اترنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ایئر پورٹ ڈائریکٹر راؤ کا بیان

منگلورو انٹر نیشنل ایئر پورٹ کے دائریکٹر وی وی راؤ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھاری برسات اور خراب موسم کی وجہ سے چیزیں صاف دکھائی نہ دینے کی صورت میں ایئر پورٹ پر طیاروں کو لینڈنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔

کورونا کی وبا اور دعوت رجوع الی اللہ، اس عنوان کے تحت جماعت اسلامی ہند، کرناٹک کی 15 روزہ مہم کا آغاز

  کورونا کی وبا سے اس وقت پوری انسانیت پریشان ہے۔ اس مرض کا مقابلہ کرنے کیلئے حفاظتی اور احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے لوگ اپنے رب سے رجوع ہوں۔ کورونا جیسی بیماریوں پر قابو پانے کیلئے طبی علاج کے ساتھ روحانی اور اخلاقی طاقت کا ہونا بھی ضروری ہے۔

کرناٹک سے 40 امیدوار سیول سرویسز امتحان میں کامیاب

کرناٹک سے زائداز 40 امیدواروں نے 2019 کے یونین پبلک سرویس کمیشن (یو پی ایس سی ) سیول سرویس امتحان میں کامیابی حاصل کی اور اب آئی اے ایس ، آئی ایف ایس اور آئی پی ایس اور دیگر میں ملازمت حاصل کریں گے۔

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے کہا؛ سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے سے بڑھ رہے ہیں کورونا کے معاملات، نوجوان مریضوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کا کہنا ہے کہ سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے کی وجہ سے گزشتہ پانچ ماہ کے دوران کرونا وائرس سے متاثرہ نوجوانوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ کے مطابق فروری کے آخر سے لے کر جولائی کے وسط تک، کرونا وائرس کا شکار ہونے والے 60 لاکھ ...