یوم آئین پر چیف جسٹس نے نہرو اورآزاد ہندوستان میں اُن کی پہلی تقریر کو یاد کیا

Source: S.O. News Service | Published on 27th November 2022, 1:38 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 27؍نومبر (ایس ا و نیوز؍ایجنسی)  یوم آئین  کے موقع پر  وزیراعظم نریندر مودی نے ہندوستانی آئین کو مرتب کرنے والوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کے خوابوں کو شرمندہ ٔ  تعبیر کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ آئین کی تمہید میں الفاظ’’ وی دی پیپل‘‘(ہم ہندوستان کے لوگ)صرف ۳؍الفاظ نہیں ہیں بلکہ ایک تجریدی فلسفہ ہے،ایک عہداور عزم ہے جس نے  ہندوستان کو جمہوریت کی بنیاد بنادیا۔ چیف جسٹس آف انڈیا ڈی وائی چندر چُڈ نےا س موقع پر وزیراعظم نریندر مودی  اور وزیر قانون کرن رِجیجو کی موجودگی میں  ملک کے پہلے وزیراعظم جواہر لال نہروکو  اوران کی اس  تقریر کو  یاد کیا جو آزادی ملنے کے بعد ۱۴؍ اور ۱۵؍ اگست ۱۹۴۷ء کی درمیانی رات  انہوں  نے ملک کے عوام  سے خطاب کرتے ہوئے کی تھی۔  چندر چُد نےکمزوروں، دلتوں اور پسماندہ طبقات کیلئے مساوات کو یقینی بنانے اور عدالتوں کو ان تک پہنچانے پر زور دیا۔ 

  وزیر اعظم نریندر مودی نے سپریم کورٹ میں یوم آئین کی تقریبات میں شرکت کی اور ای کورٹ پروجیکٹ کے تحت مختلف نئے اقدامات اور ویب سائٹس کا افتتاح کیا۔ انہوں  نے کہا کہ’’۱۹۴۹ء میں یہ (۲۶؍نومبر) وہ دن تھا جب آزاد ہندوستان نے اپنے لیے ایک نئے مستقبل کی بنیاد رکھی تھی۔‘‘  انہوں نے کہا کہ  اس سال  یوم آئین اس لیے بھی خاص ہے کہ ہندوستان نے اپنی آزادی کے۷۵؍ سال مکمل کر لیے ہیں۔ 

 وزیراعظم  مودی نے کہا کہ لوگوں کو آزادی کے وقت ہماری ناکامی کا خوف تھا کہ ہم اپنی آزادی برقرار نہیں رکھ پائیں گے! لیکن ہم کامیاب ہو گئے۔ اس کی بنیاد آئین ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئین کی تمہید کا پہلا جملہ’’ ہم ہندوستان کے لوگ‘‘ صرف ۳؍ الفاظ نہیں بلکہ ایک تجریدی فلسفہ ہے۔وزیراعظم نے اس موقع پر شہریوں کے فرائض پر زوردیا اور کہا کہ ’’وہ عام شہری ہوں کہ ادارے، ہمارے فرائض ہی ہماری اولین ترجیح  ہیں۔ 

 وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ہندوستان ایک عالمی طاقت کے طور پر ابھررہا ہے۔ دنیا دیکھ رہی ہے کہ ہندوستان نواز پالیسی سب کو راحت دے رہی ہے۔ ہماری ترجیحات میں سے ایک پرانے قوانین کو ختم کرنا ہے ۔ ۱۵؍  اگست کو  لال قلعہ سے کی گئی اپنی تقریر کا حوالہ دیتے ہوئے  انہوں  نے ایک بار پھر فرائض پر زور دیا۔وزیراعظم نے کہا کہ ’’ ہم نے اگلے۵۰؍ سال کی منصوبہ بندی کی ہے۔ آزادی کا امرت دور فرض کی مدت ہے۔ ہم جلد ہی ترقی کی نئی سطح پر پہنچ جائیں گے۔ ہمیں بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے۔‘‘

  اس موقع پر چیف جسٹس آف انڈیا ڈی وائی چندرچُڈ نے کمزوروں، دلتوں اور پسماندہ طبقات کیلئے مساوات کی بات کہی ۔  انھوں نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ہندوستان کا آئین صرف قانون کی نہیں بلکہ انسانی جدوجہد اور عروج کی داستان ظاہر کرتا ہے۔یا درہے کہ ۲۶؍نومبر۱۹۴۹ء کو ہی آئین ساز اسمبلی نے ہندوستانی آئین کو اپنایا تھا۔ اس آئین کو تیار کرنے میں ۲؍ سال سے بھی زیادہ کا وقت لگا تھا۔ بعد ازاں۲۶؍ جنوری  ۱۹۵۰ءکو  اسے نافذ کیا گیا تھا۔ اس وقت سے  ہندوستان  ہر سال ۲۶؍ جنوری کو  یومِ جمہوریہ کی شکل میں اور ۲۶؍ نومبر کو  یومِ  یومِ آئین  کے طور پر مناتا ہے۔ 

 چیف جسٹس آف انڈیا نے زور دے کر کہا کہ آئین کی بنیاد رکھنے  میں ملک کے پسماندہ طبقات پیش پیش رہے۔ انھوں نے کہا کہ ’’آئین نے ہی سماج کے حاشیے پر کھڑے پسماندہ اور دلتوں کو احترام بخشا ہے۔ انگریزوں کے راج میں اور اس سے پہلے عدالتوں میں بھی شہریوں کے حقوق کی خلاف ورزی ہوتی تھی، لیکن آئین نے اس پر روک لگائی ہے۔‘‘ چیف جسٹس چندرچُڈنے آئین کو ایک لگاتار جاری رہنے والا عمل قرار دیا۔ انھوں نے کہا کہ ’’چیف جسٹس ہونے کے ناطے میری ذمہ داری ہے کہ ہر ہندوستانی باشندے کیلئے انصاف کو آسان بناؤں۔ میری ذمہ داری ہے کہ سپریم کورٹ اور ضلع سطح کی عدالتوں کے ساتھ مل کر حاشیے پر موجود لوگوں کو انصاف دلا سکوں۔‘‘

 چیف جسٹس نے عدالتوں کو عوام تک پہنچانے کا عزم کرتے ہوئے کہا کہ ’’ کسی بھی مہذب ملک کے لیے یہ ضروری ہے کہ عدالتیں لوگوں تک پہنچیں، وہ لوگوں کے کورٹ روم آنے کا انتظار نہ کریں۔‘‘ اس درمیان چیف جسٹس نے سبھی ہائی کورٹ اور ضلع عدالتوں سے گزارش کی کہ وہ اس ڈھانچے کو ختم کرنے کی نہیں بلکہ آگے بڑھانے کی سمت میں کام کریں۔ انھوں نے کہا کہ ’’عدلیہ نے کووڈ وبا کے دوران بھی تکنیکی ڈھانچے کو مضبوط کر کے عوام تک انصاف پہنچایا ہے۔ اب ہمیں اسے مزید مضبوط بنانا ہوگا۔‘‘ انہوں نے نظام انصاف کو ایک چیلنج سے تعبیر کیا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

آر بی آئی نے پھر دیا جھٹکا! ریپو ریٹ میں 0.25 فیصد کا اضافہ، مہنگی ہوگی لون کی ای ایم آئی

  مالی سال 2022-23 کے لیے ریزرو بینک آف انڈیا کی آخری کریڈٹ پالیسی کے فیصلوں کا آج اعلان کیا گیا ہے۔ آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس نے صبح 10 بجے سے ایم پی سی میٹنگ کے نتائج کے بارے میں جانکاری دی ہے اور اس میں ریپو ریٹ کا اعلان کیا ہے۔

مہاراشٹر کے اورنگ آباد میں آدتیہ ٹھاکرے کے قافلہ پر پتھراؤ، شندے دھڑے پر حملہ کا الزام

مہاراشٹر کے اورنگ آباد کے بیجاپور علاقے میں شیوسینا (یو بی ٹی) کے رہنما آدتیہ ٹھاکرے کے قافلے پر پتھراؤ کیا گیا ہے۔ یہ یہ پتھراؤ شیوسینا کی ’شیو سمواد یاترا‘ کے دوران کیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق پارٹی لیڈر آدتیہ ٹھاکرے اور امباداس دانوے کی گاڑی کے سامنے کچھ لوگوں نے ہنگامہ کیا ...

کرناٹک میں بی جے پی حکومت کے دوران ہندوؤں کا سب سے زیادہ قتل ہوا، یہی ان کا اصلی چہرہ ہے: سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس لیڈر ایس سدارامیا نے منگل کے روز ریاست میں برسراقتدار بی جے پی پر زوردار حملہ کیا۔ انھوں نے بی جے پی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں بی جے پی حکومت میں سب سے زیادہ ہندوؤں کا قتل کیا گیا۔ انھوں نے کہا کہ ہمارے دور میں نہ صرف ہندو، ...

’یہ آدمی عوام کو صرف ٹوپی پہناتا ہے‘، اڈانی کا نام لیے بغیر مہوا موئترا نے لوک سبھا میں لہرائی ٹوپی

ترنمول کانگریس رکن پارلیمنٹ مہوا موئترا نے منگل کے روز لوک سبھا میں مرکز کی مودی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ اڈانی کا نام لیے بغیر انھوں نے مرکز پر حملہ کیا اور لوک سبھا میں ٹوپی لہراتے ہوئے کہا کہ ’’یہ آدمی صرف ٹوپی پہنانے کا کام کرتا ہے‘‘۔ موئترا نے کہا کہ ’’یہ ...

مہاراشٹر میں صحافی کی مشتبہ حالت میں موت پر اٹھے سوال، میڈیا گروپس نے جانچ کا کیا مطالبہ

مہاراشٹر میں رتناگری ریفائنری پروجیکٹ پر کئی انکشافات کرنے والے تحقیقاتی رپورٹر ششی کانت واریشے کی ایک سڑک حادثہ میں ہوئی موت پر سوال اٹھنے لگے ہیں۔ ’منترالیہ انی ودھی منڈل وارتاہار سنگھ‘ اور ’ممبئی مراٹھی پترکار سنگھ‘ سمیت کئی میڈیا گروپوں نے حکومت سے واریشے کی موت سے ...