گزشتہ ہفتہ کورونا کے معاملوں میں 11 فیصد کا اضافہ، اومیکرون بہت بڑا خطرہ: عالمی ادارہ صحت

Source: S.O. News Service | Published on 29th December 2021, 12:32 PM | عالمی خبریں |

جنیوا،29؍دسمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی)  دنیا بھر میں گزشتہ ہفتہ کورونا کے معاملوں میں 11 فیصد کا اضافہ درج کیا گیا ہے، جس کے بعد عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے کہا ہے کہ اومیکرون ویرینٹ ایک بہت بڑا خطرہ ہے۔ کورونا وبا پر تازہ ترین اطلاع فراہم کرتے ہوئے ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ کئی ممالک میں تیزی سے انفیکشن کے پھیلنے کا سبب اومیکرون ہی ہے اور یہاں اس سے پہلے ڈیلٹا ویرینٹ بھی تباہی مچا چکا ہے۔

اپڈیٹ میں کہا گیا کہ نیا ویرینٹ انفیکشن پھیلانے کے معاملہ میں ڈیلٹا سے آگے نکل چکا ہے۔ اقوام متحدہ کے ادارہ صحت نے کہا، ’’تشویش ناک نئے ویرینٹ اومیکرون کی وجہ سے خطرہ بہت زیادہ ہے۔‘‘ ڈبلیو ایچ او نے کہا، ’’اب تک کے تجربات سے معلوم ہوا ہے کہ اومیکرون ورینٹ دو سے تین دن میں ہی انفیکشن کے معاملوں کو دوگنا کر رہا ہے، جو ڈیلٹا ویرینٹ سے زیادہ متعدی ہے۔ برطانیہ اور امریکہ سمیت کئی ممالک میں، جہاں انفیکشن بہت تیزی سے پھیل رہا ہے وہاں اس کی وجہ اومیکرون ہی ہے۔‘‘

تازہ ترین اطلاع میں کہا گیا ہے کہ تیزی سے پھیل رہا انفیکشن اومیکرون ویرینٹ کی (اندرونی طور پر بڑھتی ہوئی منتقلی) اور مدافعتی کمزوری دونوں کے یکجا ہو جانے کے امکانات کو ظاہر کر رہا ہے۔ تاہم ڈبلیو ایچ او نے جنوبی افریقہ میں اومیکرون کے معاملوں میں 29 فیصد کی کمی پر روشنی ڈالی ہے، جہاں پہلی مرتبہ 24 نومبر کو اس ورینٹ کی سب سے پہلے اطلاع دی گئی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

سعودی حکومت کا ایسا اصول جس کے سبب 10 لاکھ سے زائد غیر ملکیوں نے ملازمت چھوڑ دی

  مملکت سعودی عرب میں 2018 کے آغاز سے 2021 کی تیسری سہ ماہی کے اختتام تک 45 ماہ کے اس عرصے کے دوران مجموعی طور پر 10 لاکھ سے زائد غیر ملکی ملازمین اپنی ملازمتیں چھوڑ آئے۔ سعودی میڈیا کے مطابق ملازمین کی یہ تعداد ملک میں غیر ملکی ملازمین کی کل تعداد کا 10 فیصد ہے۔

ایئر انڈیا نے کیا 5 جی معاملہ پر امریکہ کے لئے پروازوں میں تخفیف کا اعلان

ایئرانڈیا سمیت کئی بین الاقوامی ہوائی کمپنیوں نے 5جی موبائل فون سروس اور پیچیدہ ہوا بازی ٹیکنالوجیز کے درمیان مداخلت کی وجہ سے غیر یقینی صورتحال کے باعث بدھ سے امریکہ کے لیے پروازیں بند کر دی ہیں۔ ایئر انڈیا نے کہا کہ اس نے دہلی سے امریکہ میں سان فرانسسکو، شکاگو اور جے ایف کے ...

امیکرون کے بعد مزید نئے ویرینٹ کا امکان: عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ ٹیڈروس ایڈہنوم گیبریئس نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس وبائی مرض ختم نہیں ہوا ہے اور اومیکرون کے بعد بھی نئی شکلیں سامنے آنے کا امکان ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے سربراہ کی وارننگ ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب یہ دلائل دیے جا رہے ہیں کہ ...

’کورونا سے شفایاب ہونے کے بعد بھی کئی لوگوں کو مہینوں تک آرام نہیں!‘ 40 فیصد افراد کو کسی نہ کسی مسئلہ کا سامنا

دنیا بھر میں کورونا سے شفایاب ہونے والے افراد پر کی گئی ایک تحقیق میں انکشاف ہوا ہے کہ کورونا وائرس سے شفایاب ہونے کے بعد بھی مہینوں تک لوگوں کو آرام نہیں ملتا اور وہ کووڈ کے بعد کی پریشانیوں میں مبتلا رہتے ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق نومبر 2021 میں گئی تحقیق کے بعد کہا گیا کہ دنیا ...

ہندوستان میں مکمل لاک ڈاؤن کی ضرورت نہیں، کورونا کو روکنے کیلئے موجودہ اقدامات کافی، مکمل لاک ڈاؤن سے فائدے کم، نقصانات زیادہ:ڈبلیو ایچ او

ہندوستان میں کورونا وائرس کی تیسری لہر کے بڑھتے ہوئے کیسوں کے باوجود فی الحال مکمل لاک ڈاؤن نافذ کرنے کی ضرورت نہیں ہے- یہ بات ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن(ڈبلیو ایچ او)نے کہی -