مہاراشٹر میں وزراء کے اختیارات نوکر شاہوں کے حوالے

Source: S.O. News Service | Published on 7th August 2022, 12:44 PM | ملکی خبریں |

ممبئی، 7؍اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) شیو سینا سے بغاوت کرکے بنائی گئی ایکناتھ شندے کی حکومت میں کابینہ کی توسیع  اب تک نہیں ہوئی ہے جس کی وجہ سے بی جے پی اور شندے گروپ پر شدید تنقیدیں ہو رہی ہیں۔ حکومتی کام کاج بھی رُکا ہوا ہے اور امکان ہے کہ کابینہ کی توسیع میں مزید وقت لگ سکتا ہے اسی لئے  وزیر اعلیٰ   نے تمام وزراء کے محکموں کے اختیارات ان محکموں کے سیکریٹروں کو دے دئیے ہیں۔ یعنی مہاراشٹر میں اس وقت  تمام حکومتی امور نوکر شاہوں کے بھروسے چل رہے ہیں۔ وزیر اعلیٰ شندے کے اس فیصلے پر شدید تنقیدیں بھی ہو رہی ہیں۔ کہا جارہا ہے کہ مہاراشٹر میں شاذ و نادر ہی ایسا ہوا ہوگا کہ وزراء کےبجائے ریاست کا انتظام ان کے سیکریٹری سنبھال رہے ہیں حالانکہ وزیر اعلیٰ شندے نے اس الزام کی تردید کی ہے۔

   واضح رہے کہ وزیر اعلیٰ شندے نے حکم نامہ جاری کرکے یہ  ریاست کا انتظامیہ متعلقہ محکموں کے ایڈیشنل چیف سیکریٹری، پرنسپل سیکریٹری اور سیکریٹریز کو سونپا ہے۔ چونکہ ریاست کے مختلف محکموں میں کام کاج ٹھپ ہے، اپیلوں اور درخواستوں پر کوئی کارروائی نہیں ہو رہی ہے ، مختلف سرکاری فیصلے سے متعلق عدالتی جائزہ کا عمل بھی رُکا ہوا ہے   اس لئے کہا جارہا ہے کہ وزیر اعلیٰ شندے کو یہ فیصلہ کرنا پڑا۔  واضح رہے کہ اس وقت ریاست کےداخلہ ، محصولات ، شہری ترقیات ، رسد و خوراک ، فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن ، دیہی ترقیات، محکمہ تعلیم اور دیگر میں کام کاج کسی وزیر کے نہ ہونے کی وجہ سے تقریباً ٹھپ ہے ۔

  اس بارے میں اپوزیشن لیڈروں کا کہنا ہے کہ  وزیر اعلیٰ دہلی کے آگے مجبور نظر آرہے ہیں ،اسی لئے حکومت سازی کے ۳۶؍ دن گزر جانے کے باوجود اب تک کابینہ  میں توسیع نہیں ہو سکی ہے۔اپوزیشن لیڈر اجیت پوار نے تو  یہاں تک کہہ دیاکہ اگر سیکریٹری  وزیر کا متبادل ہو سکتا ہے تو وزیر اعلیٰ بھی اپنے اختیارات چیف سیکریٹری کو سونپ  دیں۔

 اجیت پوار نے پونے میںمنعقدہ جلسہ میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک مہینہ ہو گیا ہے اور ضلعوں کا سرپرست وزیر  تک مقرر نہیں کیا گیا ہے۔ کابینہ میں توسیع بھی نہیں ہو ئی ہے۔ میڈیا کے ذریعہ جب بھی وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے اور نائب وزیر اعلیٰ فرنویس سے اس بارے میں پوچھا جاتا ہے تو ان کے منہ سے صرف یہی الفاظ نکلتے ہیں کہ’’ جلد ہی... ہو گا، کریں گے...‘‘لیکن  ہمارا سوال ہے کہ یہ کب ہوگا؟

 اپوزیشن لیڈر اجیت پوار نے  مزید کہا کہ کابینہ کی توسیع نہ ہونے اور محکموں کی تقسیم نہ ہونے سے عوام پریشان ہیں۔  ریاست میں کئی مقامات پر موسلادھار بارش ہوئی ہے، طرح طرح کے بحران پیدا ہوئے ہیں، مختلف واقعات رونما ہوئے ہیں، نئے تعلیمی سال کیلئے داخلے بھی شروع ہو چکے ہیں، اس سلسلے میں والدین اور طلبہ کو  متعدد دشواریوں کا سامنا ہے، سب وزراء کے محکموں میں آنے کا انتظار کررہے ہیں لیکن وزیر اعلیٰ کہتے ہیں کہ ہم دونوں ہیں.... ہم دونوں ہیں نا .... کیا یہ دونوں مل کر اتنی بڑی ریاست کا انتظام سنبھال سکتے ہیں؟ انہیں خود سوچنا چاہئے اور عوام کو بے وقوف بنانا بند کردینا چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

گیان واپی مسجد معاملہ پر الہ آباد ہائی کورٹ میں سماعت، وارانسی عدالت کے فیصلہ پر 31 اکتوبر تک روک

  الہ آباد ہائی کورٹ نے وارانسی کی ایک عدالت کے گیانواپی مسجد کا اے ایس آئی سروے کرانے کے حکم پر لگی روک میں 31 اکتوبر تک توسیع کر دی ہے۔ متعلقہ فریقوں کے دلائل سننے کے بعد جسٹس پرکاش پاڈیا نے معاملے کی اگلی سماعت کے لیے 18 اکتوبر کی تاریخ مقرر کی ہے۔

انکیتا بھنڈاری کے ملزمین کی پیروی کرنے سے وکیلوں کا انکار، ضمانت عرضی پر سماعت ملتوی، سی بی آئی جانچ کا مطالبہ تیز

اتراکھنڈ کے رشی کیش کی رہنے والی انکیتا بھنڈاری قتل واقعہ کے ملزمین پلکت آریہ، انکت اور سوربھ بھاسکر کی عدالت میں پیروی کرنے سے کوٹ دوار کے وکلا نے انکار کر دیا ہے۔ ک

نوٹ بندی کی آئینی درستگی کو چیلنج کرنے والی 59 عرضیوں پر سپریم کورٹ میں 12 اکتوبر کو ہوگی سماعت

مودی حکومت کی جانب سے 2016 میں نافذ کی گئی نوٹ بندی کے آئینی جواز کے خلاف دائر کی گئی عرضیوں پر سپریم کورٹ میں پانچ ججوں کی آئینی بنچ میں 12 اکتوبر کو سماعت ہوگی۔ نوٹ بندی کے خلاف عرضیوں پر سپریم کورٹ نے سوال کیا ہے کہ اب اس معاملے میں کیا باقی ہے؟ کیا اس معاملے کی جانچ کرنے کی ضرورت ...

یوپی: لکھیم پور کھیری میں دلخراش سڑک حادثہ، بس اور ٹرک کے تصادم میں 8 افراد ہلاک، 25 سے زائد زخمی

 اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری میں آج صبح ایک بڑا حادثہ پیش آیا۔ معلومات کے مطابق بس اور ٹرک کے درمیان تصادم میں 8 افراد جاں بحق، جب کہ 25 زخمی ہوئے ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ لکھیم پور کھیری ضلع کے عیسی نگر تھانہ علاقے کی کھماریا پولیس چوکی کے نزدیک شاردا ندی کے پل پر درجنوں مسافروں ...

بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ روی کشن کو لگا چونا! کاروباری پر عائد کیا 3.25 کروڑ کی ٹھگی کرنے کا الزام، پولیس میں درج کرائی شکایت

 بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ اور اداکار روی کشن مبینہ طور پر 3.25 کروڑ روپے کی ٹھگی کا شکار ہو گئے ہیں، اس واقعہ کی اطلاع پولیس نے دی ہے۔ گورکھپور صدر سے رکن پارلیمنٹ روی کشن نے گورکھپور کینٹ تھانہ میں ایک بلڈر کے خلاف 3.25 کروڑ کی ٹھگی کا الزام عائد کرتے ہوئے مقدمہ درج کرایا ہے۔

مرکزی حکومت کے ملازمین کو ملی سوغات، مہنگائی بھتہ میں 4 فیصد کا اضافہ

مرکزی حکومت نے ایک کروڑ سے زیادہ سرکاری ملازمین اور پنشن حاصل کرنے والے افراد کو تہواروں کے موقع پر سوغات پیش کی ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی سربراہی میں منعقد ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں مہنگائی بھتہ میں اضافہ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔