ایس ایس ایل سی اور پی یو سی کے پرچوں کی جانچ بروقت ہوگی: وزیر تعلیم سریش کمار

Source: S.O. News Service | Published on 2nd July 2020, 11:36 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،2؍جولائی (ایس او نیوز) سکینڈ پی یو سی اور ایس ایس ایل سی امتحانات کے پرچوں کی جانچ سے متعلق پیدا کی جارہی الجھن پر ریاستی وزیر برائے پرائمری وسکنڈری تعلیم ایس سریش کمار نے برہمی ظاہر کی۔

انہوں نے کہاکہ اس طرح کی الجھن پیدا کرنا لوگوں کی عادت ہے۔ امتحان کے پہلے بھی الجھن تھی، امتحان کے دوران اور اب بھی الجھن پیدا کی جارہی ہے۔ پی یو سی دوم اور ایس ایس ا یل سی امتحانات کے پرچوں کی جانچ سے متعلق پائی جارہی الجھن پر کئے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پرچوں کی جانچ میں کوئی الجھن نہیں۔ پی یو سی دوم اور ایس ایس ایل سی پرچوں کی جانچ بروقت ہوگی۔ رام نگرم میں آج انہوں نے ایس ایس ایل سی امتحان کے کئی مراکز کا معائنہ کیا۔

اس دوران نامہ نگاروں کے مختلف سوالات پر جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ لوگوں کو طلبا کی قابلیت سے متعلق منفی باتیں نہیں کرنی چاہئیں۔ ہمارے طلبا نے امتحان کی بھرپور تیاری کرکے پورے جوش وخروش کے ساتھ امتحان میں حصہ لیا ہے۔ وہ مارکس کے مستحق ہیں اوروہ اچھے مارکس حاصل بھی کریں گے۔ کمار نے کہاکہ ہمارے طلبا کی بے عزتی ہمیں نہیں کرنی چاہئے۔ وزیر تعلیم نے بتایا کہ ایس ایس ایل سی امتحان منعقد کرنے سے قبل انہوں نے کئی لیڈروں سے مشورہ کیا تھا جن میں سابق وزراء اعلیٰ سدارامیا اور ایچ ڈی کمار سوامی بھی شامل ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ کمار سوامی نے امتحان ملتوی کرنے پر زور دیا تھا۔ میں نے ذاتی طور پر ان سے بات کی تھی اور ہمارے کئے جارہے اقدامات سے متعلق بھی کہا تھا۔ میں نے ان سے کہاتھا کہ بچوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے ہم پوری دیانتداری سے کام کررہے ہیں۔ ایس ایس یل سی امتحان 27/مارچ سے شروع ہونا تھا لیکن کورونا لاک ڈاؤن کی وجہ سے ملتوی ہواتھا۔

حالانکہ سی بی ایس ای اور چند ریاستوں نے طلبا کی پچھلی کارکردگی کی بنیاد پر انہیں مارکس دینے کا فیصلہ کیا لیکن کرناٹک میں امتحان منعقد کرنا ضروری سمجھاگیا۔ کرناٹکا سکنڈری ایجوکیشن ایگزامنیشن بورڈ کے افسروں کے مطابق تقریباً 8.5لاکھ طلبا نے ایس ایس یل سی امتحان کے لئے اپنے ناموں کا اندراج کروایاتھا۔ ریاست کے 2,878 امتحانی مراکز میں امتحان منعقد کیا گیا۔ ایس ایس یل سی امتحان شروع ہونے سے قبل سکینڈ پی یو سی کے ایک پرچہ کا امتحان 18/جون کو منعقد کیاگیاتھا۔

ایک نظر اس پر بھی

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔

کورونا کی وبا اور دعوت رجوع الی اللہ، اس عنوان کے تحت جماعت اسلامی ہند، کرناٹک کی 15 روزہ مہم کا آغاز

  کورونا کی وبا سے اس وقت پوری انسانیت پریشان ہے۔ اس مرض کا مقابلہ کرنے کیلئے حفاظتی اور احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے لوگ اپنے رب سے رجوع ہوں۔ کورونا جیسی بیماریوں پر قابو پانے کیلئے طبی علاج کے ساتھ روحانی اور اخلاقی طاقت کا ہونا بھی ضروری ہے۔

کرناٹک سے 40 امیدوار سیول سرویسز امتحان میں کامیاب

کرناٹک سے زائداز 40 امیدواروں نے 2019 کے یونین پبلک سرویس کمیشن (یو پی ایس سی ) سیول سرویس امتحان میں کامیابی حاصل کی اور اب آئی اے ایس ، آئی ایف ایس اور آئی پی ایس اور دیگر میں ملازمت حاصل کریں گے۔