روشن بیگ کے خلاف کاروائی سے کانگریس کا گریز؛ کیا بی جے پی کی جانب جھکاو کو دیکھتے ہوئے اُنہیں منانے کی کوشش ہورہی ہے ؟

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 22nd May 2019, 11:48 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،22مئی (یواین آئی/ایس او نیوز) ریاست کرناٹک کی کانگریس۔ جنتادل ایس مخلوط حکومت کی قسمت،کرناٹک میں لوک سبھاانتخابات کے نتائج کے ساتھ مربوط سمجھی جارہی ہے۔ اس صورتحال کے درمیان توقع نہیں ہے کہ کانگریس ہائی کمان ناراض لیڈرروشن بیگ کے خلاف کوئی سخت کاروائی کرے گی۔ روشن بیگ نے پارٹی کے اعلیٰ رہنمابشمول جنرل سکریٹری کل ہند کانگریس کے سی وینوگوپال اورسابق وزیراعلی کرناٹک سدا رامیا کے خلاف علم بغاوت بلند کیاہے۔ ریاستی کانگریس کے ذرائع کے بموجب روشن بیگ نے وینوگوپال کومسخرہ اور سدا رامیا کو متکبر قراردیا تھاجس پر انہیں وجہ بتاؤ نوٹس جاری کی گئی ہے۔ تاہم روشن بیگ نے وجہ نمائی نوٹس کو نظرانداز کرتے ہوئے اس کاجواب نہ دینے کافیصلہ کیاہے۔ انہوں نے کانگریس کے لیڈران پر اپنی نکتہ چینی تیز کرتے ہوئے دیگر لیڈران کو بھی نشانہ بنایا ہے۔

روشن بیگ نے صدرپردیش کانگریس دنیش گنڈوراؤ کو فلاپ ہیروقراردیا۔ کرناٹک پردیش کانگریس کے ایک لیڈر نے بتایاکہ پارٹی کے قدیم رکن اسمبلی اورریاست کے طاقتور اقلیتی لیڈر جن کا اپوزیشن بی جے پی کی جانب زیادہ جھکاؤ ہورہاہے،کے خلاف کوئی تادیبی کاروائی کرنے کے بجائے انہیں منانے اورمطمئن کرنے کے لیے کئی سینئر لیڈران مصروف ہیں۔کانگریس کے چند سینئر لیڈران کو شبہ ہے کہ روشن بیگ کو پارٹی کے چند ایسے ارکان اسمبلی کی حمایت حاصل ہے جو سابق وزیراعلی سدارامیاسے ناخوش ہیں اورجب روشن بیگ،سدا رامیا کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں تویہ ارکان اسمبلی اپنے مسائل کے حل کے لیے روشن بیگ کاسہارا لے رہے ہیں۔ تاہم ان کے خلاف تادیبی کاروائی کرنا آسان نہیں ہوگا۔ کانگریس میں ارکان اسمبلی کاایک ایساگروپ بھی موجود ہے جوسدارامیا کے کام کرنے کے طریقہ کارکے خلاف ہیں۔ اس میں کوئی تعجب نہیں ہوگاکہ یہ ارکان بی جے پی کا  ساتھ دیتے ہیں۔ یہ ارکان اگزٹ پول کی پیش گوئیوں  کے بعد پارٹی میں بے چین ہیں۔ کانگریس لیڈر نے کہاکہ لوک سبھا انتخابات کے نتائج سامنے آنے کے بعد کانگریس۔ جنتادل ایس حکومت اس وقت گرجائے گی۔اسی طرح کی پیشن گوئی کئی مواقعوں پر صدرکرناٹک بی جے پی وسابق وزیراعلی یدی یورپا  بھی کرچکے ہیں۔ وہ کہہ چکے ہیں کہ کانگریس کے 20سے زائد ارکان اسمبلی پارٹی قیادت سے خوش نہیں ہیں۔
 

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں بے روزگاری کی وجہ سے خودکشی کے معاملات میں اضافہ

بے روزگاری کی وجہ سے ریاست کرناٹک میں فوت ہونے والوں کی تعداد میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے۔ ریاست میں پہلے ہی سے روزگار کا بحران تھا۔ کورونا وبا پھیلنے سے جو لوگ برسرروزگار تھے ان میں لاتعداد لوگ بے روزگار ہوگئے ہیں۔

بنگلورو میں کووڈ 19- مریضوں کی جسمانی جانچ لازمی قرار

بنگلورو شہر میں ہر دن چار سو تا چھ سو کووڈ 19- ہونے کے پیش نظر ریاستی حکومت نے تمام کووڈ مریضوں کے لئے مکمل جسمانی جانچ (ٹرائیج)لازمی بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ماہرین کی کمیٹی کے مشورے اور ہدایت کی بنیاد پر اس وائرس کے پھیلنے سے روکنے کے مقصد سے اس ٹرائیج کو لازمی کیا گیا ہے۔

افریقی باشندوں پر لاٹھی چارج کا معاملہ:بنگلورو شہر کی پولیس نے صحیح کارروائی کی: بسواراج بومئی

ریاستی وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے جے سی نگر پولیس تھانے کے سامنے کئی افریقیوں کی جانب سے احتجاج پر پولیس کی جانب سے 2 اگست کو کی گئی کارروائی کا دفاع کیا ہے کانگوکے ایک باشندے کی حراست میں مبینہ موت کے خلاف افریقی باشندے احتجاج کر رہے تھے۔ ان پر پولیس نے لاٹھی چلائی تھی۔

یلاپور : دو ہفتوں بعد اربیل گھاٹ پر بھاری گاڑیوں کے لئے دی گئی اجازت

دو ہفتہ قبل نیشنل ہائی وے 63 کے اربیل گھاٹ  علاقہ میں  کئی جگہ زمین کھسکنے اور ملبہ سڑک پر گرنے کی وجہ سے موٹر گاڑیوں کی آمد و رفت پر پابندی لگائی گئی تھی جس کی وجہ سے مختلف مقامات سے سامان لاد کر آنے جانے والے ٹرکس اور ایندھن کے ٹینکرس سڑک کناے لمبی قطاریں لگا کر کھڑے رہنے پر ...

ٹوکیو اولمپکس: نیزہ پھینکنے کے مقابلہ میں نیرج چوپڑا کا کمال، فائنل میں داخل

 ٹوکیو اولمپکس میں ہندوستانی کھلاڑی نیرج چوپڑا نے نیزہ پھینکنے (جیولن تھرو) کے مقابلہ میں اپنی مہم کا آغاز انتہائی شاندار طریقہ سے کیا ہے۔ انہوں نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 86.65 میٹر پر نیزہ پھینک کر فائنل میں مقام حاصل کیا۔

کرناٹک میں بے روزگاری کی وجہ سے خودکشی کے معاملات میں اضافہ

بے روزگاری کی وجہ سے ریاست کرناٹک میں فوت ہونے والوں کی تعداد میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے۔ ریاست میں پہلے ہی سے روزگار کا بحران تھا۔ کورونا وبا پھیلنے سے جو لوگ برسرروزگار تھے ان میں لاتعداد لوگ بے روزگار ہوگئے ہیں۔

دہلی میں 9 سالہ دلت بچی کی عصمت دری اور قتل کے خلاف کانگریس سراپا احتجاج

دہلی میں 9 سالہ دلت بچی کی عصمت دری اور قتل معاملہ کو لے کر کانگریس نے سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے دہلی کی کیجریوال حکومت اور دہلی پولیس کے ساتھ ساتھ مرکز کی مودی حکومت کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔