سدارمیا سے ملے بی جے پی کے دو سابق ممبر اسمبلی، مانگا کانگریس کا ٹکٹ

Source: S.O. News Service | Published on 11th November 2019, 11:44 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،11/نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کرناٹک میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے دو سابق ممبران اسمبلی نے کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر اعلیٰ سدارمیا اور ڈی شوکمار سے ملاقات کی ہے۔کانگریس لیڈر سے ملنے والے بی جے پی کے دونوں سابق ممبر اسمبلی 2018 کا عام انتخابات ہار گئے تھے۔کاگواڑ سے رکن اسمبلی رہے بی جے پی لیڈر راجو کاگے اور گوکک سے رکن اسمبلی رہے اشوک پجاری نے پیر کو بنگلور میں کانگریس لیڈر سدارمیااور ڈی شیو کمار سے ملاقات کی۔اب آئندہ اسمبلی ضمنی انتخابات کے لئے کانگریس سے ٹکٹ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ حالانکہ سدھارمیا اور ڈی شیو کمار نے ممبران اسمبلی کو ٹکٹ دینے کی یقین دہانی کرائی ہے یا نہیں؟ یہ بات واضح نہیں ہے۔ بتا دیں کہ کرناٹک اسمبلی کی 15 سیٹوں پر ضمنی انتخابات کے لئے ووٹنگ کی تاریخوں کا اعلان ہو گیا ہے۔کرناٹک کے الیکشن کمشنر سنجیو کمار نے بتایا کہ 5 دسمبر کو ووٹنگ ہوگی اور 9 دسمبر کو نتیجے آ جائیں گے۔اس کے ساتھ ہی پوری ریاست میں آج یعنی 11 نومبر سے انتخابی ضابطہ اخلاق نافذ ہو گیا ہے۔ کرناٹک میں 5 دسمبر کو 15 اسمبلی حلقوں میں ضمنی انتخابات ہونے ہیں، اسے دیکھتے ہوئے ان علاقوں میں پیر سے مثالی ضابطہ اخلاق نافذ ہو گئی ہے۔مشرق کی مخلوط حکومت کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے کانگریس کے 14 اور جنتا دل-سیکولر (جے ڈی ایس) کے تین باغی ممبران اسمبلی نے جولائی میں اپنے اسمبلی حلقہ سے استعفی دینے کے بعد انہیں نااہل ٹھہرائے جانے کے بعد ضمنی انتخابات کرائے جا رہے ہیں۔ریاست میں پانچ دسمبر کو اتھانی، کاگواڈ، گوکک، ییلاپورا، ہیریکیرور، رانی بینور، وجئے نگر، چک بلاپورا، کے آر پورہ، یشونت پورا، مہالکشمی لے آؤٹ، شواجی نگر، ہوس کوٹ، کے آر پیٹے، ہنسور میں ضمنی انتخابات ہوں گے۔ اس کے لئے 11 نومبر سے 18 نومبر تک پرچہ نامزدگی داخل کی جاسکتی ہے جبکہ 21 نومبر تک نامزدگی واپس لئے جا سکیں گے۔بتا دیں کہ 5 دسمبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے جبکہ 9 دسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

مرکزی حکومت کے خلاف 8/جنوری کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان

آل انڈیا اسٹوڈنٹس فیڈریشن (اے آئی ایس ایف) نے تعلیم، روزگار، خواتین کے حقوق کی پامالی، معاشی شعبہ میں گراوٹ اوربے روزگاری کے مسئلہ کو حل کرنے میں ناکام مرکزی حکومت کے خلاف 8/جنوری کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان کیا ہے-

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ہلیال میں دیا گیا میمورنڈم

مرکزی حکومت کی جانب سے متنازع شہریت ترمیمی بل منظور کیے جانے کے خلاف ہلیال میں جمیت العلماء الہند ضلع کاروارکے پرچم تلے مسلمانوں اور غیر مسلم ایس سی / ایس ٹی لیڈروں نے مشترکہ طور پر تحصیلدار کی معرفت سے صدر ہند کو میمورنڈم پیش کیا۔

شہریت ترمیمی بل کے خلاف بنگلورو میں کرناٹکامسلم متحدہ محاذ کے زیر اہتمام ملّی و سماجی تنظیموں کا زبردست احتجاجی مظاہرہ

سماج کو مذہبی بنیادوں پر تقسیم کرنے والے مرکزی حکومت کے شہریت ترمیمی بل (سی اے بی) کے خلاف بنگلورو میں کرناٹکا متحدہ محاذ کے زیر اہتمام دوپہر 12بجے ٹاؤن ہال کے پاس ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

میڈیا کی پیش کردہ تصویر سے کوسوں دورہے میرا شہر بھٹکل :  سرکاری اسپتال کی میڈیکل آفیسر ڈاکٹر سویتا کا تجربہ

برائیوں میں ڈوبی دنیا میں آج بھی  انسانیت ہے،ایسی ہی ایک زندہ مثال میرےاپنے امن وامان کے لئے مشہور  شہر بھٹکل میں خود میرے ساتھ پیش آئی ہے ،جب کہ میرے اس شہر کے متعلق میڈیا ہزار باتیں لکھتا ہےاور جو دکھاتا ہے وہ اس سے کوسو ں دور ہے۔ بھٹکل سرکاری اسپتال کی میڈیکل آفیسر ڈاکٹر ...

بھٹکل نیشنل ہائی وے پر تیزرفتار بس، لاری سے ٹکراگئی؛ 25 سے زائد زخمی

یہاں وینکٹاپور نیشنل ہائی وے 66 پر ایک تیز رفتار بس، پارک کی ہوئی لاری سے  ٹکراگئی جس کے نتیجے میں بس پر سوار 25 سے زائد مسافر زخمی ہوگئے، جن میں سے دو کو کنداپور اور باقی کو بھٹکل سرکاری اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

  وزیر داخلہ امت شاہ کی پراسرار ’تسلی‘ کہا؛   ہندوستانی مسلمان، ہندوستانی تھے اور آئندہ بھی رہیں گے

وزیر داخلہ امت شاہ نے بدھ کو متنازعہ شہریت ترمیمی بل کو راجیہ سبھا میں بحث کے لیے پیش کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کے مسلمان ہندوستانی شہری تھے، ہیں اورآئندہ بھی رہیں گے۔پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان کے غیر مسلم تارکین وطن کو بھارتی شہریت فراہم کرنے کی فراہمی والے اس بل کو پیش ...