کرناٹکا میں  ٹریفک پولیس کا کارنامہ۔پرانے کیس پر بھی نیا جرمانہ 

Source: S.O. News Service | Published on 12th September 2019, 2:57 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو12/ستمبر (ایس او نیوز) مرکزی حکومت کی جانب سے ٹریفک قوانین میں تبدیلی کرکے بھاری جرمانہ لگانے کی پولیس کو اجازت دئے جانے کے بعد عوام ایک اور مصیبت کا شکار ہوگئے ہیں۔ ان کے سامنے ایک سوال یہ بھی کھڑا ہوگیا ہے کہ جس موٹر گاڑی والے پر قوانین کی خلاف ورزی کا معاملہ کرناٹکا میں 3ستمبر کو نئے قوانین لاگو کرنے سے پہلے درج کیا گیا ہے، اس کے پاس سے پرانے قانون کے مطابق جرمانہ وصول کیا جائے گا یا پھر نیا جرمانہ اسے بھرنا ہوگا۔    

کیونکہ عوام کی طر ف سے شکایات سننے میں آرہی ہیں کہ نئے قانون پر عمل کرنے کے جوش میں ٹریفک پولیس کی طرف سے پرانے معاملات پر بھی نئے قوانین کے مطابق جرمانہ وصول کیا جارہا ہے۔اس ضمن میں اعلیٰ پولیس افسران کا کہنا ہے کہ اگر معاملہ پرانا ہے تو پھر اس پر جرمانہ پرانے قانون کے حساب سے لیا جانا چاہیے اور صرف تازہ معاملات میں ہی  نئے قوانین کااطلاق ہوگا۔

شہروں کے اندر شراب کے نشے میں گاڑی چلانے، حد سے زیادہ تیز رفتار ی او ربے پروائی سے ڈرائیونگ کرنے، سگنل جمپ کرنے بغیر ہیلمیٹ کے دو پہیہ گاڑی چلانے، ڈرائیونگ کے وقت موبائل فون کے استعمال، دو پہیہ گاڑیوں پر تین سواریوں کو لے جانے جیسی قانونی خلاف ورزیوں کے مناظر سی سی ٹی وی کیمروں اور پولیس کے پی ٹی وی آر میں قید ہوجاتے ہیں اور پھر ٹریفک کنڑول مرکز سے نشاندہی کے بعد گاڑی مالکان کو نوٹس بھیج دی جاتی ہے۔اس میں ہفتوں کی تاخیر بھی ہوجاتی ہے۔

اب ایک طرف قانونی خلاف ورزیوں کے پرانے معاملات کے نوٹس ڈاک کی معرفت لوگوں کو آج کل مل رہے ہیں تو دوسری طرف کچھ لوگوں نے نوٹس ملنے کے بعد بھی جرمانہ بھرنے میں تاخیر کردی ہے۔ اور اب جب اپنا معاملہ ختم کرنے کے لئے وہ متعلقہ پولیس اسٹیشن پہنچتے ہیں یا پھر کسی تازہ میں پھنس جاتے ہیں تو پولیس کے پاس موجود ریکارڈ(پی ڈی اے) کی وجہ سے پرانا معاملہ بھی سامنے آجاتاہے۔ ایسی صورت میں پولیس والے نیا جرمانہ وصول کررہے ہیں۔جس کی وجہ سے موٹر سواروں کے در د سرمیں مزیداضافہ ہوگیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مسلمانوں، اور کمزور طبقات کو ووٹ ڈالنے کے حق سے محروم کرنے کی کوشش، قوانین شہریت پر ممتاز دانشور و صحافی ظہیر علی خان کی تنقید؛ شاہین باغ گلبرگہ کے احتجاجی جلسہ میں ہزاروں مرد و خواتین کی شرکت

ریاست آسام میں 18لاکھ لوگوں کو فہرست رائے دہندگان سے باہر کردیا گیا ہے ان میں سے 4لاکھ 10ہزار مسلمان ہیں جب کہ مابقی 15لاکھ ہندو بھائی ہیں۔ لیکن ان 15لاکھ ہندوؤں میں سے تمام کے تمام اقوام درج فہرست، قبائل درج فہرست اور نہایت غریب قسم کے ہندو لوگ ہیں۔  18لاکھ کی فہرست میں اعلیٰ ذات کے ...

 آئی اے ایس آفیسر منیش موڈگل کا تبادلہ

آئی اے ایس عہدیدار منیش موڈگل جنہیں مرکزی حکومت نے گزشتہ ہفتہ ای گورننس کے لیے قومی ایوارڈ عطا کیا تھا، کا کمشنر سروے ، سیٹلمنٹ اور لینڈ ریکارڈس کے عہدہ سے تبادلہ کردیا گیا ۔ منیش کو اب محکمہ پر سونل اور انتظامی اصلاحات کا سکریٹری مقرر کیا گیا۔ کے وی تری لوک چندر جو پہلے ...

کرناٹک کے چن پٹن میں سی اے اے، این آر سی کے خلاف زبردست احتجاج، سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی، سی ایم ابراہیم کے علاوہ جے این یو کی طالبہ امولیا کی شرکت

چن پٹن کے شہریوں کی جانب سے 14/ فروری بروز جمعہ دوپہر 3.30/ بجے بمقام پیٹا اسکول گراؤنڈ چن پٹن شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) این آر سی اور این پی آر کے خلاف احتجاجی جلسہ منعقد کیا گیا۔

پنجاب میں  پولیس ہیڈ کانسٹیبل نے بیوی سمیت 5 لوگوں پر چلائی گولی، 4 کی موت 

پنجاب پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل نے گاؤں جلال پور میں گھریلو تنازعہ کے باعث اتوار کی صبح قریب 6 بجے بیوی اور 3 سسرال والوں (ساس اور سالے کی بیوی) کا گولی مار کر قتل کر دیا۔ واقعہ میں سالے کی 10 سال کی بچی بھی زخمی ہے۔ دراصل ہفتے کی شام ملزم کانسٹیبل کو سسرال میں تنازعہ ہوا تھا۔ اس کے بعد ...

 آئی اے ایس آفیسر منیش موڈگل کا تبادلہ

آئی اے ایس عہدیدار منیش موڈگل جنہیں مرکزی حکومت نے گزشتہ ہفتہ ای گورننس کے لیے قومی ایوارڈ عطا کیا تھا، کا کمشنر سروے ، سیٹلمنٹ اور لینڈ ریکارڈس کے عہدہ سے تبادلہ کردیا گیا ۔ منیش کو اب محکمہ پر سونل اور انتظامی اصلاحات کا سکریٹری مقرر کیا گیا۔ کے وی تری لوک چندر جو پہلے ...

سنگرور: اسکول وین میں آگ لگنے سے حادثہ، معصوم بچے زندہ جلے، 4 کی موت

 پنجاب میں ضلع سنگرور کے لونگوال قصبہ میں سنیچر کی دوپہر ایک اسکول وین میں اچانک آگ لگنے سے اس میں سوار چار معصوم بچے زندہ جل گئے، دیگر آٹھ بچوں کو وین میں سے نکال لیا گیا جن میں سے 3 کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔