گردابی طوفان ’بلبل‘ کے پیش نظر بحریہ کے تین جہاز تیار

Source: S.O. News Service | Published on 9th November 2019, 11:10 PM | ملکی خبریں |

وشاکھاپٹنم،9؍نومبر(ایس او نیوز؍یو این آئی) خلیج بنگال سے شمال کی سمت بڑھنے والے گردابی طوفان ’بلبل‘ کی وجہ سے کسی قسم کے نقصان سے بچنے کےلئے راحت اور بچاؤ کام کےلئے بحریہ کے تین جہاز اور ایک طیارے کو تیار رکھا گیا ہے۔

اندازہے کہ طوفان بلبل ہفتے کی صبح اوڈیشہ کے پارادیپ سے 100کلومیٹر مشرق جنوب مشرق میں واقع تھا ۔اس کے بعد مغربی بنگال کے کولکاتہ شہر سے 275کلومیٹر جنوب مغرب جنوب میں واقع تھااور آج رات اس کے سُندرون ڈیلٹا علاقے میں مغربی بنگال کے ساگرجزیرے اور بنگلہ دیش کے کھیپوپاڑا پہنچنے کا اندازہ ہے۔طوفان کی صورت حال پر بحریہ مسلسل نظر رکھے ہوئے ہے اور متاثرہ علاقوں میں مدد اور راحت کا سامان لئے تین جہاز اور نگرانی کےلئے طیارے تیار ہیں۔

محکمہ موسمیات کی ایک ریلیز کے مطابق اس وقت طوفان کی وہ سے 65سے 70کلومیٹر کی رفتار سے تیز ہوائیں چل رہی ہیں۔خلیج بنگال میں تعینات بحریہ طیارے نے مچھلی پکڑنے والی کشتیوں کو طوفان کے بارے میں چیلنج کیاہے اور انہیں جلد از جلد پاس کے ساحل پر لوٹنے کی صلاح دی ہے۔

وشاکھاپٹنم میں ہندوستانی بحریہ کے تین جہازوں کو راحت کےسازوسامان کے ساتھ تیار رکھاگیا ہے اور انہیں قدرتی آفات سے متاثر علاقوں میں فوری طورپر انسانی مدد اور قدرتی آفات (ایچ اے ڈی آر)کاموں کےلئے تعینات کیاگیاہے۔

کسی بھی طرح کی آفت کے حالات سے نمٹنے کےلئے اوڈیشہ اور مغربی بنگال میں غوطہ خور اور ڈاکٹروں کی ٹیموں کو تیار رکھاگیا ہے۔
سیلاب متاثرہ علاقوں کے ہوائی سروے کےلئے،متاثرہ علاقوں سے لوگوں کو نکالنے اور راحت کا سامان پہنچانے کےلئے بحریہ کے فوجی طیارے کو بھی بحریہ کے ایئر اسٹیشن پر تیار رکھاگیاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر: تاریخی جامع مسجد 15 ویں جمعے کو بھی مقفل، نماز پر پھر قدغن

 وادی کشمیر میں 103 دنوں سے جاری غیر یقینی صورتحال سایہ فگن رہنے کے بیچ جہاں ایک طرف معمولات زندگی پٹری پر آرہے ہیں تو وہیں انٹرینٹ اور ایس ایم ایس خدمات کی مسلسل معطلی کے ساتھ ساتھ نوہٹہ میں واقع تاریخی جامع مسجد کے محراب ومنبر 15 ویں جمعہ کو بھی خاموش رہے۔

کشمیرمیں اہم رہنماؤں کونظربند رکھنے کی وجہ بتائے حکومت: کانگریس

کانگریس نے کہاہے کہ جموں کشمیر میں سب کچھ ٹھیک ہونے کے بارے میں پوری دنیا میں شور مچارہی مودی حکومت کوبتانا چاہیے کہ کشمیر کو ملک کا اٹوٹ حصہ بنائے رکھنے میں تعاون کرنے والے مرکزی دھارے کے رہنماؤں کو حراست میں کس وجہ سے رکھاگیاہے۔