کاروار: موسلادھار بارش اور سیلاب کی وجہ سے نیشنل ہائے ویز کا رابطہ منقطع۔ گوگل پر جاری ہوا ہے نقشہ۔ فیس بک پر دستیاب ہے ریلیف سے متعلق ایپ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th August 2019, 12:40 PM | ساحلی خبریں |

کاروار 11/فروری (ایس او نیوز) کرناٹکا، مہاراشٹرا اور کیرالہ میں موسلادھاربرسات اور سیلاب کی وجہ سے کئی مقامات پر نیشنل ہائی ویز پر رابطہ منقطع ہوگیا ہے  جس سے سفر پر نکلے ہوئے لوگ بری طرح پھنس گئے ہیں اور جو لوگ سفر پر نکلنے والے ہیں ان کے لئے بھی خدشات پیدا ہوگئے ہیں۔

    بگڑے موسم اورقومی شاہراہوں پر درپیش مشکلات کے تعلق سے عوام اور خاص کرکے مسافروں کو صحیح معلومات پہنچانے کے لئے  انٹرنیٹ پر ’گوگل میاپ‘ کے ذریعے ان مقامات کا نقشہ’ویسٹرن انڈیا فلڈس‘ (مغربی ہندوستان کے سیلاب) کے عنوان سے پیش کیاگیا ہے، جہاں پر نیشنل ہائی ویز پانی میں ڈوب گئے ہیں اور وہاں سفر کرنا فی الحال دشوار ہوگیا ہے۔خیال رہے کہ کیرالہ اور کرناٹکا میں کئی جگہوں پرچٹانیں کھسکنے کی وجہ سے سڑکیں ناقابل استعمال ہوگئی ہیں۔قدرتی آفت کے اس مشکل وقت میں بہت سارے دیہات پانی میں ڈوب گئے ہیں اور ان کا دوسرے شہروں اورگاؤں سے بھی راستہ ٹوٹ گیا ہے۔گوگل میاپ نے اپنے ایپلی کیشن کے ذریعے ایسے مقامات کی طرف سفر کرنے سے عوام کو باز رکھنے کے لئے رہنمائی کاکام کیا ہے۔اس ایپ پر ہر ایک منٹ پر ان مقامات کی حقیقی صورتحال کے بارے میں معلومات اپڈیٹ کی جارہی ہیں۔ جن مقامات پر ٹریفک روک دی گئی ہے اور سفر کے لئے اس طرف گزرنا ممکن نہیں ہے، ان مقامات پر سرخ نشان لگائے گئے ہیں۔جہاں پرسفر اور موٹر گاڑیوں کی آمد ورفت بند ہونے کے امکانات موجود ہیں اسے گہرے پیلے رنگ سے نمایاں کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ گوگل میاپ استعمال کرنے والے خود بھی اپنے طور پر سیلاب یا راستہ ناقابل استعمال ہونے کی معلومات اس پر اپلوڈ کرسکتے ہیں۔

    اس کے علاوہ سوشیل میڈیا کے معروف پلیٹ فارم فیس بک نے بھی ریلف حاصل کرنے یا پہنچانے کے لئے سہولت فراہم کی ہے۔فیس بک پر ’فلڈ‘ (سیلاب) کے عنوان سے تلاش کرنے پر ’کرائسس ریسپانس‘ مینو نظر آتا ہے۔اسے کھولنے کے بعد سیلاب سے متاثرہ حصوں میں مقیم فیس بک فرینڈز کی تفصیلات سامنے آتی ہیں۔ اس کے علاوہ اگر سیلاب زدہ افراد کو ریلیف پہنچانی ہوتو ’آفر ہیلپ‘کاکالم موجود ہے۔اس کے ذریعے امداد پہنچانا یا پھر امداد حاصل کرنا ممکن ہوجاتا ہے۔اس کے لئے ضروری تفصیلات درج کرنے کے بعد ضرورت مند وہاٹس ایپ یا میسنجر کے ذریعے رابطہ قائم کرسکیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں ایک شخص نے کی خودکشی

یہاں آزادنگر فورتھ کراس میں ایک 22 سالہ نوجوان نے گھر کے ایک کمرے میں ہی  چھت سے لٹک کر خودکشی کرلی جس کی شناخت محمد مستقیم شیخ کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

بھٹکل کے کورونا سے متاثرہ مزید چار لوگ صحت یاب ہوکر کاروار اسپتال سے ڈسچارج؛ پہنچے بھٹکل

مینگلور اسپتال لنک کے جن 29 لوگوں کو کاروار کمس اسپتال میں ایڈمٹ کیا گیا تھا، اُس میں سے 20 لوگوں کو سنیچر کے دن اسپتال سے ڈسچارج کیا گیا تھا ، اُن ہی میں سے مزید چار لوگوں کو آج کمس  سے ڈسچارج کیا گیا ہے۔ چاروں بذریعہ ایمبولنس آج منگل کو بھٹکل سرکاری اسپتال پہنچے جہاں سے ضروری ...

بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور سابق ایم ایل اے کے تعاون سے کیا گیا مہاجر مزدوروں کی روانگی کا انتظام

اوڈیشہ اور جھار کھنڈ کے سیکڑوں مزدور جو ماہی گیری اور دیگر سرگرمیوں میں خدمات انجام دے رہے تھے اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے پریشان تھے ان کو اپنے گھروں کے لئے روانہ کرنے کا انتظام بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور سابق ایم ایل اے منکال وئیدیا کی جانب سے کیا گیا۔

پولیس افسران اور اہلکاروں میں کووِڈ 19پوزیٹیو نکلنے کے بعداڈپی کے تمام پولیس اسٹیشنوں کو کیا جا رہا ہے سینیٹائز

اڈپی ضلع کے بعض پولیس اسٹیشنوں سے وابستہ پولیس افسران اور اہلکاروں کو کورونا مرض لاحق ہونے کے بعد محکمہ پولیس کی طرف سے فیصلہ کیا گیا ہے کہ ضلع کے تمام پولیس اسٹیشنوں کو مرحلہ وار سینیٹائز کیا جائے۔

کاروار سمیت ریاست کے سمندر میں 14جون تک ماہی گیری کا موقع

کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے نافذ کئے گئے لاک ڈاؤن کی وجہ سے ماہی گیری کو ہوئے نقصان کو دیکھتے ہوئے مرکزی حکومت نے 14جون تک گہرے سمندر میں مشینی ماہی گیر ی پر پابندی عائد کرتے ہوئے روایتی ماہی گیر ی کو جاری رکھنے کی منظوری دی ہے۔ ترمیم شدہ حکم نامے کے مطابق 31جولائی تک ...