منڈگوڈ میں میلادالنبی کے بینرس نکالنے پر افسران اور مسلم لیڈران کے درمیان زبانی جھڑپ: کچھ دیر کے لئے حالات کشیدہ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 11th November 2019, 11:08 PM | ساحلی خبریں |

منڈگوڈ:11؍نومبر(ایس اؤ نیوز)پورے ملک میں عید میلاد النبی ؐ کے پروگرام، جلوس، جلسے وغیرہ  منعقد کئے  جارہے ہیں اسی طرح منڈگوڈ میں بھی  میلادالنبی کے تعلق سے مختلف ناکوں پر   مبارکبادی کے کٹ آؤٹ لگائے گئے ہیں،  پیر کو جب پٹن  پنچایت کے  اہلکاروں نے ان کٹ آوٹ اور فلیکس کو نکالنے کی کوشش کی تو  عوام  نے سخت اعتراض کیا جس کے بعد مسلم لیڈران اورپنچایت  آفسران کے درمیان  زبانی جھڑپ شروع ہوگئی۔

بتایا جارہا ہے کہ   یلاپور ودھان سبھاحلقہ کے ضمنی انتخابات کی وجہ سے   پیر 11نومبر سے ہی انتخابی  ضابطہ اخلاق لاگو ہوگیا ہے اس لئے تحصیلدار نے  پنچایت حکام کو  کٹ آوٹس اور بینرس وغیرہ کو نکالنے کا حکم دیا تھا۔مگر مسلم لیڈران کا اصرار کہنا ہے  کہ  میلادالنبی کے بینرس کسی بھی طرح سیاسی بینرس نہیں ہیں اس لئے ایسے مبارکبادی کے بینرس انتخابی ضابطہ اخلاق کے دائرے میں نہیں آتے۔  اہلکاروں اور مسلم  لیڈران  کے درمیان  زبانی جھڑپوں سے کچھ دیر کے لئے حالات کشیدہ ہوگئے۔ اس دوران  مقامی مسلمانوں نے منڈگوڈ پٹن پنچایت کے سامنے پہنچ کر  افسران کی کارروائی کے خلاف احتجاج بھی کیا۔

معاملے کے تعلق سے اخبارنویسوں کے ذریعے پوچھے گئے سوال  پر  اترکنڑا ضلع ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر  ہریش کمار نے واضح کیا کہ مذہبی جلسوں وغیرہ  کے لئے فلکس اور بینر  لگائے گئے ہیں تو وہ  انتخابی  ضابطہ اخلاق کے دائرہ میں  نہیں آتے ہیں ، البتہ اس طرح کے بینرس اور کٹ اوٹس وغیرہ لگانے سے پہلے  انتظامیہ سے  اجازت لینا ضروری ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دبئی سے 178 مسافر صحیح سلامت پہنچے بھٹکل؛ ہوٹل اور اسکول میں کیا گیا کورنٹائن

کورونا لاک ڈاون میں پھنسے دبئی کے 178 لوگ آج بدھ صبح صحیح سلامت بھٹکل پہنچ گئے جن میں 103 مرد حضرات کو  جامعہ آباد روڈ پر واقع علی پبلک اسکول میں کورنٹائن کیا گیا ہے تو وہیں 75 لوگوں کو جن میں زیادہ تر فیملیس اور بچے ہیں، پرائیویٹ ہوٹل میں کورنٹائن کیا گیا ہے۔

اُترکنڑا میں آج پھر کورونا کے 20 کیسس؛ بھٹکل کے ایک شخص کی مینگلور میں موت سمیت 13 پوزیٹیو

اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات رُکنے کا نام نہیں لے رہے ہیں اور ہرروز  کورونا سے متاثرہ لوگ یہاں سامنے آرہے ہیں، حیرت کی بات یہ ہے کہ ضلع کے بھٹکل میں بھی کورونا پوزیٹیو معاملات  تھمنے کا نام نہیں لے رہے ہیں، ایک طرف ضلع میں 20 کورونا پوزیٹیو کے معاملات سامنے آئے ہیں تو اس میں ...

اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر سے ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

جنوبی کینرا بنٹوال تعلقہ کے سجی پانڈو دیہات میں ہر سال بارش کے موسم میں گزشتہ 30 برسوں سے لوگوں کو ہمیشہ  پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ یہ علاقہ اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر کے حلقہ میں آتا ہے اور یہاں مسلمانوں کی کثیر آباد ی ہے۔

منگلورو۔کاسرگوڈ سرحد پر مسافروں کیلئے پریشانی

ریاست میں گزشتہ ماہ اپریل سے ہی کورونا وائرس پھیلنے کے نتیجہ میں کیرالہ ۔ کرناٹک کی سرحد پر واقع کاسرگوڈ اور منگلورو کے درمیان روازنہ ملازمت اور تعلیم کے سلسلہ میں آنے جانے والے لوگوں کیلئے ہر دن نت نئی پریشانیوں کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔

کاروار اسپتال سے 12 مزید لوگ ڈسچارج

بھلے ہی  ضلع اُترکنڑا میں کورونا پوزیٹیو کے معاملے ہر روز سامنے آرہے ہوں، لیکن کاروار اسپتال میں ایڈمٹ کورونا کے متاثرین  روبہ صحت ہوکر ڈسچارج ہونے کا سلسلہ بھی برابر جاری ہے۔

اُترکنڑا میں پھر 36 کورونا پوزیٹیو؛ بھٹکل میں بھی کورونا کے بڑھنے کا سلسلہ جاری؛ آج ایک ہی دن 19 معاملات

اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات میں روز بروز اضافہ کا سلسلہ جاری ہے اور آج منگل کو بھی ضلع کے مختلف تعلقہ جات سے 36 کورونا کے معاملات سامنے آئے ہیں جس میں صرف بھٹکل سے پھر ایک بار سب سے زیادہ  یعنی 19 معاملات سامنے آئے ہیں۔ کاروار میں 6،  ہلیال میں 3،  کمٹہ، ہوناور ...