قیمتوں میں استحکام نہیں ہونے سے  بندہوتے چاول مِل :اترکنڑا ضلع میں 30سے زائد چاول گرنی بند

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th January 2020, 8:09 PM | ساحلی خبریں |

سرسی  :12؍ جنوری (ایس اؤ نیوز)  باربار قیمتوں میں گراوٹ کو دیکھتے ہوئے دھان کےکھیت تجارتی فصلیں سپاری ، جوار میں منتقل ہو رہی  ہیں اور سرکاری اسکیم انّیابھاگیہ میں چاول کی کمی کی جانے سے اسی پر انحصار کئے ضلع کے سیکڑوں چاول کی گرنیاں(Mills)بند ہونے کے درپے  ہیں۔

گزشتہ ایک دہے سے اترکنڑا ضلع بھر میں دھان کے کھیت سپاری کے باغات میں منتقل ہوئے ہیں، قیمت نہیں ملنے سے دھان کی فصل نہیں ہونے سے  بعض مقامات پر کھیت بنجر ہورہےہیں، جس کے نتیجےمیں چاول کی گرنی کے مالکان مشکلات میں ہیں۔ پچھلے تین برسوں سے دھان کی فصل متاثر ہورہی ہے، فصل کی کمی  اورا نیا بھاگیہ اسکیم کی وجہ سے چاول کے ملس میں دھان کم آرہی ہے، جس کی وجہ سے ضلع کی 30 ملس دروازہ بند کرچکی ہیں تو جاری گرنیاں  بھی آج ، کل  کے خدشے میں ہیں۔

سخت مشقت ، کم قیمت : دھان اُگانے کے لئے بہت زیادہ مشقت کرنی پڑتی ہے، ساتھ میں دن بدن اس کی نگرانی کے اخراجات میں اضافہ بھی ہورہاہے۔ ایک کوئنٹل دھان کی قیمت 1300سے 1400روپئے ہے، اس قیمت پر دھان فروخت کریں تو مزدوروں کو دینے تک رقم نہیں بچتی ۔ حالات کو دیکھتے ہوئے اکثر دھان کے کسان تجارتی فصلیں سپاری، گیہوں ، جوا ر کی فصل کی طرف توجہ دے رہے ہیں۔ اس لئے مارکیٹ  میں دھان کی کمی ہورہی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ راشن چاول کو بھی دوسری جگہوں سے درآمد کئے جانے سے مقامی چاول کی مانگ جاتی رہی۔ فطری طورپر دھان کے کسان اس میدان سے مایوس ہوکر دوسری طرف رخ کئے ہوئےہیں۔

ضلع کی  قریب 124چاول کی گرنیاں (ملس) میں سے 40فی صد بند ہوچکی ہیں۔ صرف سرسی میں پچھلے دس برسوں میں 8سے زائد چاول کی ملس نے دروازہ بند کردیا ہے۔ کل تک یومیہ 70-80تھیلے دھان ملس کو آتی تھیں اب صرف 25-30تھیلے دھان ہی پہنچ رہی ہے۔ قابل غور ہے کہ ان حالات کے پیش نظر ضلع میں  پچھلے دس برسوں میں  ایک بھی نئی چاول کی گرنی کی شروعات نہیں ہوئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہندوتوا کارکنوں پر درج ہوئے مقدمات بی جےپی حکومت واپس لے گی : وزیر کے ایس ایشورپا

موجودہ ریاستی بی جے پی کی حکومت ہندوتوا تنظیموں کے کارکنانوں پر دائر ہوئے مقدمات کو واپس لینےکی تیاری  میں ہے ، اس سلسلےمیں ریاستی وزیر کے ایس ایشورپا نے سرسی میں بیان دیتے ہوئے کہاکہ پچھلی سرکار ہندوتوا تنظیموں کے کارکنوں پر بے وجہ در ج کئے مقدمات کو بی جے پی حکومت واپس لے گی، ...

بھٹکل سرکاری محکمہ جات کے مسائل کو حل کرنے کا مطالبہ لے کر رکن اسمبلی کا وزیر تحصیل کو میمورنڈم

محکمہ تحصیل میں کئی سارے مسائل فائلوں کی دھول چاٹ رہے ہیں، انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے، اس سلسلے میں حل کے لئے کارروائی کامطالبہ لےکر بھٹکل کے رکن اسمبلی سنیل نائک نے بدھ کو وزیر برائے تحصیل آر اشوک کو میمورنڈم سونپا۔

ضلع ڈپٹی کمشنر دیہات چلو ‘دیہی مسائل کے حل کی طرف عملی کوشش :کمٹہ منی ودھان سبھا کے افتتاحی تقریب میں وزیر آر اشوک

لع ڈپٹی کمشنر، اسسٹنٹ کمشنر ، تحصیلدار مہینے میں ایک بار ایک دیہات کا دورہ کرتےہوئے وہاں کے مسائل کی جانکاری حاصل کرتےہوئے حل کی کوشش کریں۔ اسی مقصد کو لےکر ’ڈی سی افسران دیہات چلو ‘ پروگرام شروع کرنے کا وزیر برائے تحصیل ، شہری انتظامیہ آر ، اشوک نے اعلان کیا۔

بھٹکل کے شرالی میں زیرو ویسٹ مینجمنٹ مرکز  کا قیام : کچرے کا دوبارہ استعمال کے لئے لائق بنانے والا مثالی منصوبہ :سی ای اؤ محمد روشن

گھر گھر سے جمع کئے جانے والے کچرے کو مقامی طورپر ہی دوبارہ استعمال کرنے کا مقصد لے کر زیرو ویسٹ مینجمنٹ مرکز کا بھٹکل تعلقہ کے شرالی میں قائم کئے جانے کی اترکنڑا ضلع پنچایت کے  سی ای اؤمحمدر وشن نےجانکاری دی ہے۔ پورے ملک میں یہ پہلی تجرباتی کوشش ہے جس کے لئے شرالی گرام پنچایت ...

منگلوروایئرپورٹ بم معاملہ: کمارا سوامی اور بی جے پی کے درمیان جاری ہے زبانی بمباری  

ایک طرف منگلورو ایئر پورٹ پر دھماکہ خیز مادہ (آئی ای ڈی) رکھنے والا ملزم آدتیہ راؤنے بنگلورو میں پولیس کے سامنے خودسپردگی کی ہے اور اپنا جرم قبول کرلیا ہے۔ جس کے بعد اسے گرفتار کرکے پوچھ تاچھ کی جارہی ہے۔دوسری طرف اس معاملے پر سابق وزیراعلیٰ وزیراعلیٰ کمارا سوامی اور بی جے پی ...