سوشل میڈیا پر کنٹرول کیلئے مودی سرکار کے قوانین جمہوریت کیلئے خطرہ

Source: S.O. News Service | Published on 28th February 2021, 12:06 PM | ملکی خبریں |

ممبئی،28؍فروری (ایس او نیوز؍ایجنسی)  سوشل میڈیا اور اووَر دی ٹاپ(او ٹی ٹی) پلیٹ  فارمس کو کنٹرول کرنے  کے مودی حکومت کے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے  ریاستی وزیرستیج پاٹل  نے  ان قوانین کو آمرانہ اور جمہوریت کیلئے  خطرہ قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ ان قوانین  کے خلاف سماجی سطح پر پہلے ہی آوازیں بلند ہورہی ہیں۔ا لزام ہے کہ مودی حکومت  ان ضوابط کے ذریعہ سوشل میڈیا پر موجود اس متبادل میڈیا کے پر کترنا چاہتا ہے جو حکومت پر تنقیدیں کرتے ہیں۔   ریاستی وزیر مملکت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی ) ستیج پاٹل نے  ان قوانین کو لوگوں کے ذاتی معاملات میں مداخلت سے تعبیر کرتے ہوئے ان کی پوری شدت سے مخالفت کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

ستیج پاٹل کے مطابق’’حکومت کے اس اقدام  کے خلاف پوری شدت سے اٹھ کھڑے ہونے کی ضرورت ہے۔ اس جمہوری ملک کے عوام ایسے آمرانہ ضوابط کو قطعی قبول نہیں کرسکتے۔‘‘ ریاستی وزیر نے بتایا کہ اس پالیسی کے تحت کچھ بیوروکریٹ یہ طے کریں گے کہ میڈیا میں کیا چھپنا چاہئے اور کیا نہیں،یہ ذرائع ابلاغ کی آزادی پر براہ راست حملہ ہے۔ انہوں  نے امید ظاہر کی کہ ’’ایسے احکام کورٹ میں ایک منٹ کیلئے بھی ٹھہر نہیں سکیں گے۔‘‘کولہاپور سے کانگریس کے رکن اسمبلی ستیج پاٹل نے ٹول کٹ معاملے میں  دشاروی کی گرفتاری کا حوالہ دیا اور کہا کہ یہ پورا معاملہ ان لوگوں کی آواز دبانے کا عمل تھاجوآزادی ٔ اظہار رائے کے اپنے حق کا استعمال کررہے ہیں۔ دشا روی کو ضمانت پر رہا کرتے ہوئے حال ہی میں عدالت نے بھی سخت تبصرے کئے ہیں اور کہا ہے کہ محض حکمراں کی اناکی تسکین کیلئے کسی کو جیل میں نہیں ڈالا جاسکتا۔ 

 یاد رہے کہ مرکزی حکومت نے25؍ فروری کو سوشل میڈیا اور او ٹی ٹی پلیٹ فارم کو ریگولیٹ کرنے  کے اپنے فیصلے کا اعلان کیا ہے۔ان ضوابط کے مطابق  سوشل میڈیا ویب سائٹس کو جن میں فیس بک اور  ٹویٹر شامل ہیں  نیزاو ٹی ٹی پلیٹ فارمس کو  ان مشمولات کو 36؍ گھنٹے کے اندر ہٹانا ہوگا جن کی نشاندہی حکام کی جانب سے کی جائے گی۔ سوشل میڈیا ویب سائٹس کو اس بات کیلئے بھی پابند کیا گیا  ہے کہ ایسے پوسٹ  جنہیں انتظامیہ ملک مخالف یا  ملک کی سلامتی کیلئے خطرہ محسوس کرتی ہیں،  ا ن کے بارے میں انہیں بتانا ہوگا کہ انہیں پہلی مرتبہ کس نے شیئر کیاتھا۔ اس کے علاوہ ہر ویب سائٹ اور یوٹیوب چینل کیلئے ضروری ہوگا کہ وہ شکایات کے ازالے کیلئے ایک افسر تعینات کرے جو ہندوستان میں مقیم ہو۔

ایک نظر اس پر بھی

ہانک کانگ نےہندوستان،پاکستان اور فلپائن کی پروازوں پر لگائی دو ہفتوں کی پابندی

کورونا وبا کےپھیلاؤ کےپیش نظر ہانگ کانگ نے فیصلہ کیا ہےکہ وہ اگلےدوہفتوں کےلئےہندوستان، پاکستان اور فلپائن سےآنےوالی پروازوں پر پابندی لگارہا ہے۔ہانگ کانگ نےان تین ممالک سےآنےوالی تمام پرواز یں معطل کر دی ہیں۔ہانک کانگ کےذمہ داران اس کی وجہ کووڈ19 کے ایشیائی ممالک میں ...

مدھیہ پردیش میں کووڈ کا قہر، 30 اپریل تک کورونا کرفیو کا نفاذ

مدھیہ پردیش میں حکومت کی تمام کوششوں کے باوجود کورونا کا قہرجاری ہے۔ ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد جہاں اڑسٹھ ہزار کو تجاوز کر گئی ہیں وہیں پچھلے چوبیس گھنٹےمیں ریاست میں کورونا کے بارہ ہزار دو سو اڑتالیس نئے معاملے درج کئے گئے ہیں ۔

کووڈ بحران سے نمٹنےکےلیے سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیراعظم مودی کو دیئے یہ 5اہم مشورے

ہندوستان میں عالمی وبا کورونا وائرس کے مثبت معاملوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے بارے میں ہر حلقے سے تشویش کا اظہار کیاجارہا ہے۔ اسی ضمن میں ملک کے سابق وزیراعظم، کانگریس کے سینئر ترین رہنما اور معروف ماہر معاشیات ڈاکٹر منموہن سنگھ  نے وزیراعظم نریندر مودی کو کووڈ۔19 کے بحران سے ...

بہار میں15 مئی تک اسکول ، کالج اور تمام مذہبی مقامات بند ،رات کا کرفیو نافذ

ہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے ریاست میں کورونا کے تیزی سے بڑھ رہے معاملوں پر لاک ڈاﺅن کا اشارہ دیتے ہوئے باہر سے آنے والے لوگوں سے جلد سے جلد لوٹنے کی اپیل کرتے ہوئے آج کہاکہ وبا کی روک تھام کیلئے فی الحال ریاست میں ” رات کا کرفیو“ سرکاری دفاتر میں کام کی مدت کم کرنے ، سبھی ...