کاروار ایم ایل اے روپالی نائک نے وزیر داخلہ امت شاہ کے سامنے پیش کیے ضلع کے اہم مسائل

Source: S.O. News Service | Published on 20th January 2020, 9:27 PM | ساحلی خبریں |

کاروار20/جنوری (ایس او نیوز) وزیر داخلہ امت شاہ کی ہبلی آمد کے موقع پر کاروار انکولہ حلقے سے منتخب رکن اسمبلی روپالی نائک نے ان کے سامنے ضلع شمالی کینرا کے چند اہم مسائل پیش کرتے ہوئے جلد سے جلد انہیں حل کرنے کی درخواست کی۔معلوم ہوا ہے کہ امت شاہ نے ان مسائل کا سنجیدگی سے جائزہ لینے اور مناسب اقدا م کرنے کا بھروسہ دلایا ہے۔

ہبلی کے ہوٹل ڈینی سن میں وزیرداخلہ سے ملاقات کے دوران روپالی نائک کاروار میں ساگر مالا منصوبے کے تعلق سے گزارش کہ اس کی وجہ سے ماہی گیری کرنے یا ماہی گیروں کے لئے کسی قسم کی پریشانی نہیں ہونی چاہیے۔ اس کے علاوہ رویندرا ناتھ ٹیگور بیچ کی خوبصورتی کو بھی کوئی نقصان نہ پہنچے اور وہاں پر تفریح کے لئے آنے والوں کو بھی کسی کی تکلیف کا سامنا نہ کرنا پڑے۔رکن اسمبلی نے یہ بات بھی کہی کہ نیوی کے سی برڈ منصوبے کی وجہ سے سیکڑوں لوگوں کو اپنی زمینوں سے ہاتھ دھونا پڑا ہے اور وہاں پر ماہی گیری کرنے کی سہولت ختم ہوجانے سے اب ٹیگور بیچ ہی ماہی گیروں کا واحد ٹھکانہ ہے۔ پھر ساگرمالا پروجیکٹ کی وجہ سے ماہی گیروں کے مشکلیں جھیلنے کی نوبت نہ آئے۔

ہبلی انکولہ ریلوے لائن کا مسئلہ پیش کرتے ہوئے ایم ایل اے نے کہا کہ اس کا سنگ بنیاد 1999میں اس وقت کے وزیراعظم واجپئی کے ہاتھوں رکھا گیاتھا مگر اس کے بعد ایک نہ ایک وجہ سے یہ کام آگے نہیں بڑھ رہا ہے اور ایک عرصہ گزرجانے کے بعد بھی یہاں کے عوام کی یہ مانگ پوری نہیں ہوپائی ہے۔ اس لئے اس منصوبے کی راہ میں جو قانونی رکاوٹیں ہیں انہیں دور کرتے ہوئے اس کام کو جلد آگے بڑھایا جائے۔ 

روپالی نائک نے بتایا کہ اسی طرح انکولہ سے ہبلی کے لئے فورلین روڈ کا منصوبہ بھی التوا میں پڑا ہوا ہے۔ اس سڑک سے روزانہ ہزاروں لوگ سفر کرتے ہیں۔ اب جو ہائی وے اس پر بہت زیادہ ٹریفک کا دباؤ ہے،جس کی وجہ سے یہاں ہونے والے سڑک حادثات میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔اس لئے اس ہائی وے کو فورلین میں بدل دینابہت ضروری ہے۔

رکن اسمبلی نے ضلع شمالی کینرا میں موجود ’ہالکّی‘ قبیلے کے لوگوں کو درج فہرست قبائل (شیڈولڈ ٹرائبس) میں شامل کرنے کی جو مانگ بہت دنوں سے ہورہی ہے اس پر بھی توجہ دینے اور اس قبیلے کو فہرست میں درج کرلینے کی درخواست کی۔خیال رہے کہ ضلع شمالی کینرا میں ’ہالکّی‘ قبیلے سے تعلق رکھنے والوں کی تعداد 1.5لاکھ سے زیادہ ہے۔

روپالی نائک نے کاروار انکولہ حلقے میں صنعتی ترقی نہ ہونے کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر داخلہ سے کہا کہ یہ ایک انڈسٹریل بیک ورڈ زون بن گیا ہے اس لئے یہاں پر صنعت کاروں کو راغب کرنے کے لئے کم ازکم دس سال تک کمرشیل اور سیلس ٹیکس میں چھوٹ دی جائے۔ضلع شمالی کینرا میں ندیوں سے ریت نکالنے پر لگی پابندی اوراس سے ہونے والی دشواریوں کو بھی اجاگر کرتے ہوئے انہوں نے درخواست کی کہ قانونی اڑچن کو دور کرتے ہوئے یہاں پر ریت نکالنے کے اجازت نامے دینے کا کام شروع کیا جائے۔ رکن اسمبلی نے ان تمام مطالبات پر مشتمل ایک میمورنڈم پارلیمانی امور کے وزیر پرہلاد جوشی کو سونپا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا سے لڑنے تنظیم کےذمہ داران بھی نہایت متحرک؛ پوری ٹیم میدان میں کام کررہی ہے؛ چوطرفہ ہورہی ہے ستائش

اس وقت نہ صرف شہر بھٹکل بلکہ پوری دنیا کورونا وائرس کی وباء سے  حیران وپریشان ہے ایک طرح سے اس وباء سے  پوری دنیا کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد جس طرح سے ملک بھر میں غریب عوام اور یومیہ مزدور طبقہ کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس سے ہرکوئی واقف ہیں ...

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

بھٹکل سے مزید تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ آج موصول ہونے والی تمام رپورٹس بھی نیگیٹیو؛ کیا کسی کی رپورٹ پوزیٹیوآنے کا خدشہ ہے ؟

کورونا وائرس کو لے کر شہر سمیت پورے ملک میں لاک ڈاون جاری ہے اور ہر روز مشکوک لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے ہیں۔اب تک بھٹکل سے جن لوگوں کے تھوک کے نمونے  جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے تھے،  راحت کی خبریں موصول ہورہی تھیں یہاں تک کہ مینگلور اور کاروار میں ...

بھٹکل میں کورونا وائرس کو لے کر کیاسوشیل میڈیا میں کسی طرح کی سازش رچی جارہی ہے ؟ مسلمانوں سے دور رہنے اورکسی بھی طرح کا لین دین نہ رکھنے کے مسیجس وائرل

ایسا لگتا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء فسطائی اور فرقہ وارانہ ذہنیت والے غیر مسلموں کے لئے مسلمانوں کے خلاف اپنی بھڑاس نکالنے کا نیا ہتھیار بن گئی ہے۔ ایک طرف کورونا وائرس کے نام پر مسلمانوں سے دوری رکھنے کی تلقین کی جارہی ہے  اور مسلمانوں سے کسی بھی طرح کی خریداری کرنے کی ...

کورونا کے نام پر مسلمانوں پر حملہ؛ باگلکوٹ میں تین مسلم لوگوں کو ایک گاوں میں داخل ہونے سے روکنے کی واردات

باگلکوٹ کے مدھول پولیس اسٹیشن کے حدود میں آنے والے ایک گاؤں میں چند شرپسندوں نے مسلمانوں کو اپنے گاؤں میں داخل ہونے سے عملاً روکتے ہوئے ان پر حملہ کرنے کی واردات پیش آئی ہے  جس کی ویڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر  وائرل ہوگئی ہے۔