بھٹکل : ماہی گیرکشتی’سوورنا تریبھوجا‘ کا ملبہ برآمد ہونے کے بعد لاپتہ ماہی گیروں کے اہل خانہ کی تشویش میں ہوگیا اضافہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 4th May 2019, 9:49 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 4/مئی (ایس او نیوز) ہندوستانی بحریہ کی طرف سے گم شدہ ماہی گیر کشتی ’سورنا تریبھوجا‘ کا ملبہ برآمد کیے جانے کی خبر عام ہونے کے ساتھ ہی اس کشتی پر مچھلیوں کے شکار کے لئے گئے ہوئے لاپتہ ساتوں ماہی گیروں کے اہل خانہ سخت تشویش میں مبتلاہوگئے ہیں، کیونکہ بحریہ کے ذمہ داران کی طرف سے اس ضمن میں کوئی بھی بات سننے کو نہیں ملی ہے۔

ضلع شمالی کینرا کے مادن گیری ، کمٹہ سے تعلق رکھنے والے لاپتہ ماہی گیر ستیش کے والد ایشور ہری کنترا نے تشویش اور صدمے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ”مجھے پتہ نہیں کہ میرے بیٹے کے ساتھ کیا معاملہ پیش آیا ہے۔ ہم لوگ بہت ہی غریب ہیں۔ ہمارے پاس صحیح صورتحال جاننے کے وسائل نہیں ہیں۔جو کچھ بھی نیوی والے کہہ رہے ہیں، اس پر یقین کرنے کے سوا دوسرا کوئی چارہ نہیں ہے۔“

ستیش کے گھر والے ابھی بھی اس بات کو قبول کرنے کے لئے تیار نہیں ہیں کہ وہ کشتی کے ساتھ غرقاب ہوگیا ہوگا۔ ان کو امید ہے کہ جلد ہی ستیش زندہ اور سلامت گھر واپس لوٹے گا۔

بحری جنگی جہاز آئی این ایس نیرکھشک جو لاپتہ ماہی گیر کشتی کی تلاشی مہم میں مصروف تھا اس پر اڈپی کے ایم ایل اے رگھوپتی بھٹ اور کچھ ماہی گیر اس وقت موجود تھے جب سوورنا تریبھوجا کا ملبہ مہاراشٹرا کے مالوان سمندر میں تلاش کرلیا گیا اور اس کی شناخت بھی کرلی گئی۔ مگر لاپتہ ماہی گیروں کے اہل خانہ اس بات پر تعجب کررہے ہیں کہ سرکاری طور پر نیوی، پولیس یا ضلعی انتظامیہ کی جانب سے انہیں اس تعلق سے کوئی بھی خبر نہیں دی گئی ہے۔ ملبہ برآمد ہونے کی خبر میڈیا کے ذریعے ہی ان لوگوں تک پہنچی ہے۔

حالانکہ گم شدگی کے تقریباً چار مہینے بعد سوورنا تریبھوجا کا ملبہ گہرے سمندر میں برآمد ہونے کی بات سامنے آئی ہے، لیکن کشتی اور ا س پر موجود ماہی گیروں کے ساتھ اصل میں کیا حادثہ پیش آیاتھا اس بارے میں کوئی یقینی بات نہیں کہی جارہی ہے۔ماہی گیر کشتی کی پراسرار گمشدگی کے تعلق سے جو کہانیاں عام ہوئی تھیں اس میں بحری جنگی ’آئی این ایس کوچی‘کے ساتھ تصادم کا معاملہ بھی تھااور آئی این ایس کوچی کے نچلے حصے کو اسی رات اور اسی مقام پر نقصان پہنچنے کی بات معلوم ہوئی تھی، جب سوورنا تریبھوجا سے رابطہ ٹوٹ گیا تھااور اس کے گم ہوجانے کی بات سامنے آئی تھی۔مگر نیوی کی طرف سے نہ اس بات کی پوری طرح تصدیق کی گئی اور نہ ہی انکار کیا گیا ہے۔

اس تعلق سے لاپتہ ماہی گیر ستیش کے والد ایشور ہری کنترا کا کہنا ہے کہ اس نے گزشتہ تین دہائیوں سے سمندر میں ماہی گیری کی ہے۔ وہ جانتا ہے کہ ”اگر نیوی کے جہاز کی کسی چیز سے ٹکر ہوگئی ہے تو اسے متعلقہ سویلین ڈپارٹمنٹ کو اس کی اطلاع دینی چاہیے۔اور پھر انہیں غرقاب کشتی کا ملبہ ڈھونڈ نکالنے کے لئے چار مہینے کا عرصہ بھی نہیں لگ سکتا۔“ ایشور کا خیال ہے کہ ”ماہی گیر کشتی کے ساتھ کچھ نہ کچھ ایسا ہوا ہے۔اور کوئی تو ایسی بات ہے جسے بشمول انڈین نیوی اور پولیس کے تمام تحقیقاتی ایجنسیاں چھپارہی ہیں۔اورملبے کے معمولی ٹکڑے دکھاکر سچائی پر پردہ ڈالتے ہوئے اب اس معاملے کو بندکرنا چاہتی ہیں۔“

تلاشی مہم پر لگے ہوئے بحری جہاز پر جو ماہی گیر موجود تھا اس کا کہنا ہے کہ”ملبے کا ایک چھوٹاسا ٹکڑا سمندر میں دکھائی دیا ہے۔ پوری کشتی کا ملبہ بر آمد نہیں ہوا ہے۔ اس ماہی گیر کے مطابق  ماہی گیر تیرنے میں ہمیشہ  ماہر ہوتے ہیں۔جب کوئی بھی کشتی غرقاب ہونے لگتی ہے تو اس میں کچھ وقت لگتا ہے جس کے دوران اس پر موجود افراد تیر کر اپنی جان بچانے کی کوشش کرلیتے ہیں۔یا پھر کسی چیز سے ٹکراتے ہی وہ وائرلیس کال کے ذریعے بندرگاہ سے رابطہ قائم کرتے ہیں۔مگر  اس معاملے میں ایسی کوئی بھی بات نہیں ہوئی ہے۔“

بہرحال ابھی اس کہانی پر پڑے ہوئے راز کے پردے ہٹنے باقی ہیں، تب تک لاپتہ ماہی گیروں کے اہل خانہ تشویش، امید اور یاس کے جذبات کے ساتھ انتظار کرتے ہوئے دن گزارنے پر مجبور ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

یلاپور میں کار اور ٹینکر کی بھیانک ٹکر؛ دلہا ہلاک چار دیگر شدید زخمی

یلاپور نیشنل ہائی وے 63 پر کار اور ٹینکر کے درمیان ہوئی خطرناک ٹکر میں کار پر سوار دُلہا کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جبکہ کار پر سوار دیگر رشتہ دار شدید زخمی ہوگئے۔ حادثہ اتوار کو ملن ہوٹل  کے قریب واقع ایک موڑ پر پیش آیا۔

یلاپور ضمنی انتخابات :ہیبار صاحب تمہارے پوتوں کو نااہل کا مطلب کیا بتائیں گے : ٹی ایشور

یلاپور ضمنی انتخابات میں گرمی آتی جارہی ہے، مخالف فریقوں کے درمیان بیان بازی شروع ہوچکی ہے۔ کانگریس پسماندہ طبقات شعبہ کے ریاستی صدر ٹی ایشور نے بی جےپی امیدوار شیورام ہیبار کا مذاق اڑاتے ہوئے سوال پوچھا کہ   ہیبار صاحب ! آپ کے پوتے ہونگے ؟ جب وہ آپ سے  نااہل کے  مطلب پر سوال ...

شیواجی نگر حلقے سے کانگریس کا راست مقابلہ بی جے پی سے عوام کو حلقے کی فلاح کے حق میں فیصلہ لینا ہوگا۔ انتشار سے فرقہ پرست بی جے پی کو فائدہ ہوگا: رضوان ارشد

یواجی نگر اسمبلی حلقہ جو ان اسمبلی حلقوں میں شامل ہے جس کے اراکین اسمبلی نے بی جے پی کے آپریشن کنول کا حصہ بن کر اپنی رکنیت سے استعفیٰ دیا اور نا اہل قرار پائے اس حلقے میں 5دسمبر کو ضمنی انتخابات کے لئے تینوں اہم سیاسی جماعتوں سے امیدوار میدان میں آچکے ہیں۔

بیدر میں گرلزاسلامک آرگنائزیشن کی جانب سے یومِ اُردو کا انعقاد؛ ”ایک قدم...اُُردو کی بقاء ترقی و ترویج کیلئے“

گرلز اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا کرناٹک (بیدریونٹ) کی جانب سے یومِ اُردو بعنوان ”ایک قدم...اُردو کی بقا ء ترقی و ترویج کیلئے“کا انعقاد بیدر میں منعقد ہوا  جس میں مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے محترمہ ڈاکٹر سرورعرفانہ سی آر پی بھا لکی محکمہ تعلیمات عامہ بیدر نے کہا کہ ...

ریاست میں ڈینگو بخار سے عوام پریشان : جنوری سے ابھی تک 14757افراد ڈینگو میں مبتلا

ریاست میں ڈینگو بخار کا ہنگامہ جاری ہے، محکمہ صحت اور خاندانی فلاح وبہبودی کے مطابق یکم جنوری سے ابھی تک 14757افراد ڈینگو میں مبتلا پائے گئے ہیں، جس سے پچھلے ایک دہے میں سب سے زیادہ ڈینگو معاملات امسال درج کئے گئے ہیں۔

آپریشن کنول کا بھانڈا پھوٹا؛کمارسوامی حکومت کوگرانے کی کوشش امیت شاہ کی ہدایت پر ہوئی:رمیش جارکی ہولی

کل ہی بی جے پی میں شمولیت اختیار کرنے والے نا اہل اراکین اسمبلی نے جہاں سابقہ مخلو ط حکومت کوگرانے کے لئے کئے گئے آپریشن کنول کے متعلق انکشافات کئے ہیں وہیں ان باغیوں کے لیڈر سمجھے جانے والے رمیش جارکی ہولی نے یہ علی الاعلان کہا ہے کہ ریاست کی کمارسوامی حکومت کو مرکزی وزیر ...